نوازشریف کے استعفے تک پانامہ کیس کی شفاف تحقیقات ممکن نہیں،زبیر شاہین
  21  اپریل‬‮  2017     |     یورپ

برمنگھم(پ ر) پاکستان رابطہ کونسل مڈ لینڈ زون کے چیئرمین محمد زبیر شاہین نے کہا ہے کہ پانامہ لیکس کے فیصلے سے ثابت ہوگیا ہے کہ جب تک وزیراعظم میاں نواز شریف اپنے عہدے پر استعفیٰ نہیں دیں گے مزید ان کے خلاف کرپشن کی تحقیقات صاف اور شفاف نہیں ہوسکتی دو ججوں نے انہیں نااہل قرار دیا اور تین ججوں نے مزید تحقیقات کرنے کا فیصلہ دیا ہے۔ ججز میاں نواز شریف کے دباؤ میں کھل کر کوئی فیصلہ نہیں دے سکے اور جے آئی تی بنانے کی تجویز دی ہے اور ایسے ادارے اب تحقیقات کریں گے جو خود حکمرانوں نے ہر جگہ تعینات کر رکھے ہیں اور صحیح معنوں میں کوئی پیش رفت نہیں ہوگی۔ انہوںنے کہا کہ عوام کے اندر پہلے بھی یہ خدشات تھے کہ میاں نواز شریف عدالتوں پر اثر انداز ہونگے ان کے لئے بہتر ہے کہ وہ اپوزیشن کے مطالبات پر استعفیٰ دے دیں دو ججوں کا فیصلہ ہی اصل فیصلہ ہے۔ تین ججوں نے میاں نواز شریف کے حق میں فیصلہ نہیں دیا اس کا مطلب بھی یہی ہے کہ میاں نواز شریف اپنا دفاع نہیں کرسکے مگر وہ ڈر اور خوف کی وجہ سے ایسا نہیں کرسکے۔ زبیر شاہین نے کہا کہ پاکستان کا اصل مسئلہ کرپشن ہے جب تک اسے جڑ سے نہیں کاٹا جائے گا ملک میں صاف اور شفاف انتخاب بھی نہیں ہوسکتے۔ کرپشن کی دولت سے سیاسی جماعتیں گلوبٹ تیار کرتی ہیں پولیس اور تھانوں کو استعمال کیا جاتا ہے اور غریب مجبور لوگوں سے ووٹ چھین لئے جاتے ہیں ووٹرز کو برطانیہ کی طرح کوئی قانونی تحفظ نہیں ہے اور نہ ہی ایسی کوئی آزاد عدالت ہے جو عام لوگوں کو انصاف دے سکے ملک میں جمہوریت کا تقاضا ہے کہ معاشی دہشت گردوں کو پھانسی کی سزا دی جائے سول عدالتیں عدم تحفظ کا شکار ہیں پانامہ لیکس کیس کو فوجی عدالتوں میں پیش کیا جائے تاکہ کرپٹ عناصر جہاںکہیں بھی ہیں ان سے چھٹکارا حاصل ہوسکے۔ زبیرشاہین


اس خبر کے بارے میں اپنی رائے دیجئے
پسند آئی
 
ٹھیک ہے
 
کوئی رائے نہیں
 
پسند ںہیں آئی
 


 سب سے زیادہ پڑھی جانے والی مقبول خبریں





  اوصاف سپیشل

آج کا مکمل اخبار پڑھیں

آج کا مکمل اخبار پڑھیں

کار ٹونز


یورپ

کالم /بلاگ


     
     
تمام اشاعت کے جملہ حقوق بحق ادارہ روزنامہ اوصاف محفوظ ہیں۔
Copyright © 2016 Daily Ausaf. All Rights Reserved