پاکستان کیخلاف بھارت اوربرطانیہ متحد‘کرنل حبیب ظاہر کے حوالے سے اہم خبر نے تہلکہ مچادیا
  15  اپریل‬‮  2017     |     اوصاف سپیشل
نئی دہلی: (ویب ڈیسک) کرنل ریٹائرڈ حبیب ظاہر کو مارک ٹامسن نامی شخص نے جعلی برطانوی موبائل نمبر سے کال کر کے کٹھمنڈو میں زونل ہیڈ کے عہدے پر انٹرویو کیلئے بلایا۔ فرم نے انہیں بزنس کلاس ٹکٹ بھی دیا۔ عمان سے براستہ نیپال پہنچے لیکن لمبینی سے لاپتہ ہو گئے۔ فرم کی ویب سائٹ بھی جعلی، جسے بھارت سے آپریٹ کیا جاتا ہے۔ ”را“ نے نیپال سرحد سے ایک جاسوس پکڑنیکی خبر بھی لیک کر دی۔ بھارت نے 90ء کے عشرے میں بھی دو پاکستانیوں کو نیپال سے اغوا کے بعد تشدد کر کے ہلاک کیا۔ بھارت کے نیٹ ورک نے پاکستان میں دہشت گردی کے لئے بڑی تعداد میں موبائل سمیں حاصل کیں۔ پاکستانی میڈیا میں بھی گھسنے کی کوشش کی گئی۔تحقیقاتی رپورٹ کے مطابق نیپال میں لاپتہ ہونیوالے پاک فوج کے ریٹائرڈ کرنل حبیب ظاہر کی پراسرار گمشدگی میں “را” ملوث دکھائی دیتی ہے۔ اپنے پھانسی کے منتظر جاسوس کلبھوشن یادیو کا توڑ کرنے کیلئے بھارت نے پاک فوج کے حاضر سروس افسر کو گرفتار کرنیکا دعویٰ کرنے کی تیاری مکمل کر لی۔ 31 اکتوبر 2014ء کو ریٹائرمنٹ کے بعد کرنل ریٹائرڈ حبیب ظاہر ایک ملٹی نیشنل کمپنی میں ملازم تھے۔ بہتر ملازمت کی تلاش میں انہوں نے اپنی سی وی مختلف ویب سائٹس پر پوسٹ کی۔ ایک ماہ قبل مارک ٹامسن نامی شخص نے برطانیہ کے اپنے موبائل نمبر 00447451203722 اور ای میل آئی ڈی [email protected] کے ذریعے کرنل حبیب سے رابطہ کیا اور بتایا کہ اُن کی فرم نے انہیں زونل ڈائریکٹر کی ملازمت کے لئے شارٹ لسٹ کیا ہے۔ اُن کا سیلری پیکیج 8500 ڈالر ماہانہ ہو گا۔ وہ فائنل انٹرویو کے لئے 6 اپریل 2017ء کو کٹھمنڈو آئیں۔ کرنل حبیب کو فرم سے بزنس کلاس ٹکٹ فلائٹ نمبر وائی ڈبلیو 344 ملا۔ انہیں 5 اپریل کو براستہ عمان نیپال پہنچنا تھا۔عمان میں جاوید انصاری نامی نمائندہ کرنل حبیب سے ملا اور انہیں نیپالی سم کارڈ نمبر 009779813848689 دیا۔ کرنل حبیب تمام صورتحال سے اہل خانہ کو آگاہ کرتے رہے۔ رپورٹ کے مطابق ویب سائٹ www.stratsolutions.biz کا میزبان بھارت ہے جسے پروٹیکشن پرائیویسی پروٹیکٹ آسٹریلیا نے دے رکھی ہے۔ یہ ویب سائٹ اس وقت بلاک ہے جبکہ اس کا ڈیٹا بھی دستیاب نہیں ہے۔ مارک ٹامسن نامی برطانوی کا موبائل نمبر 00447451203722 بھی جعلی نکلا جو کہ انٹرنیٹ سے بنایا گیا نمبر تھا۔رپورٹ کے مطابق 6 اپریل 2017ء کو نیپال پہنچنے پر انہیں اسی روز بدھا ایئر کے ذریعے لمبینی پہنچایا گیا۔ ان کی اہلیہ کے مطابق 6 اپریل کو ایک بجے انہیں شوہر کی جانب سے لمبینی پہنچنے کا ایس ایم ایس ملا جس کے بعد اُن سے کوئی رابطہ نہیں ہوا۔ اُن کا نیپالی اور پاکستانی موبائل نمبر دونوں بند ہیں۔ رپورٹ کے مطابق اسی اثناء میں “را” کی جانب سے مقامی اور عالمی میڈیا میں یہ خبر لیک کی گئی کہ بھارت نیپال سرحد کے قریب ایک اہم پاکستانی جاسوس پکڑا گیا ہے۔ رپورٹ کے مطابق نیپال سے معصوم پاکستانیوں کو اغوا کر کے بھارت منتقل کرنے کا کارنامہ “را” پہلے بھی سرانجام دے چکی ہے۔رپورٹ کے مطابق “را” کے پاکستان ڈیسک کے جائنٹ سیکرٹری کی حیثیت سے وکرم سوڈ نے آر کے مشرا کے ذریعے پاکستانی میڈیا میں گھسنے کی کوششیں کی۔ 2000ءکے اوائل میں جب وکرم سوڈ “را” کا چیف اور اجیت ڈوول انٹیلی جنس بیورو کے آپریشن ونگ کا سربراہ تھا، پاکستان کے نجی ٹیلی کام سیکٹر میں اچانک تیزی آئی۔ کئی عالمی موبائل فون کمپنیوں نے پاکستان میں جوش و خروش کے ساتھ کام شروع کر دیا۔ان کمپنیوں کو وکرم سوڈ کے ٹیکنیکل انٹیلی جنس ونگ کی معاونت حاصل تھی۔ دہلی نے دہشت گرد نیٹ ورکس کے ذریعے پاکستان میں آپریشنز کی منصوبہ بندی کر رکھی تھی جس کے لئے عالمی موبائل کمپنیوں کا استعمال یوں ہوا کہ پاکستان میں پری پیڈ کنکشنز کا سسٹم نافذ ہونے سے قبل لاکھوں موبائل سمیں دہشتگرد سرگرمیوں کے لئے حاصل کر لی گئیں۔ وہ سمیں دہشتگردی کے خلاف آپریشن میں پاکستان کے لئے آج تک ایک چیلنج بنی ہوئی ہیں۔ رپورٹ کے مطابق موبائل کمپنیوں نے پاکستانی صارفین کے لئے منفرد قسم کے پیکیج بھی متعارف کرائے جن کا فوکس نئی نسل تھی۔ ان میں انتہائی ارزاں ریٹ پر نائٹ کال پیکیج بھی شامل تھا جس نے پاکستانی یوتھ کو بری طرح متاثر کیا۔رپورٹ کے مطابق ان موبائل کمپنیوں نے بھارت اور چین سمیت کسی ملک میں ایسے پیکیج متعارف نہیں کرائے تھے۔ کمپنیوں کو جو مالی نقصان ایسے پیکیج دینے سے ہو رہا تھا، اُس کی تلافی بھارت میں براہ راست مالی معاونت یا کوئی بزنس دے کے کی جاتی تھی۔ 1990ء کے عشرے میں 2 پاکستانی نوجوان حبیب اللہ اور انتخاب ضیا بھی کرنل حبیب کی طرح نیپال سے لاپتہ ہو گئے تھے جس کے چند روز بعد “را” نے اعلان کیا کہ اُس نے 2 پاکستانی جاسوس حبیب اللہ اور انتخاب ضیا گرفتار کئے ہیں جو کہ پوچھ گچھ کے دوران ہلاک ہو گئے۔

اس خبر کے بارے میں اپنی رائے دیجئے
پسند آئی
75%
ٹھیک ہے
 
کوئی رائے نہیں
19%
پسند ںہیں آئی
6%



 سب سے زیادہ پڑھی جانے والی مقبول خبریں






آج کا مکمل اخبار پڑھیں

کار ٹونز

اوصاف سپیشل

کالم /بلاگ


     
     
تمام اشاعت کے جملہ حقوق بحق ادارہ روزنامہ اوصاف محفوظ ہیں۔
Copyright © 2016 Daily Ausaf. All Rights Reserved