آصف زرداری' پرویز مشرف!قاتل کون؟
  23  ستمبر‬‮  2017     |     کالمز   |  مزید کالمز

دونوں طرف سے سچ بولا جارہا ہے … آصف علی زرداری اور پیپلز پارٹی والے پرویز مشرف کو بی بی بینظیر بھٹو کا قاتل قرار دیتے ہیں تو … پرویز مشرف نے بھی …آصف علی زرداری کو بے نظیر بھٹو اور مرتضیٰ بھٹو کا قاتل قرار دیتے ہوئے انکشاف کیا کہ بی بی کے قتل سے مجھے نقصان اور زرداری کو فائدہ ہوا … اس لئے آصف زرداری کو گرفتار کیا جائے … پاکستانی قوم نہ تو ''محترمہ'' کے قتل کو بھولی ہے اور نہ ہی … اس دن پیپلز پارٹی کے جیالوں کے ردعمل کو کہ جس احتجاجی ردعمل کے نتیجے میں … اس ملک و قوم کو سوا ارب روپے کا نقصان برداشت کرنا پڑا تھا … پرویز مشرف اور آصف علی زرداری کوئی عام پاکستانی نہیں بلکہ دونوں اس بدقسمت ملک کے سابق صدور رہ چکے ہیں ' اگر دونوں ایک دوسرے کو بی بی کا قاتل قرار دے رہے ہیں … تو اعلیٰ عدلیہ کے ساتھ ساتھ ملکی سلامتی کے اعلیٰ اداروں کو بھی اس کا سخت نوٹس لیتے ہوئے دونوں کو گرفتار کرکے غیر جانبدارانہ تفتیش کرکے اصل قاتل کو موت کی سزا تک پہنچائیں۔ بہرحال ایک دوسرے کے حوالے سے سچ بولنے پر یہ قوم پرویز مشرف اور آصف علی زرداری دونوں کو تحسین کی نگاہوں سے دیکھتی ہے۔ پاکستان کی عظیم قوم کے یہ دونوں یکے بعد دیگرے حکمران رہے ہیں … میری قوم کے عظیم لوگو! اپنے ماضی کے حکمرانوں کی گفتار و کردار کا ذرا بغور مشاہدہ کرو … دونوں ایک دوسرے کو قاتل قراردے رہے ہیں۔ دونوں طرف سے ایک دوسرے کی گرفتاری کے مطالبات کیے جارہے ہیں … اور قتل بھی … کسی موچی' کسان یا تیلی کا نہیں … بلکہ اس ملک کی دوبار وزیراعظم رہنے والی سینئر سیاستدان محترمہ بے نظیر بھٹو کا۔ اب فیصلہ یہ قوم کرے کہ جب پاکستان پر ایسے لوگ حکمران رہیں گے تو ملک کیا خاک ترقی کرے گا؟ قائد حزب اختلاف خورشید شاہ کہتے ہیں کہ ''اگر پرویز مشرف کو سب معلوم تھا تو پہلے کیوں چھپایا؟ شاہ جی! نے بات تو درست کی ہے مگر کوئی ا ن سے پوچھئے … چلیں اگر ڈکٹیٹر نے سچ بول ہی دیا ہے تو اب انہیں بھی اپنی شہید ''رانی'' سے وفا نبھاتے ہوئے … قاتلوں کے خلاف میدان عمل میں کودنا چاہیے۔ قوم کو کس بے دردی کے ساتھ الو بنانے کی کوششیں کی جاتی رہیں … یہ سارے مل کر ''قاتل'' دارالعلوم حقانیہ سے ڈھونڈتے رہے … مدارس کے خلاف کمپیئن چلاتے رہے اور ''قاتل'' خود ان کے گھر سے نکلے۔

اگر آصف علی زرداری اور پیپلز پارٹی پرویز مشرف کو واقعی بے نظیر بھٹو کا قاتل سمجھتی تھی تو پھر اسے سلامی دیکر ریڈ کارپٹ بچھا کر رخصت کیوں کیاتھا؟ پرویز مشرف کو پاکستان واپس لاکر اب اس کا عدالتی ٹرائل انتہائی ضروری ہوچکا ہے … اگر بے نظیر بھٹو کے اصل قاتل یونہی چھپتے رہے … یا جو اس قتل کا ایک دوسرے پر کھل کر الزام لگا رہے ہیں … انہیں گرفتار کرکے تفتیش کرنے کی بجائے معاملے کو یونہی کھلا چھوڑ دیا گیا … قوم کا انصاف سے اعتماد اٹھ جائے گا … محترمہ بے نظیر بھٹو کا لیاقت باغ میں قتل ہو جانا آج بھی سوالیہ نشان بنا ہوا ہے ؟ پاکستانی قوم کو بھی چاہیے کہ وہ اس قسم کے حکمرانوں کو برداشت کرنے پر اللہ کے ہاں معافی مانگے۔ اللہ ہم سب کی حالت پر رحم فرمائے۔ آمین


اس خبر کے بارے میں اپنی رائے دیجئے
پسند آئی
100%
ٹھیک ہے
 
کوئی رائے نہیں
 
پسند ںہیں آئی
 




     
     
تمام اشاعت کے جملہ حقوق بحق ادارہ روزنامہ اوصاف محفوظ ہیں۔
Copyright © 2016 Daily Ausaf. All Rights Reserved