آزادکشمیر،گلگت بلتستان کی متنازعہ حیثیت کوتبدیل نہیں کیاجاناچاہیے،چوہدری یاسین
  18  اپریل‬‮  2017     |     یورپ

برمنگھم (پ ر) سابق سینئر وزیر حکومت آزاد جموں وکشمیر اور موجودہ اپوزیشن لیڈر چوہدری محمد یاسین کے اعزاز میں ایک خصوصی استقبالیہ تقریب چیئرمین پاکستان فورم برمنگھم مولانا قاری تصور الحق مدنی کی دعوت اور چوہدری امجد دوالوی اور چوہدری شاہ نواز سابق صدر پیپلز پارٹی برمنگھم و مڈ لینڈ کے تعاون سے منعقد ہوئی مسجد علی اہل سنت و الجماعت میں پہنچنے پر مہمان خصوصی چوہدری محمد یاسین' امیدوار ویسٹ مڈ لینڈ اور ممبر یورپی پارلیمنٹ شان سائمن ' رکن پارلیمنٹ خالد محمود مرزا کا عوام نے بھرپور استقبال کیا۔ چیئرمین پاکستان فورم وملانا قاری تصور الحق مدنی کی زیر صدارت منعقدہ استقبالیہ تقریب کا اغاز مولانا قاری اظہار احمد نے تلاوت کلام پاک سے کیا جبکہ بارگاہ رسالت میں نذرانہ عقیدت رضا گجر نے پیش کیا۔ نظامت کے فرائض انجام دیتے ہوئے آصف محمود مغل براہٹلوی نے مہمانان گرامی اور شرکاء کو خوش آمدید کہتے تقریب کے مقاصد پر روشنی ڈالی۔ تقریب میں شیخ الحدیث مولانا فضل الرحمن میرپور' چوہدری منظور حسین' چوہدری محمد الیاس' مولانا ضیاء المحسن طیب' مولانا ارشد محمود' مولانا عمران الحق' راجہ ذوالقرنین' عبدالغفار بھٹی' غلام حسین ' حافظ عمران ' وقاص گجر اور دیگر نے شرکت کی۔ چوہدری محمد یاسین نے استقبالیہ تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ مکمل آزادی تک آزاد کشمیر اور گلگت بلتستان کی متنازعہ حیثیت کو تبدیل نہیں کیا جانا چاہئے کیونکہ مسئلہ کے حل کے لئے ان مقامات کی یہی پوزیشن ضروری ہے۔ انہوں نے کہا کہ گلگت و بلتستان کی خستہ صورت حال کے ازالہ کے لئے صوبہ بنائے بغیر پیپلز پارٹی نے اپنے دور اقتدار میں ممکنہ خودمختاری کے ذریعہ علاقہ کے لوگوں کو حقوق دیئے چین اور پاکستان کے درمیان سی پیک منصوبہ کے توسط سے ہونے والی ترقی کو خطہ میں معاشی ترقی کا منصوبہ قرار دیتے ہوئے اسے خوش آئند قرار دیا ۔ اس موقع پر انہوں نے اوورسیز کشمیریوں کی طرف سے سی پیک منصوبہ میں کشمیر کی فلاح و بہبود کے مطالبات کو اپنے مضبوط ذرائع سے حکومت پاکستان تک پہنچانے کا عزم دھرایا۔ تاہم انہوں نے برطانیہ میں مقیم ہائی کمشنر پاکستان کے ذریعے ہی حکومتی حلقوں تک ان مطالبات کو پہنچانے کا مشورہ دیا۔ چوہدری محمد یاسین نے کہا کہ تمام مطالبات بالکل درست ہیں اور مجھے عوام کے ان مسائل کے حل میں ساتھ دینے پر خوشی ہوگی۔ اپوزیشن لیڈر نے مقبوضہ کشمیر کے حالات کو نہایت تشویشناک قرار دیتے ہوئے اقوام عالم کو آنکھیں کھولنے کی دعوت دی۔ انہوں نے کہا کہ مودی سرکار نے مقبوضہ کشمیر میں ضمنی انتخابات کے دوران آئینہ دیکھ لیا ہوگا۔ چوہدری محمد یاسین نے کہا کہ مقبوضہ کشمیر کے ضمنی انتخابات کو مسترد کرتے ہوئے دنیا پر واضح کردیا ہے کہ ان کے مسئلہ کا حل انتخابات نہیں بلکہ حق خود ارادیت ہے۔ اپوزیشن لیڈر نے کہا کہ انتخابات آزادی کے مطالبہ کا بدل نہیں۔ انہوں نے کہا کہ کشمیریوں کی جدوجہد آزادی کو منطقی انجام تک پہنچائے بغیر خطہ میں امن کی کوئی بھی ضمان تنہیں دے سکتا۔ بھارت اور پاکستان دونوں ایٹمی قوتیں ہیں اور ان دونوں میں تنائو کا حقیقی سبب مسئلہ کشمیر ہے لہذا دونوں ملکوں کے مفاد میں یہی ہے کہ وہ باہم کشمیریوں کا اعتماد سے مسئلہ کا حل مذاکرات سے تلاش کریں۔ چوہدری محمد یاسین نے ویسٹ مڈ لینڈ میئر کے لئے امیدوار شان صائمن کی بھرپور مدد کی بھی عوام سے اپیل کی۔ قبل ازیں تقریب سے خطاب کرتے ہوئے چیئرمین فورم مولانا قاری تصور الحق مدنی نے اولاً مہمانان گرامی اور شرکاء کا شکریہ ادا کیا اور کہا کہ اوورسیز کشمیری حکومت پاکستان سے اپنے مطالبات کو سی پیک منصوبہ کا حصہ بنانے کا مطالبہ کرتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ میرپور میں ایئرپورٹ ' مانسہرہ' مظفر آباد اور بھمبر موٹر وے اور دس اضلاع کو موٹر وے سے لنک' پیشہ وارانہ یونیورسٹی' کم از کم پانچ ہسپتال' متاثرین منگلا ڈیم کی مکمل بحالی' بھمبر' میرپور گیس سپلائی' مظفر آباد' میرپور' بھمبر ریلوے لنک سمیت دس مطالبات پر مشتمل چارٹر کو فوری تسلیم کیا جائے قاری تصور الحق مدنی چار مئی کو ہونے والے الیکشن میں لیبر پارٹی کے امیدوار شان صائمن کو منتخب کروانے کے لئے شرکاء سے تعاون کی اپیل کی اور کہا کہ جمہوری ملکوں میں انتخابات کے مواقع ہی تبدیلی کا موثر ذریعہ ہیں۔ انہوں نے کہا کہ شان صائمن کی کامیابی سے ویسٹ مڈ لینڈ میں کئی ایک تبدیلیوں کو یقینی بنایا جاسکتا ہے۔ دہشت گردی کے پس پردہ مسلمانوں اور دیگر کے درمیان خلیج میں بھی کمی لائی جاسکتی ہے۔ کونسلر عنصر علی خان چوہدری اور کونسلر محمد ادریس نے بھی شان صائمن کو علاقہ میں محرومیوں کے خاتمہ کا آئینہ دار قرار دیا۔ تقریب میں خالد محمود مرزا نے بھی شان صائمن کے ساتھ اظہار یکجہتی کے لئے شرکت کی۔ تقریب سے خطاب کرنے والوں میں کونسلر فاضل چوہدری' کونسلر شبیر' کونسلر ماجد الرحمن' چوہدری شاہ نواز' مولانا طارق مسعود' چوہدری ظفر اور راجہ اسحاق صابر شامل تھے۔ پروگرام کے آخر میں چیئرمین فورم مولانا قاری تصور الحق مدنی' راجہ اسحاق صابر صدر کل رابطہ کشمیر کمیٹی اور چوہدری شاہ نواز نے دس مطالبات پر مشتمل ڈیمانڈ چارٹ اپوزیشن لیڈر کشمیر چوہدری محمد یاسین کو پیش کیا جبکہ ممتاز کشمیری عالم دین شیخ الحدیث مولانا فضل الرحمن نے کشمیریوں کی آزادی اور پاکستان کی مضبوطی کی دعا کی۔ یاد رہے کہ استقبالیہ تقریب سے شان صائمن نے خصوصی خطاب کیا اور عوام سے چار مئی کو میدان میں نکلنے کی اپیل کی۔ چوہدری یاسین


اس خبر کے بارے میں اپنی رائے دیجئے
پسند آئی
 
ٹھیک ہے
 
کوئی رائے نہیں
 
پسند ںہیں آئی
 


 سب سے زیادہ پڑھی جانے والی مقبول خبریں






آج کا مکمل اخبار پڑھیں

کار ٹونز


یورپ

کالم /بلاگ


     
     
تمام اشاعت کے جملہ حقوق بحق ادارہ روزنامہ اوصاف محفوظ ہیں۔
Copyright © 2016 Daily Ausaf. All Rights Reserved