نو ماہ میں ٹیکس محاصل میں تقریبا ایک سو اڑسٹھ ارب کا شارٹ فال‘بڑا انکشاف سامنے آگیا
  10  اپریل‬‮  2017     |      کاروبار

اسلام آباد(روزنامہ اوصاف) چیئرمین کی بار بار تبدیلی کے باعث ایف بی آر کو ٹیکس محصولات میں مشکلات کا سامنا ہے ۔ تین ہزار چھ سو اکیس ارب روپے کے سالانہ ٹیکس ہدف پر نظرثانی شروع کر دی گئی۔اسٹیٹ بینک کے مطابق مالی سال کے نو ماہ میں ٹیکس محاصل میں تقریبا ایک سو اڑسٹھ ارب کا شارٹ فال ہے ۔ سیکرٹری خزانہ طارق باجوہ کے مطابق سالانہ ٹیکس ہدف میں کمی کرنا پڑے گی ۔چیئرمین ایف بی آر کی بار بار تبدیلی کے علاوہ ٹیکس وصولیوں میں سست روی کی دیگر وجوہات میں برآمدی شعبے اور سرمایہ کاروں کو دی جانے والی ٹیکس مراعات بھی ہیں ۔واضح رہے کہ آئی ایم ایف اور اسٹیٹ بینک بھی کم محصولات پر تشویش کا اظہار کر چکے ہیں۔


اس خبر کے بارے میں اپنی رائے دیجئے
پسند آئی
 
ٹھیک ہے
 
کوئی رائے نہیں
 
پسند ںہیں آئی
 


 سب سے زیادہ پڑھی جانے والی مقبول خبریں






آج کا مکمل اخبار پڑھیں

کار ٹونز

کاروبار

کالم /بلاگ


     
     
تمام اشاعت کے جملہ حقوق بحق ادارہ روزنامہ اوصاف محفوظ ہیں۔
Copyright © 2016 Daily Ausaf. All Rights Reserved