سیکولر لادینیت مردہ باد
  23  اگست‬‮  2017     |     کالمز   |  مزید کالمز

وہ دور گزر گئے کہ جب نعرہ لگاکرتا تھا کہ ''مسلم'' ہے تو مسلم لیگ میں آ…اب تو سیکولر' لبرل' لادینیت کا جادو ایسا سرچڑھ کر بول رہا ہے کہ … پنجاب ٹیکسٹ بک بورڈ کی نئی کتابوں سے اسلام ' پاکستان اور افواج پاکستان کے حوالے سے اسباق اور تصاویر نکال باہر کی گئی ہیں۔ ذرائع کے مطابق جماعت اول سے پنجم تک کی کتابوں سے رحمت عالم ۖ' حضرت سیدنا علی المرتضیٰ' شاہ عبد القادر جیلانی' مسجد کی تعظیم' جشن عید میلاد النبی ۖ…' پاکستان' مشاہیر پاکستان' پاک فوج اور شہداء پاک فوج میجر عزیز بھٹی شہید وغیرہ کے حوالے سے تمام مضامین اور تصاویر کو … چن چن کر ختم کر دیا گیا ہے۔ ایک رپورٹ کے مطابق وزیر اعلیٰ پنجاب میاں شہباز شریف سے قربت رکھنے والی دو غیر ملکی شخصیات' مائیکل باربر' جن کا تعلق برطانوی این جی او ''ڈی ایف آئی ڈی '' سے ہے اور برٹش کونسل سے ''نکولس شا ''اس حوالے سے سب سے زیادہ سرگرم رہے' یہ دونوں غیر ملکی افراد صوبے میں تعلیمی اصلاحات کے نام پر تعاون اور فنڈز کی فراہمی کی وجہ سے شہباز شریف کے سب سے زیادہ قریب رہے … جب دس کروڑ سے زائد مسلمانوں کے صوبہ پنجاب کے بچوں کیلئے نصاب تعلیم غیر ملکی گورے مرتب کریں گے … تو پھر کہاں کا نظریہ پاکستان اور کہاں کا نظریہ اسلام؟ یہاں تو ہر چیز بکتی ہے … اگر نصاب تعلیم سے اسلام' پاکستان' مشاہیر پاکستان اور پاک فوج کے حوالے سے مضامین نکالنے کی وجہ سے ڈالر اور پائونڈ مل جائیں تو اور کیا چاہیے؟ کیا یہاں … ڈالروںکے عوض ڈ اکٹر عافیہ صدیقی کو اس سے قبل نہیں بیچا گیا؟ ہم نے ڈالر لینے کے لئے … اپنے ہی پاکستانیوں پر آپریشن مسلط نہیں کیے؟ کیا ڈالروں کی خاطر پاکستانی فضائی اڈے امریکیوں کے حوالے نہیں کیے گئے؟ یقینا یہ سب کچھ اور اس سے بھی بڑھ کر ایک رسوا کن ڈکٹیٹر کے دور میں ہوچکا ہے … تو پھر مسلم لیگ ن کی حکومت نے نصاب تعلیم سے اسلام اور پاکستان سے متعلق مضامین ختم کر دیئے ہیں … تو کونسی قیامت ٹوٹ پڑی ہے؟ یہ بات ٹھیک ہے کہ پاکستان کا آئین یہ ضمانت دیتا ہے کہ حکومت عوام الناس کی دینی تعلیم و تربیت اور طرز بودوباش کو اسلامی سانچے میں ڈھالنے کا فریضہ سرانجام دے گی' لیکن آئین میں یہ بات کہیں نہیں لکھی ہوئی کہ وہ حکومت مسلم لیگ (ن) … پھر چھوٹے ''میاں'' صاحب کی ہوگی … یہ تو صوبہ پنجاب میں بسنے والے دس کروڑ سے زائد شمع رسالتۖ کے پروانوں کی ذمہ داری بنتی ہے کہ وہ اس بات کا فیصلہ کریں کہ انہیں اپنے بچوں کو کاٹھا انگریز بنانا ہے … دہلی کا غلام بنانا ہے؟ یا پھر پکا سچا اور کھرا پاکستانی مسلمان بنانا ہے؟ اگر تو پکا سچا پاکستانی مسلمان بنانا ہے تو پھر … رحمت عالم ۖ کی تعلیمات کو پرائمری' مڈل یا ہائی تعلیمی اداروں کے نصاب تعلیم سے نکال کر … تو کبھی بھی نہیں بنایا جاسکتا … تو پھر کیا یہ بہتر نہیںہوگا کہ صوبہ پنجاب کے مسلمان آئندہ انتخابات میں مسلم لیگ (ن) سے اپنی جان ہی چھڑا لیں؟ پرائمری کا نصاب تعلیم جن بچوں کے لئے تیار کیا گیا ہے … وہ بچے نہ تو لندن کے ہیں … نہ فرانس کے ہیں اور نہ ہی دہلی یا امریکہ کے' بلکہ وہ بچے ان پاکستانیوں کے ہیں کہ جن غریب پاکستانیوں کو تین وقت کا کھانا بھی بمشکل میسر آتا ہوگا' کون نہیں جانتا کہ ہماری تعلیم گاہوں میں پڑھنے والے بچوں کو اس وقت تعلیم سے بڑھ کر … اس ''تربیت'' کی ضرورت ہے … کہ جس تربیت میں دوسروں سے ہمدردی' مواخات' قناعت پسندی' سچائی' حب الوطنی اور احترام کے جذبات پیدا ہوں۔ جو ''تعلیم'' صرف مادہ پرستی ہی سکھاتی ہو … اس تعلیم کی برکت سے ''ینگ ڈاکٹرز'' نام کی مخلوق تو جنم لے سکتی ہے … رشوت خور اہلکار تو پیدا ہوسکتے ہیں… لوٹے ' لٹیرے اور کرپٹ مافیا کے خرکار تو پیدا ہوسکتے ہیں۔ مگر دیانت دار' امانت دار' بااخلاق اور سچائی کے خوگر نہیں … ''مادیت'' کی چیرہ دستیوں سے بچانے کے لئے روحانی تعلیم نہایت ضروری ہے ل اور مسلم لیگ (ن) کی حکومت نے نصاب تعلیم سے ''اسلام'' کے اسباق کو نکال کر ''مادہ پرستی'' کو بھی ''حیوانیت'' کا چوغہ پہنانے کی کوشش کی ہے … برطانوی این جی اوز کے ''مائیکل باربر'' اور برٹش کونسل کے ''نکولس شا کی کوششوں اور مشاورت سے مرتب پانے والے نصاب تعلیم کو جب معصوم بچے پڑھ کر عملی میدان میں آئیں گے تو پھر ہر طرف دفعہ62-63 پر پورا اترنے والے ن لیگیوں کے اتوار بازار سجے ہوں گے … کہا جاتا ہے کہ پنجاب کے اندر اس وقت اول جماعت سے لے کر سیکنڈری جماعت تک سرکاری سکولوں میں پڑھنے والے کل طلبا و طالبات کی تعداد ایک کروڑ آٹھ لاکھ کے لگ بھگ ہے … ان میں سے پرائمری میں تعلیم حاصل کرنے طلباء کی تعداد60 لاکھ کے لگ بھگ ہے۔ ایک اخباری خبر کے مطابق … پرائمری حصہ کی انگریزی کتابوں میں سینٹر کنسلٹنٹ کے طور پر ایک انگریز غیر ملکی ''نکولس شا'' کا نام تو شائع کر دیا گیا ہے … مگر تیسری جماعت کی اردو کی کتاب کے صفحہ نمبر21 تا27 سے رحمت عالم ۖ' آپۖ کا تعارف' ہجرت مدینہ ' طائف کے واقعہ کی تفصیلات پر مشتمل تمام مضامین نکال دیئے گئے ہیں … لبرل اور سیکولر لادینیت کے خرکاروں کو آج کے دور میں انگریزوں سے بڑھ کر پیغمبر اسلام ۖ سے چڑ ہے … اور ان خرکاروں کو جہاں موقع ملے وہ دشمنی کا کوئی موقع ہاتھ سے جانے نہیں دیتے۔

کالم کے خاتمے سے پہلے یہ لطیفہ بھی پڑھ لیجئے … ''وزیر اعلیٰ پنجاب شہباز شریف نے پرائمری نصاب تعلیم میں تبدیلی کا نوٹس لیتے ہوئے فوری رپورٹ طلب کرلی ہے ''… ہا ' ہا ' ہا… یہ کیسا سنگین ہے ؟ موصوف لگتا ہے کہ زیادہ تر وقت ''بھارتی'' پنجا ب میں گزارتے ہیں کہ جو انہیں بروقت پتہ ہی نہیں چل پاتا کہ ان کی ناک کے نیچے شہر لاہور میں بیورو کریسی کے سیکولر گماشتے … پنجاب کے کروڑوں مسلمانوں کے نظریات و عقائد کے خلاف کیا کیا گل کھلاتے رہتے ہیں؟ جب سب کچھ ہوچکا ہوتاہے … عوام کاسکون غارت ہو جاتاہے تب موصوف کو ''رپورٹ'' طلب کرنے کا خیال آتاہے۔


اس خبر کے بارے میں اپنی رائے دیجئے
پسند آئی
 
ٹھیک ہے
50%
کوئی رائے نہیں
 
پسند ںہیں آئی
50%


 سب سے زیادہ پڑھی جانے والی مقبول خبریں





  اوصاف سپیشل

آج کا مکمل اخبار پڑھیں

  قائد اعظم محمد علی جناح  
  اسکندر مرزا  
  لیاقت علی خان  
  ایوب خان  
آج کا مکمل اخبار پڑھیں

کار ٹونز

کالمز

کالم /بلاگ


     
     
تمام اشاعت کے جملہ حقوق بحق ادارہ روزنامہ اوصاف محفوظ ہیں۔
Copyright © 2016 Daily Ausaf. All Rights Reserved