گلگت، آئندہ ایک ہفتے کے اند ر گلگت شہر میں بجلی کی لوڈشیڈنگ ختم کی جائیگی، قائمہ کمیٹی واٹر اینڈ پاور
  17  اپریل‬‮  2017     |     گلگت بلتستان
گلگت(اوصاف نیوز) محکمہ واٹر اینڈ پاور نے اسمبلی کی قائمہ کمیٹی کو بریفنگ دیتے ہوئے کہا ہے کہ آئندہ ایک ہفتے کے اند ر گلگت شہر میںبجلی کی لوڈشیڈنگ ختم کی جائیگی۔گزشتہ روز سے نالوں میں پانی بڑھنا شروع ہوا ہے اگر سیلابی صورتحال کا سامنا نہ ہوا توگرمیوں میںبجلی کی لوڈشیڈنگ نہیں ہوگی۔ہنزہ میں بجلی کا بڑا مسئلہ ہے،مسگر 3میگاواٹ،حسن آباد 2 میگاواٹ اور میون 1.5 میگاواٹ پر کام مکمل ہوگا توہنزہ کی عوام کو بجلی کے حوالے سے کافی ریلیف ملے گاتب تک ڈیزل انجن کے ذریعے ذیادہ سے ذیادہ بجلی فراہم کرنے کی کوشش کرینگے۔محکمہ برقیات نے سفارش کی ہے کہ عطاء آباد پاور پروجیکٹ کو فیڈرل پی ایس ڈی پی میں اس سال شامل کرانے کے لیے سیاسی قیادت وفاق میں اپنا اثررسوخ استعمال کرے۔ قائمہ کمیٹی برائے محکمہ واٹر اینڈ پاور،ورکس اور پلاننگ کا اجلاس گزشتہ روز ممبر اسمبلی رانی عتیقہ غضنفر کی صدارت میں گزشتہ روز اسمبلی کے کانفرنس ھال میں منعقد ہوا۔اجلاس میں کمیٹی کے ممبران ،ڈپٹی سپیکر جعفراللہ خان ،ممبر اسمبلی راجہ جہانزیب ، محکمہ واٹر اینڈ پاور،ورکس اور پلاننگ کے ذمہ داروں نے بھی شرکت کیا۔اس موقع پر قائمہ کمیٹی نے کہا کہ محکمے اپنی کارکردگی کو بہتر سے بہتر بنائیں اور شکایت کا موقع نہ دیں تمام محکمے آپس میں بہتر ورکنگ ریلیشن شب قائم کرتے ہوئے عوام کو درپیش مسائل کے خاتمے کے لیے کام کریں اور علاقے کوترقی کی راہ پر گامزن کرے۔کمیٹی نے ہدایت کی ہے کہ محکمے جون سے قبل اسمبلی ممبران کی ترقیاتی سکیموں کے ٹینڈر کو یقینی بنائیں اور ترقیاتی بجٹ کو استعمال میں لائے تاکہ علاقے کو درپیش مسائل میں کمی لائی جا سکے۔اس موقع پر محکمہ ورکس اورپلاننگ کی جانب سے بھی کمیٹی کو بریفگ دی گئی۔کمیٹی نے محکمہ پلاننگ کی کارکردگی کو سراہا اور محکمہ ورکس کو ہدایت کی ہے کہ وہ ترقیاتی سکیموں پر عمل درآمد کی رفتار کو مزید تیز کرے تاکہ ترقیاتی بجٹ کو جون سے قبل استعما ل میں لاکر اگلے مالی سال کے لیے وفاق سے ترقیاتی بجٹ میں اضافہ کرواسکے۔اجلاس میں فیصلہ کیا گیا ہے کہ مئی کے پہلے ہفتے میں کمیٹی کا اجلاس دوبارہ طلب کرکے تمام محکموں سے ان کارکردگی کے حوالے سے تفصیلی رپورٹ مانگی جائیگی تاکہ علاقے میں ترقیاتی عمل ہنزہ (ذوالفقار بیگ ) ایک ہفتے کے اندر ہائیڈرل جرنیٹر چائینہ سے ہنزہ پہنچے گا ۔ایگزیکٹیو انجینئر برقیات ۔۔جرنیٹر ہنزہ پہنچنے کے بعد جلد نصب کیا جائے گا تاکہ ہنزہ میں بجلی کی لوڈشیڈنگ میں مدد گار ثابت ہوسکیں ۔ مایون شناکی پاور منصوبے سے آئندہ سال جون تک بجلی کی فراہمی یقینی بنایا جائے گا ۔ہنزہ میں لوڈ شیڈنگ پر قابو پانے کیلئے ایک میگاواٹ تھرمل جرنیٹر کی منظوری مل چکی ہے جلد نصب کرکے فعال کیا جائے گا ۔ ان خیالات کا اظہار ایگزیکٹو انجینئر واٹراینڈ پاور شیر عباس نے اوصاف کو دی گئی خصوصی انٹرویو میں کیا ۔ اُنہوں نے کہاکہ مسگر پاور پروجیکٹ منصوبے کا ایک یونٹ یعنی 1میگاواٹ رواں سال کے مئی میں چلانے کا پلان ہے ۔ عطاآباد جھیل پر بننے والی پاور پروجیکٹ کا فزیبلٹی رپورٹ سب میٹ کیا گیا ہے ۔ ایگزیکٹیو انجینئر برقیات نے مزید کہاکہ حسن آباد 2میگاواٹ پر کام تیزی سے جاری ہے ہم اس کی نگرانی کررہے ہیں انشاء اللہ یہ پاور پروجیکٹ بھی اگلے سال جون تک فعال ہوگا ۔ مسگر پاور منصوبے کے حوالے سے ایک سوال کے جواب میں ایگزیکٹو انجینئر نے کہاکہ مسگر پاور پروجیکٹ سے فی الحال سنٹرل ہنزہ کو بجلی ممکن نہیں ہوگی کیونکہ مسگر پاور پروجیکٹ سے سنٹرل ہنزہ تک ٹرانسمیشن لائن بچھانے کیلئے وقت لگے گا ۔ بجلی کی شاٹ فال کے حوالے سے بات کرتے ہوئے ایگزیکٹیو انجیئر شیر عباس نے کہاکہ اس وقت سنٹرل ہنزہ میں طلب6میگاواٹ ہے جبکہ ہمارے پاس بجلی کی پیداوار تھرمل جرنیٹرملاکر 1.8میگاواٹ ہے ۔ جس کی وجہ سے سنٹرل ہنزہ میں 18گھنٹے کی لوڈ شیڈنگ کی جارہی ہے ۔تھرمل جرنیٹرز کو چلانے کیلئے بجٹ کا مسئلہ ہے ہم نے اس سلسلے میں اپنے حکام بالا اور محکمہ فنائس سے ڈیمانڈ کر لیا ہے ۔ اُنہوں نے کہاکہ احمد آباد میں پرائیویٹ سطح پر پاور پروجیکٹ قائم کیا گیا ہے اس کو سسٹم میں شامل کرنے سے دو گھنٹے اضافی بجلی ملی گی ۔کوجاری وساری رکھ سکے۔

اس خبر کے بارے میں اپنی رائے دیجئے
پسند آئی
 
ٹھیک ہے
 
کوئی رائے نہیں
 
پسند ںہیں آئی
 

رپورٹر   :  


 سب سے زیادہ پڑھی جانے والی مقبول خبریں






آج کا مکمل اخبار پڑھیں

کار ٹونز

گلگت بلتستان

کالم /بلاگ


     
     
تمام اشاعت کے جملہ حقوق بحق ادارہ روزنامہ اوصاف محفوظ ہیں۔
Copyright © 2016 Daily Ausaf. All Rights Reserved