جماعت اہل سنت کا جمعہ کوبرمی مسلمانوں کے ساتھ اظہاریکجہتی کااعلان
  5  ستمبر‬‮  2017     |     یورپ

برمنگھم (اوصاف نیوز) برما میں بے گناہ مسلمانوں کے قتل عام پر عالمی امن کے ٹھیکیداروں اور عالمی انسانی حقوق کے علمبرداروں کو چپ کا روزہ توڑنا ہوگا۔ انسانیت سوز مظالم پر اقوام متحدہ اور او آئی سی اسلامک ممالک کی تنظیم کا کردار مایوس کن ہے۔ جماعت اہلسنت برطانیہ نے عالمی برادری سے ایک ہنگامی اجلاس منعقدہ قادریہ ٹرسٹ برمنگھم زیر سرپرستی مفتی گل رحمن قادری عالمی برادری سے مطالبہ کرتا ہے کہ یو این او کے سابق جنرل سیکرٹری کوفی عنان کی تجویز کے مطابق برمی مسلمانوں کو رنگ و نسل' مذہب کی تفریق کئے بغیر بحیثیت انسانیت قتل و غارت سے روکا جائے۔ انہیں جان و مال کا تحفظ مہیا کرنا عالمی طاقتوں کی ذمہ داری ہے۔ برمیم مسلمانوں کو وہاں کا شہری تسلیم کرکے بنیادی انسانی حقوق دیئے جائیں۔ جماعت اہل سنت آئندہ جمعہ کو برطانیہ بھر میں برمی مسلمانوں کے ساتھ اظہار یکجہتی اور مظالم پر اظہار مذمتی جمعہ منائے گا۔ اس وقت تک احتجاج کا سلسلہ جاری رہے گا جب تک روہنگیا مسلمانوں پر مظالم بند نہیں ہوجاتے۔ ان خیالات کا اظہار جماعت اہل سنت برطانیہ کے ایک اہم اور ہنگامی اجلاس میں زیر سرپرستی مفتی برطانیہ مفتی گل رحمن قادری منعقد ہوا۔جامع مسجد قادریہ ٹرسٹ میں ہونے والے اجلاس میں زیر سرپرستی مفتی گل رحمن قادری، مفتی یار محمد جماعت اہل سنت شرعی کونسل کے سربراہ ترجمان علامہ غلام ربانی و قائم مقام امیر پیر محمد طیب الرحمن قادری، علامہ مصباح المالک لقمانوی ناظم اعلی، حافظ فاروق چشتی، علامہ محمد اسلم شیخ، علامہ شاہجہاں مدنی، علامہ سید تنویر حسین شاہ، حافظ سعید مکی سیکرٹری مالیات، علامہ حسینی، قاری شعیب چشتی، علامہ ضیا الاسلام ہزاروی، سینئر کونسلر محمد افضل، نائب حسن مغل، حافظ محمد ناصر خان صدیقی، حافظ عبدالرئوف خان، قاری بشارت ضیائی، قاری سلطان محمد حاجی عبدالمجید، محمد شاہین سلطانی، حاجی محمدعلی، سینٹرل مسجد ایڈمنسٹریٹر سمیت سیاسی، سماجی رہنمائوں نے شرکت کی۔ پیر ظہیر الدین صدیقی، امام حسنین رضا، مفتی گل رحمن قادری نے کہا کہ آئندہ آنے والا جمعہ برما کے مسلمانوں کے ساتھ اظہار یکجہتی کے طور پر اور مظالم کے خلاف اظہار مذمت کے طور پر جماعت اہل سنت برطانیہ بھر میں منانے کا اعلان کرتی ہے۔ترجمان علامہ غلام ربانی افغانی نے کہا کہ برما کے مسلمانوں کے ساتھ اظہار یکجہتی کرتے ہوئے برطانیہ بھر میں تمام پلیٹ فورمز سمیت عالمی ضمیر کو جھنجوڑنے کے لیے جدوجہد کرتے ہوئے برما میں نسل کشی کو بند کروانے کے لیے کردار ادا کریں۔ OICایکشن لیتے ہوئے مظالم بند کروائیں۔ ابھی تک آرگنائزیشن آف اسلامک ممالک کا ہنگامی اجلاس طلب کرکے مظالم بند کروانے چاہیے تھے اور بنگلہ دیش کو اپنے بارڈرز انسانی ہمدردی کے تحت کھول دینے چاہئیں اور تمام اسلامک ممالک مل کر کردار ادا کریں۔ یہ کسی ایک مذہب کا مسئلہ نہیں، بلکہ انسانیت کی بقا کا مسئلہ ہے۔ پیر محمد طیب الرحمن قادری، قائم مقام امیر جماعت اہل سنت نے کہا کہ بہت جلد برطانیہ میں برما ایمبیسی کے سامنے بھرپور احتجاج کرنے کی کال دی جائے گی۔یہ انیشیٹو جماعت اہل سنت برطانیہ نے لیا ہے اور ہماری برطانیہ بھر میں بھرپور نمائندگی ہے اور احتجاج سے عالمی ضمیر جھنجوڑنے میں مدد ملے گی۔ علامہ شاہ جہاں مدنی نے کہا کہ برما، روہنگیا کے مسلمانوں کی نسل کشی بند کی جائے۔ بقائے انسانیت کے تقاضوں کو مدنظر رکھتے ہوئے نہ صرف مظالم بند کروائے جائیں، عالمی قوانین کے مطابق برمی مسلمانوں کو وہاں کی شہریت دے کر بنیادی انسانی حقوق دیے جائیں۔ مفتی یار محمد قادری نے کہا کہ ظلم پر خاموش رہنا بھی ظلم کا ساتھ دینے کے مترادف ہے۔ برمی مسلمانوں کا خون رائیگاں نہیں جائے گا۔ ایک دن ضرور رنگ لائے گا۔ علامہ مصباح المالک لقمانوی نے کہا ہے کہ آج عید کے بعد برطانیہ بھر میں جماعت اہل سنت برمی مسلمانوں کے ساتھ اظہار یکجہتی کرتی ہے۔خوشی کے موقع پر بھی اپنے معصوم اور بے گناہ شہید ہونے والوں کے ساتھ ہے۔ کونسلر چوہدری محمد افضل نے کہا کہ ایک آن لائن پٹیشن سائن کرنے کے لیے موجود ہے۔ کوشش کریں سائن کریں، تاکہ ایک لاکھ سے زیادہ دستخط ہونے سے برطانوی حکومت وہاں پر مظالم بند کروانے کے لیے پابند ہوگی۔ پروگرام کے آخر میں مشترکہ قراردادیں بھی منظور کی گئی اور آخر میں برمی مسلمانوں کے حق میں اور فلسطین، کشمیر کے مسلمانوں کی آزادی کے لیے دعائیں کی گئیں۔ علامہ حنیف حسینی، مفتی عبدالرشید جماعتی کے عزیزوں کی وفات پر دعا مغفرت کی گئی۔


اس خبر کے بارے میں اپنی رائے دیجئے
پسند آئی
 
ٹھیک ہے
 
کوئی رائے نہیں
 
پسند ںہیں آئی
 


 سب سے زیادہ پڑھی جانے والی مقبول خبریں





  اوصاف سپیشل

آج کا مکمل اخبار پڑھیں

آج کا مکمل اخبار پڑھیں

کار ٹونز


یورپ

کالم /بلاگ


     
     
تمام اشاعت کے جملہ حقوق بحق ادارہ روزنامہ اوصاف محفوظ ہیں۔
Copyright © 2016 Daily Ausaf. All Rights Reserved