فاروق حیدر بھی میاں صاحب کے راستے پر چل پڑے ،ملک ساجد
  28  اگست‬‮  2017     |     یورپ

برسٹل(پ ر) راجہ فاروق حیدر بھی میاں صاحب کے راستے پر چل پڑے ہیں۔ میاں صاحب کو سبق مل گیا ہے۔ اور انشاء اللہ آزاد کشمیر کی ن لیگ کو بھی سبق ملے گا۔ اس سے پہلے کہ میاں صاحب کی طرح سلوک کیا جائے میاں صاحب نے بھی عدالتوں سے پنگا لے لیا ہے۔ اور آزاد کشمیر ن لیگ والے بھی عدالتوں سے جھگڑا کرنا چاہتے ہیں۔ شریعت کورٹ کسی بھی طرح ختم نہیں ہوسکتی اور نہ ہی یہ کرسکتے ہیں عید کے بعد بھی قربانی جاری رہے گی۔ عید سے پہلے پاکستان میں قربانی ہوتی ہے اور عید کے بعد آزاد کشمیر میں ہوگی۔ آزاد کشمیر ن لیگ کو دن میں تارے نظر آگئے ہیں۔ اسلئے یہ بھی میاں صاحب کی کاپی کرتے ہوئے سیاسی شہید بننے کی کوشش کر رہے ہیں۔ اگر ان کا آقا شہید کا رتبہ حاصل نہیں کرے گا تو مرید کیسے اس رتبے کو پائیں گے۔پورا آزاد کشمیر سڑکوں پر آجائے گا اور حکمرانوں کو کوہالہ کے پل سے دریائے جہلم میں برد کریں گے۔ اگر شریعت کورٹ کو ختم کرنے کی کوشش کی گئی۔ ان خیالات کا اظہار مسلم کانفرنس کی مرکزی رابطہ سیکرٹری ملک ساجد علی نے حکومت کے اس بدفعل عمل پر اپنے ایک بیان میں کیا۔ انہوں نے مزید کہا کہ ہم پہلے دن سے کہتے آرہے ہیں۔ کہ جب ہیڈ آفس بند ہوگا۔ چھوٹی چھوتی برانچیں خود بخود انجام کو پہنچ جائیں گی۔ نہ صرف میاں صاحب ختم ہوئے ہیں بلکہ الیکشن کمیشن کے فیصلے کے تحت ن لیگ بھی ختم۔ کیونکہ یہ ایک تنظیم کا نام تھا۔ جو کہ میاں صاحب کے نام سے رجسٹرڈ تھی۔ میاں صاحب گئے ساتھ تنظیم بھی لے گئے ہیں۔ لہٰذ آزاد کشمیر میں بھی دوبارہ مسلم کانفرنس میںنمائندگی کا حق ادا کریگی۔ آپ نے مزید کہا کہ انشاء اللہ بہت جلد ن لیگی حکومت کے خلاف عدم اعتماد کی تحریک پیش کردی جائیگی۔ ابھی مطلوبہ سکور پورا ہوا ہے۔ 29ایم ایل اے نے عتیق سے خفیہ معاہدہ کرلیا ہے اور جونہی تحریک پیش ہوگی یہ تعداد 40 تک انشاء اللہ جائیگی اور اسطرح سردار عتیق احمد خان تیسری بار وزیراعظم آزاد کشمیر منتخب ہوجائیں گے۔ فاروق حیدر خود ہی چلا جائے تو ٹھیک ورنہ میاں صاحب کی طرح گھسیٹ کر اتاریں گے۔


اس خبر کے بارے میں اپنی رائے دیجئے
پسند آئی
 
ٹھیک ہے
 
کوئی رائے نہیں
 
پسند ںہیں آئی
 


 سب سے زیادہ پڑھی جانے والی مقبول خبریں





  اوصاف سپیشل

آج کا مکمل اخبار پڑھیں

آج کا مکمل اخبار پڑھیں

کار ٹونز


یورپ

کالم /بلاگ


     
     
تمام اشاعت کے جملہ حقوق بحق ادارہ روزنامہ اوصاف محفوظ ہیں۔
Copyright © 2016 Daily Ausaf. All Rights Reserved