زرداری کاصدربنناپاکستان کیخلاف سازش تھی،زبیرشاہین
  20  مارچ‬‮  2017     |     یورپ

برمنگھم (پ ر) پاکستان رابطہ کونسل مڈلینڈ کے کنونیر محمد زبیر شاہین نے کہا ہے کہ اب ایک نیا انکشاف بھی سامنے آگیا ہے کہ آصف علی زرداری کے دور میں پاکستانی قونصلیٹ دبئی سے 2010 میں 80 امریکیوں اور 150 بھارتی باشندوں کو بھی ویزے جاری کیے گئے ہیں اس سے ثابت ہوتا ہے کہ ایک بڑی تعداد میں پاکستان میں ایسے لوگ لائے گئے ہیں جن کے بارے میں کسی کو کچھ پتہ نہیں کہ یہ لوگ اب کہاں ہیں اور کیا کر رہے ہیں۔ انہوں نے کہا بے نظیر کا قتل اور آصف زرداری کا صدر بننا پاکستان کے خلاف ایک گہری سازش ہوئی ہے بے نظیر کی وصیت وغیرہ سب جعلی تھیں یہ محض پورا ایک ڈرامہ رچایا گیا کہ آصف زرداری کو کسی طریقے سے اقتدار میں لایا جائے البتہ یہ بھی بڑی تشویشناک صورت حال ہے کہ پاکستان کے سکیورٹی ادارے اس دوران کہاں غائب رہے کہ اتنی بڑی تعداد میں ویزے جاری کیے گے ہیں اور کسی کو خبر تک نہیں ہوئی۔ زبیر شاہین نے کہا کہ پاکستان کو باہر سے نہیں بلکہ پاکستان کے سیاستدانوں حکمرانوں اور ایوانوں میں بیٹھے دشمنوں سے خطرہ ہے پاکستانیوں کو ویزے جاری کرتے ہوئے بیشمار سوالات کیے جاتے اور دہشت گردوں کے لیے ملک کے صدر اور وزیر اعظم کی سفارش ہوتی ہے اور کارروائی کرنے والوں کو گھروں میںپنا ہ دی جاتی ہے اور کسی غریب کو پکڑ کر پھانسی پر چڑھا دیا جاتا ہے اور اس ملک میں کوئی کسی ملک دشمن کو پوچھنے والا نہیں ہے۔ انہوں نے کہا کہ ملک کو بچانا ہے تو پھر ہر ادارے میں صفائی کرنا ہوگی ورنہ وقت آنے والا ہے کہ ہر شہری قانون کو اپنے ہاتھ میں لے گا اور پھر فیصلے سڑکوں پر ہونگے اور دشمن کی یہ کوشش ہے کہ لیبا۔ شام اور عراق جیسے حالات پیدا کر کے ملک کو تباہ و برباد کر دیا جائے اور پاکستان پر قبضہ کر لیا جائے۔ آصف علی زرداری اور میاں نواز شریف کو کوئی خطرہ نہیں ہے انہوں نے اپنے ساری ملک سے نکال دبئی اور لندن جمع کر رکھی ہے۔


اس خبر کے بارے میں اپنی رائے دیجئے
پسند آئی
 
ٹھیک ہے
 
کوئی رائے نہیں
 
پسند ںہیں آئی
 


 سب سے زیادہ پڑھی جانے والی مقبول خبریں






آج کا مکمل اخبار پڑھیں

کار ٹونز


یورپ

کالم /بلاگ


     
     
تمام اشاعت کے جملہ حقوق بحق ادارہ روزنامہ اوصاف محفوظ ہیں۔
Copyright © 2016 Daily Ausaf. All Rights Reserved