اہم خبریں

راولپنڈی (روز نامہ اوصاف) آرمی چیف جنرل قمرجاوید باجوہ کی زیرصدارت جی ایچ کیو میں اعلیٰ سطح اجلاس ہوا۔ آرمی چیف نے کہا کہ پاکستان اور افغانستان دونوں ممالک نے دہشتگردی کے خلاف جنگ لڑی، پاک افغان سرحد پر سیکورٹی انتظامات میں اضافہ مشترکہ دشمنوں سے مقابلے کے لیے ہے۔ دہشتگرد کسی رنگ و نسل سے ہوں مشترکہ دشمن ہیں۔ دہشتگردی کے خاتمے کے لیے پاکستان اور افغانستان کوششیں جاری رکھیں گے۔ آرمی چیف جنرل قمر باجوہ نے کہا کہ پاک افغان سرحد پر دہشتگردوں کی نقل و حرکت ہر صورت روکی جائے گی اور اس کے لیے افغان سیکورٹی فورسز کیساتھ تعاون جاری رکھا جائے گا۔




صدارتی بس نے صدر کے ذاتی محافظ کو کچل ڈالا
  20 فروری‬‮ 2017
استنبول (روزنامہ اوصاف)ترک صدر رجب طیب اردوان کے زیراستعمال بس نے صدر کے ذاتی محافظ کو کچل ڈالا۔ غےر ملکی خبر رساں ادارے کے مطابق سیکیورٹی اہلکار صدر کے قریب کھڑا تھا جب بس نے اسے روند ڈالا۔ صدر اردوان خمی ہونے والے اپنے محافظ کے پاس اس وقت تک کھڑے رہے جب تک طبی امدادی ٹیم اس کے پاس نہیں پہنچ گئی ،واقعہ الازغ گورنری کی بلدیہ سے نکلتے ہوئے اس وقت پیش آیا جب صدر ایک اجلاس کے بعد بس کے ذریعے وہاں سے جانے کی تیاری کررہے تھے :-



اسلام آباد (روز نامہ اوصاف)اسلام آباد یونائیٹڈ کے ہیڈ کوچ ڈین جونز اور کراچی کنگزکے کوچ مکی آرتھر نے لاہور جانے پر آمادگی ظاہر کردی ہے۔تفصیلات کے مطابق پاکستان کرکٹ بورڈ نے پی ایس ایل کا فائنل قذافی سٹیڈیم ،لاہور میں کروانے کے لیے تیاریا ں شروع کررکھی ہیں اور اس مقصد کے لیے غیر ملکی کھلاڑیوں کو پاکستان میں کھیلنے کے لیے دستیابی ظاہر کرنے کے لیے 22فروری تک کا وقت دیا گیا ہے ۔دفاعی چیمپئن اسلام آباد یونائٹیڈ کے ہیڈ کوچ ڈین جونز کا کہناہے کہ پی سی بی جہاں بھی فائنل کرائے وہاں جاکر کھیلیں گے، وینیو کا فیصلہ بورڈ کا کام ہے اورہمارا کام کھیلنا ہے۔دوسری جانب قومی ٹیم کے ہیڈ کوچ مکی آرتھر نے کہا کہ چونکہ کراچی کنگز ابھی فائنل کی دوڑ میں شامل نہیں لہٰذا لاہور میں فائنل کے بارے میں ان کی کسی سے بات نہیں ہوئی، بطور پاکستانی ٹیم ہیڈ کوچ انھیں ہرصورت لاہور جانا ہے جہاں وہ اپنے کوچنگ سٹاف کے ساتھ مل کر ویسٹ انڈیز کے دورے کی تیاری شروع کریں گے۔





فیس بک پر ایلگوردمز سے دہشت گردوں کی شناخت،خودکشیاں روکنے میں مدد ملے گی، مارک زکر برگ
17 فروری‬‮ 2017
واشنگٹن (مانیٹرنگ ڈیسک )فیس بک کے بانی مارک زکر برگ نے ایک نیا منصوبہ تیار کیا ہے جس کے تحت مصنوعی ذہانت والے سافٹ ویئر کی مدد سے سائٹ پر پوسٹ کیے جانے والے شدت پسندانہ مواد کا جائزہ لیا جا سکے گا۔انھوں نے اپنے ایک خط میں اس منصوبے کی تفصیلات بتاتے ہوئے کہا کہ بالآخر مصنوعی ذہانت والے سافٹ ویئر ایلگوردمز دہشت گردی، تشدد، غنڈہ گردی جیسے مواد کی نشاندہی کر سکیں گے اور اس سے خودکشیاں روکنے میں بھی مدد ملے گی۔تاہم انھوں نے کہا کہ اس قسم کے سافٹ ویئر کو مکمل طور پر تیار کرنے میں برسوں لگ سکتے ہیں۔ انھوں نے تقریبا 5500 الفاظ پر مشتمل ایک خط میں تفصیلات کا ذکر کیا ہے۔ انھوں نے کہا کہ فیس بک پر ہر روز اربوں کی تعداد میں مختلف طرح کے پیغامات اورتبصرے پوسٹ ہوتے ہیں اور ان کا جائزہ لینا تقریبا ناممکن ہے۔مارک زکر برگ نے لکھا ہے ہم ایک ایسے نظام پر تحقیق کر رہے ہیں جو یہ سمجھنے کے لیے پوسٹس کی تحریر پڑھ سکے، فوٹو اور ویڈیوز کو دیکھ سکے کہ کہیں کچھ خطرناک تو نہیں ہو رہا ہے۔انھوں نے مزید کہا: 'یہ ابھی بالکل اپنے ابتدائی مرحلے میں ہی ہے لیکن ہم نے اس سے بعض منصوبوں پر کام لینا شروع کیا ہے اور یہ پہلے ہی سے مواد کی نگرانے کرنے والی ٹیم کے لیے رپورٹ تیار کرنے میں معاون ثابت ہو رہا ہے۔'ان کا کہنا تھا کہ مصنوعی ذہانت میں یہ خوبیاں ہیں کہ وہ مضر قسم کے مواد کی شناخت انسانی ذہن سے کہیں تیزی کر سکتا ہے اور دہشت گردوں کے حملوں کے منصوبوں سمیت ایسے خطرات کی شناخت کر سکتا ہے جس کے بارے میں کسی کو پہلے کچھ بھی نہ معلوم ہو۔انھوں نے کہا ابھی ہم مصنوعی ذہانت کے استعمال کرنے کے ان طریقوں کو دریافت کرنے کا آغاز کر رہے ہیں جس کی مدد سے شدت پسندی سے متعلق خبروں اور دہشت گردوں کی جانب سے حقیقی پروپیگنڈے کے درمیان فرق کیا جا سکے۔



ﺑﺼﺮﮦ ﮐﮯ ﻗﺮﯾﺐ ﺍﯾﮏ ﺍﻧﺘﮩﺎﺋﯽ ﮔﻨﮩﮕﺎﺭ ﺁﺩﻣﯽ ﺭﮨﺘﺎ ﺗﮭﺎ ﺟﺐ ﻭﮦ ﻣﺮ ﮔﯿﺎ ﺗﻮ ﺍﺱ ﮐﮯ ﺟﻨﺎﺯﮮ ﮐﻮ ﺍُﭨﮭﺎﻧﺎ ﺗﻮ ﺑﮩﺖ ﺩﻭﺭ ﮐﯽ ﺑﺎﺕ ﮨﮯ ﮐﺴﯽ ﻧﮯ ﮨﺎﺗﮫ ﻟﮕﺎﻧﺎ ﺑﮭﯽ ﮔﻮﺍﺭﺍ ﻧﮧ ﮐِﯿﺎ۔ﺍﯾﺴﯽ ﺣﺎﻟﺖ ﻣﯿﮟ ﺍﺱ ﮐﯽ ﺑﯿﻮﯼ ﻧﮯ ﮐﺮﺍﺋﮯ ﮐﮯ ﻣﺰﺩﻭﺭ ﻟﯿﮯ ﻭﮦ ﺟﻨﺎﺯﮦ ﺍُﭨﮭﻮﺍ ﮐﺮ ﻗﺒﺮﺳﺘﺎﻥ ﻟﮯ ﮔﺌﯽ۔ ﻗﺒﺮﺳﺘﺎﻥ ﮐﮯ ﻗﺮﯾﺐ ﭘﮩﺎﮌﻭﮞ ﻣﯿﮟ ﺍﯾﮏ ﺯﺍﮨﺪ ﺭﮨﺘﺎ ﺗﮭﺎ ﺟﺲ ﮐﯽ ﻋﺒﺎﺩﺕ ﮐﺎ ﺑﮩﺖ ﺷﮩﺮﮦ ﺗﮭﺎ۔ ﺟﻨﺎﺯﮦ ﺭﮐﮭﻨﮯ ﺳﮯ ﭘﮩﻠﮯ ﻭﮦ ﺟﻨﺎﺯﮦ ﭘﮍﮬﻨﮯ ﮐﺎ ﻣﻨﺘﻈﺮ ﺗﮭﺎ۔ﺟﺐ ﺍﺱ ﺯﺍﮨﺪ ﮐﮯ ﺟﻨﺎﺯﮦ ﭘﮍﮬﺎﻧﮯ ﮐﯽ ﺧﺒﺮ ﭘﮩﻨﭽﯽ ﺗﻮ ﻟﻮﮒ ﺟﻮﻕ ﺩﺭﺟﻮﻕ ﺟﻤﻊ ﮨﻮﻧﺎ ﺷﺮﻭﻉ ﮨﻮ ﮔﺌﮯ ﺍﻧﮩﻮﮞ ﻧﮯ ﺍﺱ ﺯﺍﮨﺪ ﮐﯽ ﺍﻗﺘﺪﺍﺀ ﻣﯿﮟ ﻧﻤﺎﺯِ ﺟﻨﺎﺯﮦ ﭘﮍﮬﯽ۔ ﻟﻮﮔﻮﮞ ﮐﻮ ﺯﺍﮨﺪ ﮐﮯ ﺍِﺱ ﻓﻌﻞ ﭘﺮ ﺳﺨﺖ ﺣﯿﺮﺍﻧﯽ ﮨﻮﺋﯽ۔ ﺍﻧﮩﻮﮞ ﻧﮯ ﻧﻤﺎﺯِ ﺟﻨﺎﺯﮦ ﮐﮯ ﺑﺎﺭﮮ ﺍﺱ ﺳﮯ ﺳﻮﺍﻝ ﮐِﯿﺎ ﺗﻮ ﺍﺱ ﻧﮯ ﺑﺘﺎﯾﺎ ﮐﮧ ﻣﺠﮭﮯ ﺧﻮﺍﺏ ﻣﯿﮟ ﯾﮧ ﺣﮑﻢ ﻣﻼ،ﻓﻼﮞ ﺟﮕﮧ ﺟﺎﺅ ﻭﮨﺎﮞ ﺟﻨﺎﺯﮦ ﺁﺭﮨﺎ ﮨﮯ ﺍﺱ ﮐﮯ ﺳﺎﺗﮫ ﺻﺮﻑ ﺍﯾﮏ ﻋﻮﺭﺕ ﮨﮯ ﺟﺲ ﮐﺎ ﺟﻨﺎﺯﮦ ﮨﮯ ﻭﮦ ﻣﻐﻔﻮﺭ ﮨﮯ۔ﺍِﺱ ﺟﻤﻠﮯ ﭘﺮ ﻟﻮﮔﻮﮞ ﮐﯽ ﺣﯿﺮﺍﻧﯽ ﻣﯿﮟ ﻣﺰﯾﺪ ﺍﺿﺎﻓﮧ ﮨُﻮﺍ۔ ﻋﻮﺭﺕ ﺳﮯ ﺍﺱ ﮐﮯ ﺣﺎﻻﺕ ﻣﻌﻠﻮﻡ ﮐﺮﻧﮯ ﭘﺮ ﭘﺘﮧ ﭼﻼ ﮐﮧ ﺩﺭﺳﺖ ﮨﮯ ﮐﮧ ﯾﮧ ﺷﺮﺍﺑﯽ ﺗﮭﺎ ﺍﻭﺭﺷﺮﺍﺏ ﺧﺎﻧﮯ ﻣﯿﮟ ﺳﺎﺭﯼ ﻋﻤﺮ ﮔﺰﺍﺭﯼ ﻣﮕﺮ ﺍﺱ ﻣﯿﮟ ﺍﯾﮏ ﺻﻔﺖ ﺗﮭﯽ ﮐﮧ ﺻﺒﺢ ﺟﺐ ﯾﮧ ﻣﺪﮨﻮﺵ ﻧﮧ ﮨﻮﺗﺎ ﺗﻮ ﺑﺎ ﻭﺿﻮ ﻧﻤﺎﺯِ ﻓﺠﺮ ﺍﺩﺍ ﮐﺮﺗﺎ ﺗﮭﺎ۔ﺩﻭﺳﺮﺍ ﺍﺱ ﮐﮯ ﮔﮭﺮ ﻣﯿﮟ ﯾﺘﯿﻢ ﺑﭽﮯ ﺭﮨﺘﮯ ﺗﮭﮯ ﺟﻦ ﺳﮯ ﺍﭘﻨﮯ ﺑﭽﻮﮞ ﺟﯿﺴﺎ ﺳﻠﻮﮎ ﮐﺮﺗﺎ ﺗﮭﺎ۔ﺗﯿﺴﺮﺍ ﺭﺍﺕ ﮐﻮ ﺟﺐ ﮨﻮﺵ ﺁﺗﺎ ﺗﻮ ﺧﻮﺏ ﺭﻭ ﮐﺮ ﺍﻟﻠّﮧ ﮐﮯ ﺣﻀﻮﺭ ﺍﻟﺘﺠﺎ ﮐﺮﺗﺎ ﯾﺎ ﺍﻟﻠّﮧ ﻣﺠﮫ ﺧﺒﯿﺚ ﺳﮯ ﺟﮩﻨﻢ ﮐﮯ ﮐﻮﻥ ﺳﮯ ﮐﻮﻧﮯ ﮐﻮ ﭘُﺮ ﮐﺮﮮ ﮔﺎ۔ﺟﺐ ﯾﮧ ﺭﺍﺯ ﮐُﮭﻞ ﮔﯿﺎ ﺗﻮ ﺯﺍﮨﺪ ﺭﻭﺍﻧﮧ ﮨﻮ ﮔﯿﺎ۔ ﻣُﮑﺎﺷِﻔۃُ ﺍﻟﻘﻠُﻮﺏ = ﺻﻔﺤﮧ 628 ﻣﺼﻨﻒ = ﺣﻀﺮﺕ ﺍﻣﺎﻡ ﻏﺰﺍﻟﯽ ﺭﺣﻤﺘﮧ ﺍﻟﻠّﮧ ﻋﻠﯿﮧ



آج کا مکمل اخبار پڑھیں

کار ٹونز

تازہ ترین خبریں

کالم /بلاگ

مقبول ترین

دلچسپ و عجیب





     
     
تمام اشاعت کے جملہ حقوق بحق ادارہ روزنامہ اوصاف محفوظ ہیں۔
Copyright © 2016 Daily Ausaf. All Rights Reserved