پاکستان میں عدالتی فیصلوں پرعملدرآمدنہیں ہوتا،حافظ ادریس
  30  اگست‬‮  2017     |     یورپ

برمنگھم(پ ر) پاکستان رابطہ کونسل کے جنرل سیکریٹری حافظ محمد ادریس نے کہا ہے کہ سپریم کورٹ نے نیب پر عدم اعتماد کا اظہارکیا ہے یہ ادارہ خود کرپشن میں ملوث ہے اپنی پسند کی بنیاد پر فیصلے کیے جاتے ہیں مجرموں کے خلف کیس کو کمزور کر کے پیش کیا جاتا ہے یہی وجہ ہے کہ ابھی تک اس ادارے نے کسی مجرم کو کوئی سزا نہیں دی آصف علی زرداری کا فیصلہ بھی ادارے کی کرپشن کی وجہ سے کسی تحقیقات کیے بغیر سنایا گیا ہے زرداری جیسے بدنام زمانہ کرپٹ شخص کو بری کرنا قیامت کی نشانیاں ہیں ان کی کرپشن کی داستانیں تو بڑی پرانی ہیں مسٹر ٹین پرسنٹ اور سرے محل سے شروع ہوتی ہیں وآیان علی اور ڈاکٹر عاصم کی داستانیں بڑی تازہ ہیں اور سپریم کورٹ نے ادارے کے بارے میں تشویش کا اظہار کی ہے تو پھر اس ادارے کی کوئی ضرورت نہیں ہے۔ انہوں نے کہا کہ پانامہ کیس میں سپریم کورٹ کا فیصلہ اور نا اہل وزیر اعظم میاں نواز شریف کو بھی نیب میں ریفرنس کیا گیا میاں نواز شریف نے نیب کے سامنے پیش ہونے سے انکار کر دیا ہے کوئی کاروائی نہیں ہوئی میاں نواز شریف ملک چھوڑ رہے ہیں نیب انہوں نے آصف زرداری کے ساتھ مل کر مک مکا کر کے بنائی ہے اور چیئرمین انہوں نے خود تعینات کیا ایسا چیئرمین کسی کرپٹ کو کیا سزا دے گا اور نواز شریف پر مقدمات ہونے کے باوجود انہیں لندن آنے کی اجازت کون دے رہا ہے اس سے پہلے پرویز مشرف کو بھی علاج کے بہانے ملک سے فرار ہونے کی اجازت دی گئی تھی جو ابھی تک واپس نہیں گئے۔ حافظ ادریس نے کہا کہ پاکستان میں عدالتوں میں فیصلوں پر بھی عمل درآمد نہیں ہوتا کل بھوشن کو فوجی عدالت نے پھانسی کی سزا دی تھی کتنے ماہ ہوگئے ہیں ابھی تک عمل درآمد نہیں ہو امیاں نواز شریف کو نا اہل قرار دیا گیا اور کیس نیب کے حوالے کر دیا گیا اور اب نیب پر عدم اعتماد کا اظہار کیا جارہا ہے آخر اس ملک میں کوئی ہے جو کسی کو سزا بھی دے سکتا ہے یا پھر ستر سال کے بعد بھی اس ملک پر کرپٹ اور دہشت گرد مسلط رہیں گے اور کوئی انصاف نہیں ہوگا۔


اس خبر کے بارے میں اپنی رائے دیجئے
پسند آئی
 
ٹھیک ہے
 
کوئی رائے نہیں
 
پسند ںہیں آئی
 


 سب سے زیادہ پڑھی جانے والی مقبول خبریں





  اوصاف سپیشل

آج کا مکمل اخبار پڑھیں

  قائد اعظم محمد علی جناح  
  اسکندر مرزا  
  لیاقت علی خان  
  ایوب خان  
آج کا مکمل اخبار پڑھیں

کار ٹونز


یورپ

کالم /بلاگ


     
     
تمام اشاعت کے جملہ حقوق بحق ادارہ روزنامہ اوصاف محفوظ ہیں۔
Copyright © 2016 Daily Ausaf. All Rights Reserved