غذر، بجلی نہ پانی، غذر کے بالائی علاقہ تھوئی کے عوام تمام بنیادی سہولیات سے محروم
  17  اپریل‬‮  2017     |     گلگت بلتستان

غذر (ڈی ڈی شیر) غذرکے بالائی علاقے تھوئی کے عوام ایک طرف بنیادی صحت کی سہولتوں سے مرحوم ہیں تو دوسری طرف غذر کے بالائی علاقے تھوئی میں بجلی کی طویل ترین لوڈ شیڈنگ نے علاقے کے عوام کو سخت پریشان کرکے رکھ دیا ہے تھوئی میں تعمیر کیا جانے والا بجلی کا منصوبہ تاحال التوا کا شکار ہے 2014جون میں اس اہم منصوبے سے بجلی کی فراہمی کے وعدے کرنیوالے اب بھی خاموش ہیں ہزاروں آبادی والے تھوئی کا علاقہ کے متعدد گائوں اس جدید دور میں بھی مختلف مسائل کا شکار ایک طرف عوام بجلی کی طویل ترین لوڈ شیڈنگ کے عذاب میں مبتلا ہے تو دوسر ی طرف آمدورفت کے سلسلے میں بھی یہاں کے عوام کو سخت پریشانی کا سامنا ہے رابطہ سڑکیں اور رابطہ پل آثار قدمہ کا منظر پیش کررہے ہیں اور بعض دیہاتوں کے عوام پینے کے صاف پانی کے حصول بھی ایک خواب بن کر رہ گیاہے تھوئی پاور پراجیکٹ کی تعمیر کا کام شروع ہوئے کئی سال گزر گئے ہیں مگر یہ منصوبہ بھی مکمل ہونے کا نام نہیں لیتا اس منصوبے نے دو سال قبل مکمل ہونا تھا مگر محکمہ برقیات کے حکام کی نااہلی کی وجہ سے اس منصوبے کو مکمل ہونے میں مزید کئی سال لگ سکتے ہیں اور اس منصوبے کی لاگت سے دوگنی رقم خرچ ہوچکی ہے اس کے باوجود یہ منصوبہ مکمل نہ ہونے سے عوام بجلی کی طویل ترین لوڈ شیڈنگ میں مبتلا ہے دوسری طرف بعض علاقوں میں صحت کے بنیادی سہولتیں دستیاب نہ ہونے کی وجہ لوگ معمولی مریض کو بھی تھوئی ہسپتال لاتے ہیں جبکہ بعض دیہاتوں کے عوام کو اب تک صاف پانی تک دستیاب نہیںعلاقے کے مکینوں افضل امان ،علی مدد ،محمد ولی ،جہانگیر خان ،محمدخان نے میڈیا سے باتیں کرتے ہوئے کیا انھوں نے کہا کہ دور دراز کا علاقہ ہونے کی وجہ سے اس علاقے کو مکمل طور پر نظر انداز کیا گیا ہے یہاں کی رابطہ پل مرمت نہ ہونے کی وجہ سے اثار قدیمہ کا منظر پیش کر رہے ہیںاور کسی بھی وقت ان رابطہ پل کے ٹوٹ جانے کا قوی امکان ہیں جس سے جانی و مالی نقصان بھی ہوسکتا ہے جبکہ رابطہ سٹرکوں کی دیکھ بال نہ ہونے سے ان سڑکوں پر گاڑیاں گزارنا ایک عذاب سے کم نہیں ہے اس حوالے سے محکمہ تعمیرات کے حکام سے اپیل ہے کہ وہ رابطہ سڑکوں اور جیپ ایبل پل کی فوری مرمت کرائی اس کے علاوہ یہاں کے بعض علاقوں کے عوام اب بھی ندی نالوں کا گندہ پانی پینے پر مجبورہیں اور مختلف پیٹ کی بیماریوں میں مبتلا ہیں ہمارا مطالبہ ہے کہ ان علاقوں میں واٹر سپلائی کا کام جلد شروع کیا جائے2014 میں محکمہ برقیات نے تھوئی بجلی گھر سے بجلی کی فراہمی کا اعلان کیا تھا جو سراسر جھوٹ کے علاوہ کچھ نہیں اس اہم منصوبے کی تعمیر مکمل نہ ہونے کی وجہ سے عوام بجلی کی طویل ترین لوڈ شیڈنگ میں مبتلا ہے یہ اہم منصوبہ کئی سال قبل مکمل ہو نا تھا مگر نامعلوم وجوہات کی بنا پر التوا کا شکار ہے بعض افراد کی طرف سے اس منصوبے کو رواں ماہ نومبر میں بجلی کی فراہمی کے وعدے کئے تھے اگر کام کی یہ رفتار رہی تو اس منصوبے کو مکمل ہونے میں مزید کئی سال لگ سکتے ہیںاس حوالے سے علاقے کا ممبر قانون ساز اسمبلی کے وعدے بھی صرف واعدوں کی حد تک محدود ہوکر رہ گئے ہیں


اس خبر کے بارے میں اپنی رائے دیجئے
پسند آئی
 
ٹھیک ہے
 
کوئی رائے نہیں
 
پسند ںہیں آئی
 
رپورٹر   :  


 سب سے زیادہ پڑھی جانے والی مقبول خبریں






آج کا مکمل اخبار پڑھیں

کار ٹونز

گلگت بلتستان

کالم /بلاگ


     
     
تمام اشاعت کے جملہ حقوق بحق ادارہ روزنامہ اوصاف محفوظ ہیں۔
Copyright © 2016 Daily Ausaf. All Rights Reserved