روہنگیامسلمانوں کاقتل عام عالم اسلام کیلئے لمحہ فکریہ ہے،شیخ احمددباخ
  4  ستمبر‬‮  2017     |     یورپ

اولڈھم(محمد فیاض بشیر) ایک عورت کو تعلیم کے زیور سے آراستہ کرنا دینی و دنیاوی علوم عبور حاصل کرنے کا مطلب آنے والی نسلوں کی تعلیم و تربیت ہے اور ہمارے مذہب اسلام میں عورت کے مقام اور کردار کی اہمیت کو بنیادی حیثیت حاصل ہے۔ ماں بچے کی پہلی درسگاہ ہوتی ہے اسی سوچ و فکر کے جذبہ کو مدنظر رکھتے ہوئے جامعہ محمدیہ کی بنیاد رکھی گئی تاکہ وہاں پر صرف بچیوں اور خواتین کو تعلیم دیکر ایک بہترین معاشرے کی بنیاد رکھی جائے تاکہ اس وجہ سے معاشرتی برائیوں سے بھی بچا جاسکے۔ اسلام ایک مکمل ضابطہ حیات ہے ہمارے پیغمبران نے بھی ہمیں یہی درس دیا ہے کہ دوسرے مذاہب کی عزت و احترام لازم ہے انسانیت کی خدمت ہی دراصل جذبہ ایمانی ہے یہ باتیں شیخ احمد دباخ نے جامعہ محمدیہ کی سالانہ تقسیم اسناد کے موقع پر ایسٹرن پویلین ہال اولڈھم میں حاضرین سے خطاب کرتے ہوئے کیں۔ انہوں نے مزید کہا ہمیں حضرت محمد ۖ کے بتائے ہوئے احکامات پر عمل کرتے ہوئے دوسروں کے ساتھ اچھا برتاؤ کرنے کے ساتھ ایسا سلوک کرنا چاہئے جس سے انہیں نقصان نہ پہنچے۔ ایک دوسرے کے ساتھ باہمی روابط کو فروغ دیتے ہوئے مثبت طرز عمل کو اپنانا چاہئے دل، دماغ اور آنکھوں سے دوسرے کو فائدہ پہنچانا چاہئے۔ انسانی طرز عمل سے ہی بہترین معاشرے کا وجود عمل میں آتا ہے۔ برما روہنگیا میں مسلمانوں پر ڈھائے جانے والے جانوروں سے بھی بدتر مظالم جس طرح انکو جلایا اور سرعام زبح کیا جارہا ہے عالم اقوام کے ساتھ ساتھ عالم اسلام کے لئے بھی لمحہ فکریہ ہے اس پر سرد مہری مجرمانہ فعل ہے جو یہ سب کچھ دیکھ کر بھی صدائے احتجاج بلند نہ کرے اس جہاں اور دوسرے جہاں میں بھی اس سے سخت پوچھ گچھ ہوگی ہم سب کا اولین فرض ہے کہ اس بارے کردار ادا کرنے کے لئے تمام تر وسائل کو بروئے کار لائیں انہوں نے دین اسلام کی صحیح تعلیمات اور انسانیت کی خدمت پر زور دیتے ہوئے کہا کہ ہماری بقاء اور تسکین اسی میں پنہاں ہے۔ فادر فل سمنر جو کہ اولڈھم بین المذاہب فورم کے رکن ہیں انہوں نے کہا کہ برطانیہ بھر میں بسنے والے مسلمان امن پسند اور انسان دوست ہیں کمیونٹی کی خدمت میں ہمیشہ پیش پیش ہوتے ہیں اور دوسری کمیونیٹیز اور مذاہب کے ساتھ انکا رابطہ گہرا ہے اسلام کی غلط تصویر کشی کسی صورت قابل قبول نہیں۔ برما میں مسلمانوں پر ہونے والے مظالم قابل مذمت ہیں بدقسمتی سے اس بارے حکومت نے بھی ابھی تک کچھ نہیں کیا پارلیمنٹ میں اس بارے وہ ضرور آواز اٹھائیں گے جامعہ محمدیہ نے جو یہ کام شروع کیا ہے قابل ستائش ہے عوام کی خدمت کے لئے وہ ہمہ تن موجود ہیں اور بلاتفریق سب کے کام کرنے کا جذبہ رکھتے ہیں۔ اس تقریب کی نظامت مفتی حلال نے سرانجام دی۔ تلاوت کلام پاک و نعت کا شرف روجہ کو نصیب ہوا۔ جامعہ محمدیہ کے معلم شفیق، اولڈھم کونسل چیئرمین لوکل چلڈرن شیف گاڈنگ، نہری گِلر، کونسلر زاہد چوہان طاہرہ، پروفیسر ران گریوز نے بھی خطاب کیا۔ جامعہ محمدیہ برطانیہ بھر کے مختلف شہروں کے سنٹرز سے تعلیم حاصل کرنے والی طالبات کو اسناد بھی دی گئیں۔ اس تقریب میں طالبات کے والدین کے علاوہ خواتین و مرد حضرات نے بھرپور شرکت کی۔ مقامی رکن راجہ ظفر اور دیگر انتظامیہ کے اراکین نے مہمانان گرامی، حاضرین کا شکریہ ادا کرتے ہوئے طالبات کو مبارکباد دی۔


اس خبر کے بارے میں اپنی رائے دیجئے
پسند آئی
50%
ٹھیک ہے
50%
کوئی رائے نہیں
 
پسند ںہیں آئی
 


 سب سے زیادہ پڑھی جانے والی مقبول خبریں






آج کا مکمل اخبار پڑھیں

کار ٹونز


یورپ

کالم /بلاگ


     
     
تمام اشاعت کے جملہ حقوق بحق ادارہ روزنامہ اوصاف محفوظ ہیں۔
Copyright © 2016 Daily Ausaf. All Rights Reserved