مجلس اقبال کا بارکنگ مسلم سوشل اینڈ کلچرل سوسائٹی کے تعاون سے پروگرام
  29  اگست‬‮  2017     |     یورپ

لند ن ( پ ر )مجلس اقبال نے بارکنگ مسلم سوشل اینڈ کلچرل سوسائٹی کے تعاون سے بارکنگ پارک ہوٹل میں ایک جلسہ منعقد کیا۔اس کی غرض و غایت تشکیل پاکستان کے ضمن میں اسلامیان ہند کی جدوجہد آزادی اور اس کے اغراض و مقاصد کے ضمن میں اسکا اہتمام کیا۔ نہ صرف بارکنگ بلکہ نواحی علاقوں میں مقیم پاکستانیوں نے بھی شرکت کی۔ تقریب کا آغاز عبد الرئوف قاضی نے قرآن حکیم کی تلاوت سے کیا۔ بعد ازاں مقامی سوسائٹی کے سابق صدر راجہ محمد بشیر اور قیصر محمود نے بارگاہ رسالت ۖ میں ہدیہ نعت پیش کیا۔ مقررین نے پاکستان کیوں بنا؟ (ہیکنی کے سابق صدر شجاع شیخ)، نئی نسل کیلئے پاکستان کی اہمیت( رشید اختر)، تشکیل پاکستان کے بنیادی مقاصد( بیرسڑسلیم قریشی)، علامہ اقبال اور ذکر کشمیر ( شاہد اقبال)، اسلام میں حج اور عید قربان کی اہمیت( عبدالرئوف قاضی) اور قیام پاکستان کے لئے عورتوں کا کردار( شگفتہ نسرین) نے مختلف عنوانات کے مطابق اپنے اپنے گراں قدر خیالات کا اظہار کیا،جسکو سامعین نے بڑے انہماق سے سنا ۔وقت کی قلت کی بنا پر نیو ہام کے سابق میئر عبدالکریم شیخ اور لند ن کے معروف سماجی کارکن طارق ڈار اور برطانیہ کی ایک اہم سماجی شخصیت ڈاکٹر زیڈ یو خان اور مقامی کونسلر لیلیٰ بٹ کو اپنے اپنے خیالات کے اظہار کا موقع نہ مل سکا۔ آخر میں صدر محفل یعنی لندن بارو آف بارکنگ اینڈڈیگنھم کے میئر عبد ل غفور عزیز نے اپنی تقریر میں جشن آزادی پاکستان کی ہمہ گیر اہمیت اور یہاں کی سو سائٹی میں سماجی یک جہتی ، باہمی اتحاد اور امن وامان کی اہمیت سے متعلق اپنے خیالات کا اظہار کیا۔ انکی تقریر سے پہلے مقامی لیڈر آف کونسل ڈیرن راڈویل نے پاکستانیوں کو مبارکباد دی اور پاکستانی ضمن میں اپنے خیالات پر روشنی ڈالی۔مجلس اقبال کے جائنٹ سیکرٹری سلیم رضا نے علامہ اقبال کی ایک مشہو ر نظم 'خضر راہ' کے ایک بند کی تشریح کی۔ سلمان مسعود نے اپنے مخصوص انداز میں اقبال مرحوم کی ایک نظم سنائی۔جسکے ابتدائی شعر یہ ہیں: وہی میری بد نصیبی ،وہی تیری بے نیازی میر ے کام کچھ نہ آیا،یہ کمال بے نوازی ۔ لندن کے نیک نام اور مشہو ر گلوکارہ نعیم سلہر نے ایک نظم پیش کی تیری بارگاہ میں میرے خدا میری روز و شب ہے یہی دعا تو رحم ہے تو کریم ہے مجھے مشکلوں سے نکال دے۔ اقبال ایک منجھے ہوئے اور معروف شاعر ہیں۔انہوں نے کہا اپنے مخصوص ترنم کے ساتھ دو نغمے سنائے، بڑھے چلو بڑگے چلو اے ساتھیو اے قائد اعظم تیرا احسان ہے احسان اس پروگرام کا دوسرا حصہ مشاعرہ پر مبنی تھا ۔اس خوبصورت مشاعرے میں حصہ لینے والے حضرات اور ایک خاتون نے اپنے اشعار سنا کر محفل میں جوش و خروش پیدا کر دیا ۔ سامعین نے جی بھر کے محبوب احمد محبوب، ڈاکٹر رحیم اللہ شاد ،ڈاکٹر جمال سوری،فیاض عادل فاروقی،زاہد اسلم، اسلم رشید اور عابدہ شیخ داد دی ۔ امجد مرزا امجد نے اس موقع پر ایک مختصر مقالہ پیش کیا جس میںانہوں نے پاکستان کے سابقہ اور موجودہ حالت پر نظر ڈالی ، اور اسکی سلامتی کے لیئے دعا کی عابدہ شیخ نے بطور تشکر گلدستہ پیش کیا اور امجد مرزا کو بھی ایک تحفہ دیا۔ اختتام میں بارکنگ پارک ہوٹل کے مالک ریاض بھٹی نے سب شرکا کا شکریہ ادا کیا۔ اور حاضرین کو پرتکلف کھانا پیش کیا۔ انہوں نے مجلس اقبال کے ایک اہم رکن ظہیر شاہ کی تندرستی کی دعا کی ، جو مہمانوں کی خاطر تواضع میں دل کھول کر خرچ کرتے ہیں۔ آمین۔ پروگرام


اس خبر کے بارے میں اپنی رائے دیجئے
پسند آئی
 
ٹھیک ہے
 
کوئی رائے نہیں
 
پسند ںہیں آئی
 


 سب سے زیادہ پڑھی جانے والی مقبول خبریں





  اوصاف سپیشل

آج کا مکمل اخبار پڑھیں

  قائد اعظم محمد علی جناح  
  اسکندر مرزا  
  لیاقت علی خان  
  ایوب خان  
آج کا مکمل اخبار پڑھیں

کار ٹونز


یورپ

کالم /بلاگ


     
     
تمام اشاعت کے جملہ حقوق بحق ادارہ روزنامہ اوصاف محفوظ ہیں۔
Copyright © 2016 Daily Ausaf. All Rights Reserved