آئینی حقوق بارے کام مکمل، آزادکشمیر کی قیادت سے دو ٹوک بات کرلی ، پی پی منافقین کی جماعت ہے،وزیر اعلیٰ
  19  مارچ‬‮  2017     |     گلگت بلتستان

گلگت ( روزنامہ اوصاف ) پیپلز پارٹی منافقین کی جماعت ہے ۔ شہید سیف الرحمن ایک مشن کا نام ہے منت سماجت سے امن ممکن نہیں امن اللہ پاک کی بڑی نعمت ہے ۔ اتحادی حکومت نے گلگت بلتستان کا بیڑہ غرق کر دیا ۔ رشوت کے عوض نا اہل اساتذہ بھرتی کئے گئے ہم نے اپنی ترجیحات تعین کر لی ہیں ماضی میں قومی خزانے کو مال غنیمت کیطرح لوٹا گیا انٹر نل سکیورٹی ڈیوٹی کے نام پر 62کروڑ کا ٹیکہ لگایا گیا پولیس کو جدید وسائل سے لیس کرنے کیلئے اقدامات اٹھا رہے ہیں پہلی دفعہ 650بلٹ پروف جیکٹس دئیے ۔ کچھ لوگ اخبارات کے ذریعے شیر بننے کی کوشش کررہے ہیں گلگت کے اخبارات وفاق میں نہیں پڑھے جاتے جی بی کے حقوق بارے آئینی کمیٹی نے کام مکمل کر لیا ہے آزاد کشمیر کی قیادت سے دو ٹوک بات کر لی ہے ۔ مقبوضہ کشمیر کے بھائیوں کے پیٹ میں چھرا نہیں گھونپ سکتے ۔ گلگت بلتستان کی ترقی کیلئے نیا وژن دیا ہے گلگت شہر کو ماڈل بنائینگے ان خیالات کا اظہار وزیر اعلیٰ گلگت بلتستان حافظ حفیظ الرحمن نے شہید امن شہید سیف الرحمن خان کی 14ویں برسی کے جلسے سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ وزیر اعلیٰ گلگت بلتستان حافظ حفیظ الرحمن نے کہا کہ شہید سیف الرحمن ایک مشن اور ایک نظریے کا نام ہے جس نے سینے پر گولی کھا کر علاقے کے امن کو بچا لیا ۔ آج گلگت بلتستان میں جو امن ہے یہ شہید کے خون کے مرہون منت ہے ۔ اللہ پاک کی بڑی نعمت ہے امن ہوگا تو علاقہ ترقی کریگا ۔ زمین پر امن ہوگا تو اللہ پاک خوف اور رزق کی تنگی دور کریگا ہمارے لئے گلگت بلتستان میں امن قائم کرنا ایک بڑا چیلنج تھا ہم نے ذات برادریوں اور مسلک سے نکل کر کام کیا ۔ اللہ پاک نے ہمیں کامیاب کیا۔ ہم نے ترجیحات کا تعین کر لیا ہے قانون کی حکمرانی قائم کرنے کی کوشش کی ہے دو سالوں میں کوئی دہشت گردی کا واقع نہیں ہوا ۔ جسکی وجہ سے گزشتہ سال دس لاکھ سیاح گلگت بلتستان آئے پورے ایشیا میں جی بی امن پسند خطہ قرار دیا گیا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ قیام امن کیلئے قانون کی رٹ بھی ضرورت ہے منت سماجت سے امن قائم نہیں ہوگا ۔ قبل ازیں گلگت بلتستان میں امن کے نام پر 62کروڑ روپے آئی ایس ڈیوٹیوں پر اڑائے گئے ہم نے انٹرنل سکیورٹی گاڑیوں کو ختم کر دیا جو پیسہ بچا تھا ہم نے اسے تعلیم پر خرچ کیا ۔ا نہوں نے کہا کہ شہید سیف الرحمن ایک مشن کا نام تھا جس نے سینے پر گولی کھا کر علاقے کے امن کو بچا لیا ۔ شہید امن کا جلسہ اتحاد بین المسلمین کا مظہر ہے ۔ اللہ پاک نے مسلم لیگ کے کارکنوں کو امن کیلئے چنا ہے دین کے نام پر گلگت میں خون بہایا گیا ۔ انہوں نے کہا کہ مسلم لیگ ن ٹھیکے بانٹنے کا نام نہیں بلکہ ایک تحریک کا نام ہے ۔ جی بی کے عوام نے پہلی دفعہ رنگ نسل ، مذہب مسلک سے بالاتر ہوکر مسلم لیگ کو ووٹ دیا اور بھاری مینڈیٹ دیا میں اپنی مائوں بہنوں اور بیٹیوں کا شکر گزار ہوں جنہوں نے امن کے ایجنڈے کو ووٹ دیا ۔گلگت میں امن قائم کرنا ایک چیلنج تھا اللہ پاک نے سر خرو کر دیا ہم نے مسلک پر برادری سے بالاتر ہوکر کام کیا ۔ وزیر اعلیٰ گلگت بلتستان حافظ حفیظ الرحمن نے کہا کہ ماضی میں تعلیم کو کاروبار بنایا گیا ہم نے این ٹی ایس کے میرٹ کو بحال کیا قابل اور ہونہار اساتذہ بھرتی کئے ریگولر بجٹ سے پرائمری سے میٹرک تک طلبہ و طالبات کو مفت کتابیں فراہم کیں جبکہ پاکستان کے کسی دوسرے صوبے میں ایسا نہیں ۔ صحت کے شعبے میں انقلابی اقدامات اٹھائے ۔ ڈاکٹروں کو سپیشل پیکج دیا ہم نے اقتدار سنبھالا تو 140ڈاکٹرز تھے اب اللہ کے فضل سے 420ڈاکٹرز جی بی میں خدمات سر انجام دے رہے ہیں گزشتہ پانچ سالوں میں ایک بھی پوسٹ پبلک سروس کمیشن نہیں بھیجی گئی ہم نے گیارہ سو نئے آفیسران کو سرکار میں شامل کئے 70فیصد سے زائد وعدوں پر عمل درآمد کرایا ہے ۔ چار نئے اضلاع بنائے اور انہیں فعال کیا ۔ گلگت میں ویسٹ منیجمنٹ کمپنی بنائی کسی دور میں گلگت شہر کچرے کا ڈھیر ہوتا تھا گلگت شہر صوبے کا چہرہ ہے اسے ایک ماڈل سٹی بنائینگے ۔ وزیر اعلیٰ نے کہا کہ کچھ لوگ زمینوں کے نام پر عوام کے جذبات سے کھیل رہے ہیں ان کے اپنے چہیتوں میں زمین کا الاٹ منٹ کے کاغذات موجود نہیں بھٹو کے نعرے فروخت کر دے ۔ بینظیر کے قاتلوں کو بھول کر پانچ سال ملک کو لوٹتے رہے ۔ مسلم لیگ ن کسی ملک یا فرقے کی جماعت نہیں ہم ایک وژن کے تحت کام کررہے ہیں جی بی کو معاشی سطح پر مضبوط کرنے کیلئے 72ہزار مربع کلو میٹر علاقے میں دو فیصد زمین قابل کاشت نہیں ہے کسی نے بنجر زمین کو آباد کرنے کی فکر نہیں کی ۔ 13ارب کی لاگت سے آئندہ پان چسالوں میں آٹھ لاکھ کنال لزمین آباد کرکے عوام کو دینگے ۔ زمینوں کے نام پر لاشیں گرانے کی سیاست کرنے والے اللہ کا خوف کریں کسی کو علاقے میں زن ، زر اور زمین کے نام پر فساد پھیلانے نہیں دینگے ۔ وزیر اعلیٰ نے کہا کہ انیس ہزار کنال زمین کو آباد کرنے کا منصوبہ تیار ہے ۔ تمام اضلاع کے لئے آباد زمینوں کو آباد کرینگے ۔ جی بی میں آج تک لینڈ ریفارمز نہیں کیا گیا ہم لینڈ ریفارمز کمیشن بنا رہے ہیں جو خالصہ سرکار زمینوں کی نشاندہی کریگی ہم شہید سیف الرحمن کے مشن کو نہیں بھولیں گے ۔ انہوں نے کہا کہ150ارب روپے کے منصوبے وفاقی منصوبوں میں شامل ہو چکے ہیں ۔ ہینزل پاور منصوبہ ٹینڈر کے سٹیج پر پہنچ چکا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ گلگت حساس ترین علاقہ ہے جہاں تمام مسالک کے لوگ رہتے ہیں جو اپنی لڑائیاں یہاں آکر لڑتے ہیں گلگت ترقی کریگا تو پورا شہر ترقی کریگا ۔ گلگت صوبے کا دل ہے ۔ وزیر اعلیٰ نے کہا کہ پولیس میں بہتری لانے کیلئے اقدامات اٹھا رہے ہیں 650بلٹ پروف جیکٹ دئیے ہیں ۔ دوران سروس فوت ہونے والے فورس کے ورثاء کو ریگولر ملازمت دی ۔ پولیس پر ایک ارب روپے خرچ کئے ہیں پولیس کو اس قابل بنایا ہے کہ وہ عوام کا تحفظ کر سکیں پاکستان میں 3سیف سٹی پراجیکٹ ہے ان میں ایک گلگت شہر بھی ہے ۔ بعض لوگ اخبارات میں بیانات دیکر شیر بننا چاہتے ہیں حالانکہ گلگت کے اخبارات وفاق میں نہیں پڑھے جاتے ۔ انہوں نے کہا کہ گورننس آرڈر میثا ق جنہوریت کا مرہون منت ہے ۔ آئینی حقوق کے حوالے سے وزیر اعلیٰ نے کہا کہ سرتاج عزیز کی سربراہی میں آئینی کمیٹی کے لوگوں نے صوبے کے نام پر ووٹ لئے ہیں ہم منافقت نہیں کرنا چاہتے ہیں ۔ قوم کو گمراہ نہیں کرینگے عوام کا سر جھکنے نہیں دینگے ۔ کمیٹی نے اپنا کام مکمل کر لیا ہے آزاد کشمیر کی قیادت سے دو ٹوک بات کی ہے مقبوضہ کشمیر کے بھائیوںپر چھرا گھونپنا نہیں دینگے ۔ وفاق کو مصیبت میں ڈال کر اپنی دکانداری نہیں چلا سکتے ۔ جی بی کے تعمیر و ترقی کیلئے نیا وثژن دیا ہے ۔ گلگت ٹائون کو ماڈل بنا رہے ہیں آئندہ 6-7ماہ میں پائپ لائنوں کے ذریعے عوام کو گیس فراہم رینگے ۔ اس موقع پر ڈپٹی سپیکر جعفر اللہ خان وزیر تعمیرات ڈاکٹر اقبال ، ممبر جی بی کونسل اشرف صدا ، پارلیمانی سیکریٹری اورنگزیب ایڈووکیٹ ، سینئر نائب صدر شفیق الدین ، مسلم لیگ لائرز ونگ ے منظور ایڈووکیٹ ، علماء ونگ کے صوبائی صدر مولانا نادر اشرفی ،جنرل سیکریٹری شیخ غفار ، ایم ایس ایف کے ضلعی صدر نوید اکبر ، لیبر ونگ کے صدر سلامت جان ، پارلیمانی سیکریٹری برکت جمیل اور دیگر نے بھی خطاب کیا۔ دوران جلسہ شعرائے کرام عبدالحفیظ شاکر ، جمشید خان دکھی ، حبیب الرحمن مشتاق اور دیگر شعراء نے شہید سیف الرحمن ی عقیدت میں لکھے گئے نظم پڑھ لئے ۔ قاری عبدالرحیم کی تلاوت کلام پاک سے جلسے کا آغاز کر دیا گیا جلسے کے آخر میں وزیر اعلیٰ نے شہید سیف الرحمن کے بلند درجات کیلئے فاتحہ خوانی کرائی


اس خبر کے بارے میں اپنی رائے دیجئے
پسند آئی
100%
ٹھیک ہے
 
کوئی رائے نہیں
 
پسند ںہیں آئی
 
رپورٹر   :  


 سب سے زیادہ پڑھی جانے والی مقبول خبریں





  اوصاف سپیشل

آج کا مکمل اخبار پڑھیں

  قائد اعظم محمد علی جناح  
  اسکندر مرزا  
  لیاقت علی خان  
  ایوب خان  
آج کا مکمل اخبار پڑھیں

کار ٹونز

گلگت بلتستان

کالم /بلاگ


     
     
تمام اشاعت کے جملہ حقوق بحق ادارہ روزنامہ اوصاف محفوظ ہیں۔
Copyright © 2016 Daily Ausaf. All Rights Reserved