ایئرپورٹ تشددمیں ملوث افراد معطل نہیں برطرف کئے جائیں،مولاناضیاء طیب
  20  اپریل‬‮  2017     |     یورپ

برمنگھم (پ ر)جمعیت علماء برطانیہ کے مرکزی سیکرٹری اطلاعات اور ممتاز عالم دین مولانا ضیاء المحسن طیب نے اسلام آباد ایئر پورٹ مسافر خواتین کے ساتھ بدسلوکی اور تشدد کی سخت الفاظ میں مذمت کرتے ہوئے حکومت سے مطالبہ کیا ہے کہ اس میں ملوث افراد کو معطل نہیں ملازمت سے برخاست کیا جائے اور انہیں قرار واقعی سزا دی جائے انہوں نے کہا کہ ملک میں شریفوں کی حکومت کی غنڈہ گردی جاری ہے ملک میں چہیتوں اور نااہل اور کرپٹ مافیا کا قبضہ ہے کسی کی جان و مال محفوظ نہیں انہوںنے کہا کہ اس واقعہ پر پاکستان کی دنیا بھر میں جگ ہنسائی ہوئی ہے۔ پاکستانی حکومت اپنے شہریوں پر جس طرح کا تشدد کر رہی ہے وہ بھارتی حکومت سے کیا توقع رکھتی ہے کہ وہ مقبوضہ کشمیر کے مظلوم کشمیریوں پر تشدد سے احتزاز کرے گی۔ انہوں نے کہا کہ اوورسیز پاکستانیوں کو جس طرح ایئر پورٹ پر ذلیل اور رسوا کیا جاتا ہے اس کی کوئی مثال نہیں ملتی۔شریف حکومت نے اپنے چار سالہ دور میں اس کے لئے کوئی اقدامات نہیں کئے صرف زبانی جمع خرچ سے کام لیا جارہا ہے۔ انہوں نے کہا کہ حکومت عوام کے غیض و غضب کو دعوت دے رہی ہے انہوں نے کہا کہ سوشل میڈیا پر جس طرح کے کمنٹس آرہے ہیں وہ انتہائی تشویشناک ہیں لوگ ملوث اہلکاروں کے گھروں کے پتے پوچھ رہے ہیں یہ کوئی اچھا سائن نہیں ہے۔ حکومتی اہلکار عوام پر ظلم و ستم بند کریں ورنہ عوام انکا کڑا احتساب کرے گی۔ انہوں نے اس واقعہ کو اٹھانے پر میڈیا کی زبردست تعریف کی میڈیا نے اس واقعہ کو جس طرح اٹھایا ہے اس سے حکومت کا چہرہ پوری دنیا کے سامنے بے نقاب ہوگیا ہے۔ مولانا طیب نے کہا کہ میڈیا کے اس دور میں حکومتوں کی غنڈہ گردی اور دادا گیری زیادہ دیر تک نہیں چل سکتی۔


اس خبر کے بارے میں اپنی رائے دیجئے
پسند آئی
 
ٹھیک ہے
 
کوئی رائے نہیں
 
پسند ںہیں آئی
 


 سب سے زیادہ پڑھی جانے والی مقبول خبریں






آج کا مکمل اخبار پڑھیں

کار ٹونز


یورپ

کالم /بلاگ


     
     
تمام اشاعت کے جملہ حقوق بحق ادارہ روزنامہ اوصاف محفوظ ہیں۔
Copyright © 2016 Daily Ausaf. All Rights Reserved