انسانی حقوق کے علمبردار مقبوضہ کشمیر کی طرف بھی توجہ دیں،مقررین
  15  مارچ‬‮  2017     |     یورپ
لندن (اوصاف نیوز) برطانوی پارلیمنٹ کے دونوں ایوانوں کے ارکان ' خواتین رہنمائوں اور کشمیری لیڈروں نے خواتین کے عالمی دن کے موقع کی مناسبت سے منعقدہ تقریب میں دنیا بھر میں خواتین کو برابر حقوق دینے' خواتین پر ڈھائے جانے والے مظالم اور مقبوضہ کشمیر میں چلنے والی تحریک آزادی کشمیر کے دوران کشمیری خواتین سے زیادتیاں کرنے والوں کے خلاف کارروائی کی جائے' انسانی حقوق کے علمبردار مقبوضہ کشمیر کی طرف بھی توجہ دیں' برٹش کشمیری تمام برطانوی سیاسی جماعتوں سے مایوس ہیں مگر اپنے وطن کی آزادی اور کشمیری عوام کے حقوق کے حصول تک دنیا بھر میں جدوجہد جاری رہے گی' برطانوی پارلیمنٹ کے ارکان کی طرف سے ہر سطح پر معاونت کی یقین دہانی جبکہ جموں وکشمیر تحریک حق خود ارادیت یورپ کی طرف سے خواتین کو ہر سطح پر ہر اول دستے اور لیڈر شپ کردار میں لانے کا اعلان' اگلے چند ہفتوں میں برطانوی اور یورپی پارلیمنٹ ' مختلف برطانوی شہروں اور آزاد کشمیر و گلگت بلتستان کے علاوہ پاکستان میں مقیم ریاستی باشندوں کو منظم کرنے کے لئے تحریکی وفود دورے کریں گے اور تمام سیاسی' سماجی اور مذہبی قیادت سے حمایت لیکر مسئلہ کشمیر کو حق خودارادیت کے حصول کے لئے منظم جدوجہد کی جائے گی۔ ان خیالات کا اظہار جموں کشمیر تحریک حق خود ارادیت یورپ کے زیر اہتمام خواتین کے عالمی دن کی مناسبت سے برطانوی پارلیمنٹ کے کمیٹی روم میں منعقدہ اجلاس میں آل پارٹیز کشمیر پارلیمنٹری گروپ کے چیئرمین ڈیوڈ نٹال ایم پی' وائس چیئرمین بیرسٹر عمران حسین ایم پی' وائس چیئرمین لارڈ قربان حسین' سیکرٹری شیڈو جسٹس وزیر یاسمین قریشی ایم پی' سابق نائب وزیر خارجہ آئیون لیوس ایم پی' سٹیورٹ اینڈریو ایم پی' لارڈ ٹموتھی کرک ہوپ' بیرونس زاہدہ منظور' تحریک کے چیئرمین راجہ نجابت حسین' ڈپٹی چیئرپرسن صبیحہ شہزاد' گریٹر لندن کی چیئرپرسن حنا ملک' پیپلز پارٹی کی رہنما ناہید حیات' محی اقبال چشتی' پروفیسر شاہد اقبال' ساہرہ خان' ثانیہ منیر بھٹی' ڈاکٹر عبدالصبور' محمد اقبال چشتی اور دیگر رہنمائوں نے جہاں خواتین کے حقوق کیلئے برطانیہ بھر میں مزید جدوجہد جاری رکھنے کا عزم کیا وہاں برطانوی پارلیمنٹ میں سب سے سینئر ممبر پارلیمنٹ سرجیرالڈ کافمین کو شاندار الفاظ مین خراج عقیدت پیش کیا اور کشمیر و فلسطین کے لئے ان کی خدمات کو مثالی قرار دیتے ہوئے ان کے مشن کی تکمیل تک جدوجہد جاری رکھنے کا اعلان کیا۔ ممبران پارلیمنٹ نے مقبوضہ کشمیر میں جاری تحریک حریت اور مظاہروں کے دوران کشمیریوں پر ڈھائے جانے والے مظالم اور قید و بند ختم کرکے کشمیریوں کو حق خود ارادیت دینے کا مطالبہ کیا جبکہ بھارتی حکومت سے مطالبہ کیا کہ وہ اپنی افواج کے ان لوگوں کے خلاف کارروائی کریں جو کشمیری نوجوانوں اور خواتین کے ساتھ زیادتیوں میں ملوث ہیں۔ اس موقع پر جہاں کشمیر گروپ کے چیئرمین ڈیوڈ نٹال ایم پی نے کہا کہ ان کی پوری ٹیم برطانوی پارلیمنٹ' حکومتی پارٹی اور وزراء تک کشمیریوں کا نکتہ نظر پہنچاتے رہیں گے اور تحریک حق خود ارادیت کے ساتھ مل کر کشمیریوں کے تمام قومی دنوں اور کشمیری رہنمائوں کے دوروں کے موقع پر ہائوس آف کامنز میں اجلاس بھی منعقد کرتے رہیں گے جبکہ ریاست جموں وکشمیر کی تمام اکائیوں میں ممبران پارلیمنٹ کے وفود بھی لیکر جائیں گے تاکہ مقامی سطح پر کشمیریوں سے مل کر ان سے براہ راست معلومات حاصل کرسکیں۔ وائس چیئرمین بیرسٹر عمران حسین نے کہا کہ برطانوی پارلیمنٹ مسئلہ کشمیر کے حل کے لئے ایک متحرک کردار ادا کررہی ہے ہمارے گروپ کے ارکان ہر ہفتے جہاں پارلیمنٹ کے اندر سوالات اور ذاتی رابطوں کے ذریعے وزیر خارجہ بورس جانسن اور شیڈو وزیر خارجہ ایملی تھارنبری سے ملاقاتیں کرتے ہیں وہیں اپنے اپنے حلقوں میں کشمیری کمیونٹی کے ساتھ بھی مقامی سطح پر موثر لابی کررہے ہیں اور ہم کشمیری عوام کو یقین دلاتے ہیں کہ برٹش ممبران پارلیمنٹ ہر سطح پر ان کے حقوق کا تحفظ کرنے کے لئے آواز بلند کرتے رہیں گے۔ انہوں نے تحریک حق خود ارادیت میں خواتین کو زیادہ سے زیادہ عہدوں پر فائز کرنے پر راجہ نجابت حسین اور ان کی ٹیم کو مبارکباد پیش کی۔ لارڈ قربان حسین نے کہا کہ ذاتی حیثیت میں تو برطانوی پارلیمنٹ میں کشمیریوں کے بہت دوست موجود ہیں مگر ہم سیاسی پارٹیوں کی کشمیر پالیسی سے مطمئن نہیں ہیں۔ انہوں نے کہا کہ مسئلہ کشمیر بھارت اور پاکستان کے درمیان سرحدی تنازعہ نہیں بلکہ کشمیری عوام کے حق خود ارادیت کا مسئلہ ہے جبکہ مغربی اقوام مقبوضہ کشمیر میں انسانی حقوق کی خلاف ورزیوں کو دونوں ممالک کا مسئلہ قرار نہ دیں۔ راجہ نجابت حسین نے اس موقع پر مستقبل کے پروگراموں سے آگاہ کیا۔

اس خبر کے بارے میں اپنی رائے دیجئے
پسند آئی
 
ٹھیک ہے
 
کوئی رائے نہیں
 
پسند ںہیں آئی
 



 سب سے زیادہ پڑھی جانے والی مقبول خبریں





  اوصاف سپیشل

آج کا مکمل اخبار پڑھیں

آج کا مکمل اخبار پڑھیں

کار ٹونز


یورپ

کالم /بلاگ


     
     
تمام اشاعت کے جملہ حقوق بحق ادارہ روزنامہ اوصاف محفوظ ہیں۔
Copyright © 2016 Daily Ausaf. All Rights Reserved