سودی نظام کھلم کھلا اللہ ورسول کے ساتھ جنگ ہے ،حافظ عبدالاعلیٰ
  17  اپریل‬‮  2017     |     یورپ

بریڈفورڈ(پ ر)مرکزی جمعیت اہل حدیث برطانیہ کے سیکرٹری اطلاعات مولاناحافظ عبدالاعلیٰ درانی نے کہاہے کہ سودی نظام کھلم کھلا اللہ ورسول کے ساتھ جنگ ہے ،چیف جسٹس وفاقی شرعی عدالت کوسود کے حق میں ناجائزتاویلیں پیش کرنے پر مستعفی ہوجانا چاہیے ۔ ورنہ چیف جسٹس سپریم کورٹ ان کا کیس سپریم جوڈیشنل کونسل کے سامنے پیش کرکے ان کی اہلیت، نااہلی کے بارے میں فیصلہ کریں ۔سود کے حق میں دلائل دے کرانہوں نے اپنی جانبداری ثابت کردی ہے لہٰذا انہیں اس کیس کاحصہ بن کر نہیں رہنا چاہیے۔ان کے بیان نے جلتی پرتیل کاکام دیاہے جس سے ثابت ہوتاہے کہ وہ جان بوجھ پر ابہام پیدا کرنا چاہتے ہیں، جبکہ اسلام کانظام معیشت بالکل واضح اورموجودہ یہودی بینکنگ سسٹم کے بالکل برعکس انسانیت کے حق میں بہترین ہے ۔مولاناعبدالاعلیٰ درانی نے کہاحکومت عدالتوں میں کیس لڑنے اور حکومتی وکلاء سود کے حق میں دلائل دینے کی بجائے اللہ و رسول کے ساتھ جنگ لڑنے سے باز آجائیں ، یوں بھی 73میںآئین سازی کے موقعہ پرشریعت فیڈرل بنچ کی طرف سے دینی جماعتوں اسلامی سکالرزاورجیدعلماء نے سیر حاصل بحث کے بعد سود پر مبنی معیشت کو ختم کرنے کا متفقہ طورپرفیصلہ مطالبہ کیا تھا ، اورآئین کے آرٹیکل 38میں ریاست اور حکومت کو اس چیز کا پابندکیاگیاہے کہ جتنی جلدی ممکن ہوسودی نظام ختم کردیاجائے ۔لیکن اس فیصلے پر آج تک عمل نہیں ہوسکاجس کی وجہ حکومت کی بدنیتی ہے ۔اور کتنے تعجب کی بات ہے کہ وفاقی شرعی عدالت جو اسی مبارک کام کی خاطر بنائی گئی تھی وہی حفاظتی باڑ گلستان کو اجاڑنے پر تلی ہوئی ہے۔اور وہ امتناع سود کیس میں مسلسل تاخیری حربے استعمال کررہی ہے ۔ جونہایت ہی نامعقول بلکہ شرمناک بات ہے ۔مولاناعبدالاعلیٰ نے کہاملک پر اندرونی و بیرونی مصائب کاتسلط اس بات کی دلیل ہے کہ حکومتوں کارویہ اللہ کی ناراضگی کاہے جنہیں سی پیک جیسے منصوبے نہیں روک سکتے اورنہ ہی عوام کی معیشت کو بہتر بنا سکتے ہیں بلکہ ان مادی منصوبوں سے صرف مقتدر طبقے کے حالات خوشگوارہوسکتے ہیں جوظلم وستم کوہوادے رہے ہیں ۔صرف آخرت ہی نہیںدنیامیں بھی کامیابی و کامرانی کاواحد راستہ اللہ و رسول ہی کاراستہ ہے نہ کہ ان کے ساتھ جنگ کا راستہ ۔انہوں نے کہاجس طرح ایٹم بم بناکرہمارے وطن نے طرح نو ڈالی ہے اسی طرح سودکاخاتمہ کرکے اس کے متبادل اسلامی طریق معیشت اپنا کر بھی دنیاکواسلام کاصحیح پیغام د یاجاسکتاہے ۔مولاناعبدالاعلیٰ نے کہایہ بہانہ بناکرنہیں بچا سکتاکہ ساری دنیا کابینکنگ سسٹم سودی ہے ہم کیسے اس کا متبادل پیش کریں جبکہ بڑے بڑے علماء موجود ہیں جو اس لعنت کا متبادل ڈھانچہ بنا کردے سکتے لیکن حکومت کی نیت کامخلص ہونا ضروری ہے ۔مولاناعبدالاعلیٰ درانی نے روزنامہ اوصاف کا خاص تذکرہ کرتے ہوئے کہاکہ سب سے پہلے اس نے اپنے ادارتی کالموں میں چیف جسٹس وفاقی شرعی عدالت کے بیان کانوٹس لے کر اپنی ایمانی جرات کامظاہرہ کیا جو قابل تحسین ہے ۔


اس خبر کے بارے میں اپنی رائے دیجئے
پسند آئی
100%
ٹھیک ہے
 
کوئی رائے نہیں
 
پسند ںہیں آئی
 


 سب سے زیادہ پڑھی جانے والی مقبول خبریں





  اوصاف سپیشل

آج کا مکمل اخبار پڑھیں

آج کا مکمل اخبار پڑھیں

کار ٹونز


یورپ

کالم /بلاگ


     
     
تمام اشاعت کے جملہ حقوق بحق ادارہ روزنامہ اوصاف محفوظ ہیں۔
Copyright © 2016 Daily Ausaf. All Rights Reserved