جموں کشمیرکے عوام کسی ملک کاحصہ بننے کوتیارنہیں،جے کے نیپ
  28  اگست‬‮  2017     |     یورپ

لندن(پ ر) ریاست جموں کشمیر تقسیم برصغیر سے پہلے بھی آزاد ریاست کا وجود رکھتے ہوئے دنیا کے نقشے پر قائم تھی۔ جسکی جبری تقسیم کو گزشتہ 70سال سے کوئی صاحب عقل سوچ و فکر کا حامل ریاستی باشندہ تسلیم کرنے کو تیار ہے اور نہ ہی اسے مستقل شکل دینے کی سازشوں کو کامیاب ہونے دیں گے۔ 1947ء سے بالعموم اور 1988 سے بالخصوص لاکھوں فرزندان وطن نے جان و مال کی قربانیاں کسی الحاق کیلئے نہیں بلکہ ریاست جموں کشمیر کی مکمل آزادی اور خوشحال معاشرے کے قیام کیلئے دی ہیں۔ ریاست کے تمام منقسم محب وطن باشندوں کی جدوجہد حق حکمرانی، اختیارات اور ریاستی وسائل پر برابر کے حق کیلئے ہے۔ جس میں مذہب، علاقہ، فرقہ، قومیت کی کوئی تخصیص نہیں۔ مسئلہ جموں کشمیر کی وجہ سے نہ صرف کشمیری بدامنی کا شکار ہیں بلکہ پاکستان و بھارت کے اربوں عوام بھوک، ننگ، افلاس، افراتفری کا شکار حالت جنگ میں مبتلا شدید مشکلات کا شکار ہیں۔ کھربوں ڈالر عوامی مسائل کے حل اور بنیادی انسانی سہولیات کی فراہمی کی بجائے بارود کی نظر کرچکے ہیں۔ کشمیر کا واویلا کرتے چار جنگیں لڑ چکے ہیں جس سے معصوم لوگوں کی جانوں کے ضیاع کے علاوہ کچھ حاصل نہیں ہوا اور نہ ہی آئندہ حاصل ہوگا۔ ریاستی جموں کشمیر کی عوام کسی ملک کے ساتھ جانے اور حصہ بننے کو تیار نہیں۔ وہ سات دہائیوں سے پکار پکار کر کہہ رہے ہیں کہ دونوں ممالک اپنی افواج نکالیں اور جنگوں پر خرچ ہونے والا سرمایہ اپنے ممالک کی تعمیر و ترقی، تعلیم، صحت، روزگار جیسی بنیادی سہولیات فراہم کرکے عوام کو ترقی یافتہ دنیا میں شامل کرنے کی کوشش کریں۔ جموں کشمیر پیپلزپارٹی نیشنل پارٹی JKPNP کا مؤقف ہے کہ مستقبل میں عالمی جبری تقسیم اور بارڈر کا خاتمہ ہوگا اور دنیا بھر میں سرمایہ دار، بالادست طبقات اور سامراجی استحصالی ٹولے کی بجائے محنت کش عوام کا راج ہوگا اور ریاست جموں کشمیر بھی مکمل آزادی کے بعد یورپی یونین کی طرح جنوب ایشیائی ممالک کی یونین میں برابری کی سطح پر شامل ہوگی۔ جس کیلئے خطے کی مظلوم، محکوم پسے ہوئے طبقات کو متحد و منظم ہونا ہوگا۔ان خیالات کا اظہار ممتاز قانون دان ڈاکٹر عبدالباسط، ذوالفقار احمد ایڈووکیٹ چیئرمین JKPNP اور غالب بوستان ایڈووکیٹ نے پارٹی کے بانی چیئرمین بیرسٹر قربان علی کی پانچویں برسی اور انکی نئی کتاب شعور کی سرگوشی کی تقریب رونمائی میںکیا۔ جس میں KNP کے صدر عباس بٹ KLO کے نجیبJKLF کا چوہدری محمد صدیق، سینئر رہنما عبدالجبار بٹ، طاہر بوستان ایڈووکیٹ، انعام الحق، عجب خان، منور خان، رقیب کشمیری، خواجہ حسن، آصف مسعود نے بیرسٹر قربان علی کے نظریات اور افکار اور ریاست کی آزادی اور خوشحال ریاست کے قیام کی جدوجہد کو خراج تحسین پیش کرتے ہوئے ان کے مشن کی تکمیل کا عزم کیا۔


اس خبر کے بارے میں اپنی رائے دیجئے
پسند آئی
 
ٹھیک ہے
 
کوئی رائے نہیں
 
پسند ںہیں آئی
 


 سب سے زیادہ پڑھی جانے والی مقبول خبریں





  اوصاف سپیشل

آج کا مکمل اخبار پڑھیں

  قائد اعظم محمد علی جناح  
  اسکندر مرزا  
  لیاقت علی خان  
  ایوب خان  
آج کا مکمل اخبار پڑھیں

کار ٹونز


یورپ

کالم /بلاگ


     
     
تمام اشاعت کے جملہ حقوق بحق ادارہ روزنامہ اوصاف محفوظ ہیں۔
Copyright © 2016 Daily Ausaf. All Rights Reserved