امریکی عدالت نے چرچ حملے کے مجرم کو سزائے موت سنادی
  11  جنوری‬‮  2017     |     یورپ
چارلسٹن(آئی این پی ) امریکی عدالت نے چرچ میں فائرنگ کرکے 9 سیاہ فام افراد کو قتل کرنے کے جرم میں ڈیلن رووف کو سزائے موت سنادی ۔غیر ملکی میڈیا کے مطابق امریکی عدالت کا کہنا تھا کہ جنوبی کارولینا میں چارلسٹن کے ایک چرچ میں بائبل پڑھنے والے 9 سیاہ فارم کو قتل کرنے کے جرم میں 22 سالہ ڈیلن رووف سزائے موت کا مستحق ہے۔مذکورہ عدالت نے 3 ماہ قبل ڈیلن رووف کو 33 الزامات کے تحت مجرم قرار دیا تھا جن میں قتل اور 2015 میں ایک چرچ میں فائرنگ کرکے متعدد افراد کو قتل کرنا بھی شامل تھا۔جس وقت عدالت نے ڈیلن رووف کو سزائے موت سنائی اس نے کسی بھی قسم کا 'اظہار' نہیں کیا۔پروسیکیوٹر کا کہنا تھا کہ مجرم کئی ماہ سے حملے کا منصوبہ بنارہا تھا جس کی وجہ سے امریکا کے جنوبی علاقوں میں افریقی اور امریکی تفریق کے حوالے سے ایک پرانی کشیدگی میں اضافہ ہوا۔چرچ پر ہونے والے فائرنگ کے واقعے میں ہلاک ہونے والی ایک مقتولہ کے بھائی کا کہنا تھا کہ 'اس نے وہ دن، وہ لمحہ اور وہ مہینہ فائرنگ کے لیے منتخب کیا تھا جس میں میری بہن ہلاک ہوئی اور اب کوئی اس کے لیے بھی ایسا ہی کرنے جارہا ہے۔ڈیلن رووف کو آئندہ روز باقاعدہ سزا سنائی جائے گی۔ایک امریکی این جی او کے ایگزیکٹو ڈائریکٹر روبٹ ڈونہم کا کہنا تھا کہ ڈیلن رووف نے گذشتہ ہفتے اس پر لگائے جانے والے الزامات کے دوران کسی قسم کے ثبوت پیش نہیں کیے اور نہ ہی عدالت کو اس کی دماغی حالت پر تفصیلات سننے دی گئیں۔اپنے مختصر سے بیان میں ڈیلن رووف نے عدالت کو بتایا کہ وہ سمجھتا ہے کہ اسے ایسا کرنا چاہیے تھا۔اس کا کہنا تھا کہ 'اگر کوئی کسی چیز سے نفرت کرتا ہے تو اس کیلئے اس کے پاس ایک اچھی وجہ ہونی چاہیے، میں آپ سے عمر قید کی سزا دینے کیلئے کچھ کہنے کا حق رکھتا ہوں لیکن میں یقین سے نہیں کہہ سکتا کہ کسی کیلئے کیا بہتر ہوسکتا ہے۔امریکی میڈیا کا کہنا ہے کہ ڈیلن رووف وہ پہلاشخص ہیجس کونفرت پرمبنی جرم پرسزائیموت سنائی گئی۔یاد رہے کہ 17 جون 2015 کو ڈیلن رووف نے چرچ میں فائرنگ کرکے 9 سیاہ فارم کو قتل کردیا تھا، جن کی عمریں 26 سے 87 سال کے درمیان تھیں۔

اس خبر کے بارے میں اپنی رائے دیجئے
پسند آئی
 
ٹھیک ہے
 
کوئی رائے نہیں
 
پسند ںہیں آئی
 

رپورٹر   :  


 سب سے زیادہ پڑھی جانے والی مقبول خبریں





 انٹر نیٹ کی دنیا میں سب سے زیادہ پڑھے جانے والے مضا مینں
loading...


     
     
تمام اشاعت کے جملہ حقوق بحق ادارہ روزنامہ اوصاف محفوظ ہیں۔
Copyright © 2016 Daily Ausaf. All Rights Reserved