ایک نئی نویلی دولہن اور کھیتو ں میں کسان
  14  ستمبر‬‮  2017     |     اوصاف سپیشل

ایک نیا شادی شدہ جوڑا شام کی سیر کے لئے قریبی گاؤں کی طرف نکلا۔۔دونوں میاں بیوی ٹھنڈی ٹھنڈی ہوا میں سر سبز لہلہاتی فصلوں کو دیکھ دیکھ کر لطف اندوز ہو رہے تھے۔ اچانک خاتون نےایک کھیت میں ایک کسان کو دیکھا جس نے زمین میں ہل چلانے کے لئے ایک بیل کے ساتھ ایک گائے کو بھی جوت رکھا تھا۔ خاتون اس ظلم پر بہت سٹپٹائی۔ اورغصے میں اپنے شوہر سے پوچھنے لگی، بھلا یہ کیا بات ہوئی، اب گائے ہل بھی چلایا کرے گی؟شوہر نے کہا : "ارے بیگم کیا ہوا، جانور ہیں انھیں کیا فرق پڑتا ہے۔۔"خاتون نے اسی گرمجوشی سے کہا : "

چاہے جانور ہی کیوں نہ ہو ، ہے تو صنفِ نازک ہی، دودھ دیتی ہے، بچے پیدا کرتی ہے، اس کے باوجود بھی اس سے باربرداری اور مشقت لی جا رہی ہے، یہ کہاں کا انصاف ہے؟"شوہر کچھ دیر خاموش بیٹھا سر کھجاتا رہا پھر ذرا دھیمے لہجے میں بولا:"بیگم تمہیں کیا علم، یہ بھی تو ہو سکتا ہے کہ یہ ایک لبرل سیکولر گائے ہو اور بیل کی برابری کرنا چاہتی ہو۔۔۔"


اس خبر کے بارے میں اپنی رائے دیجئے
پسند آئی
80%
ٹھیک ہے
5%
کوئی رائے نہیں
10%
پسند ںہیں آئی
5%


 سب سے زیادہ پڑھی جانے والی مقبول خبریں






  قائد اعظم محمد علی جناح  
  اسکندر مرزا  
  لیاقت علی خان  
  ایوب خان  
آج کا مکمل اخبار پڑھیں

کار ٹونز

اوصاف سپیشل

کالم /بلاگ


     
     
تمام اشاعت کے جملہ حقوق بحق ادارہ روزنامہ اوصاف محفوظ ہیں۔
Copyright © 2016 Daily Ausaf. All Rights Reserved