ملز مالکان آٹا سمگلنگ بند کریں ورنہ قانونی کارروائی کروں گا، سیکرٹری خوراک
  11  ستمبر‬‮  2017     |     گلگت بلتستان

گلگت ( محمد ذاکر سے ) سیکرٹری خوراک برہان آفندی نے کہا ہے کہ عوام کی شکایات موصول ہو رہی ہیں کہ گلگت بلتستان کا آٹا دیگر صوبوں کو سمگل ہو رہا ہے ، ہمارے صبر کا مزید امتحان نہ لیا جائے ، ملز مالکان آٹا سمگلنگ سے پرہیز کریں ، ورنہ سمگلروں کیخلاف سخت ایکشن لے کر ملوں کو ہی سیل کرنے پر مجبور ہوجاؤنگا ، سیکریٹری خوراک گلگت بلتستان برہان آفندی نے فلور ملز مالکان کیساتھ ہونیوالے اجلاس میں گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ وفاقی حکومت کی جانب سے دی گئی گندم سبسڈی کا ترسیل جاری ہے ، محکمہ خوراک نے عوام کو با آسانی معیاری آٹا فراہمی یقینی بنانے کیلئے ہر ممکن اقدامات کئے ہیں ، فلور ملز مالکان ایمانداری اور رزق حلال کے ساتھ معیاری آٹا پسائی یقینی بنائیں اور خوراک عملے کیساتھ تعاون کریں ماضی کا دور گزر گیا گندم مافیاز اور آٹا سمگلروں کو پلان کے تحت لگام دیا گیا ہے ۔ اگر گندم یا آٹا سمگلنگ میں محکمہ خوراک عملہ ملوث ہے تو صاف صاف بتائیں بحیثیت سیکریٹری ملوث کیخلاف قانونی کارروائی کرونگا ۔ انہوں نے کہا کہ جب تک وفاقی حکومت خطے کے گندم میں مزید اضافہ نہیں کرتی تب تک ملز مالکان کو دانے دار آٹا پسائی کرنیکی ہر گز اجازت نہیں دے سکتے ہیں ، محکمہ خوراک نے عوام کو با آسانی آٹا فراہمی سمیت آٹا سمگلنگ کی روک تھام کیلئے گلگت کے 480کی تعداد میں ڈیلروں کی تعداد کو بھی کم کرنیکا فیصلہ کیا ہے جن جن میں ایرؤں میں چار چار تھیلوں کے آٹا ڈیلرز موجود ہیں انکی ڈیلر شپ کو بھی ختم کیا جائیگا ڈیلرز اپنے سیل پوائنٹ پر بورڈ نصب کرنے سمیت بورڈ میں 620روپے ریٹ لکھنے کے بھی پابند ہونگے ۔ انہوں نے کہا کہ ماضی میں بعض فندم مافیاز نے آٹا سمگلنگ کے ذریعے محکمہ خوراک کو بھی بدنام کرکے دکھ دیا محکمہ خوراک نے بہترین پالیسی کے بدولت آٹا سمگلروں کے خلاف کریک ڈاؤن کرکے مافیاز کو لگام دیا ہے ،مزید سمگلنگ کی روک تھام کیلئے ایجنسیوں کی مدد لینے کا فیصلہ کیا ہے ، محکمہ خوراک نے 33رکنی کمیٹی کے ذریعے معیاری آٹا پسائی سمیت عوام کو با آسانی اور معیاری آٹا مہیا کرنے کیلئے اقدامات کئے ہیں ، بہترین اقدامات کرکے آٹا سمگلروں کو لگام دینے پر ڈائریکٹر خوراک محمد اکرام اور انکی پوری ٹیم کو خراج تحسین پیش کرتا ہوں ، فلور ملز مالاکان معیاری آٹا پسائی اور سمگلروں کو لگان دینے کیلئے ہمارے ساتھ تعاون کو یقینی بنائیں ۔ اجلاس میں ڈائریکٹر خوراک محمد اکرام نے بریفنگ دیتے ہوئے کہا

کہ فلور ملز مالکان ہیرا پھیری کے ذریعے آٹا سمگل کررہے ہیں جنکے ٹھوس شواہش موجود ہیں دو چار تھلہ آٹا کیلئے اپنے آپ کو بدنام کرنے سے پرہیز کریں ، ورنہ سمگلنگ میں ملوث مالکان کے خلاف سخت کارروائی کرکے فلور ملز کے این او سی بھی معطل کرنے پر مجبور ہوجاؤنگا ، تمام ملوں کو ایک ہی گودام کا گندم جاتاہے ایک مل میں صحیح اور دوسرے مل سے خراب آٹا کیوں پسائی کیا جا رہا ہے سزا دینا میرے بس کی بات نہیں البتہ خلاف قانون کام کرنیوالوں کے خلاف ایکشن لینا میری ذمہ داری میں شامل ہے ۔ انہوں نے کہا کہ گلگت بلتستان گندم وافر مقدار میں مل رہا ہے مالکان فائن دانے دار کے بجائے معیاری آٹا پسائی کرنے پر توجہ دیں آئندہ غیر معیاری آٹا پسائی میں ملوث فلور ملز کے خلاف سخت ایکشن لینے پر مجبور ہونگے ۔ دوران اجلاس فلور ملز ایسوسی ایشن کے صدر ناصر احمد میر نے کہا کہ فلور ملوں کو محکمہ خوراک فی بوری کے حساب سے سو کلو وزنی گندم دینے کی پابند ہے ، دیگر بوریوں میں گندم ستر کلو سے بھی کم مل رہا ہے پھر بھی فلور ملز مالکان عوام کو چالیس کلو آٹا فراہم کررہے ہیں آٹا ڈیلرز آٹا سمگلنگ میں براہ راست ملوث پائے گئے ہیں محکمہ خوراک عملہ فلور ملوں کو سیل کرنے کے بجائے سیل پوائنٹ مالکان کے خلاف ایکشن لیں ۔ انہوں نے کہا کہ تمام فسادار کی جڑ چوکر ہے ، اور چوکر مقدار کو کم کرتا ہے آٹھ فیصد چوکر نکالنا ہمارا حق ہے ہمیں رشتہ داری کا بھی خیال رکھنا ہوتا ہے اپنے ایک رشتہ دار کو ایک آٹا تھیلہ دینے سے ملوں کو سیل کرنے سے بالکل پرہیز کیا جائے ۔ محکمہ خوراک فلور ملوں کے ساتھ تعاون کرے ملز مالکان بھی محکمہ خوراک کے ساتھ تعاون کرینگے ۔


اس خبر کے بارے میں اپنی رائے دیجئے
پسند آئی
 
ٹھیک ہے
 
کوئی رائے نہیں
 
پسند ںہیں آئی
 


 سب سے زیادہ پڑھی جانے والی مقبول خبریں






آج کا مکمل اخبار پڑھیں

کار ٹونز

گلگت بلتستان

کالم /بلاگ


     
     
تمام اشاعت کے جملہ حقوق بحق ادارہ روزنامہ اوصاف محفوظ ہیں۔
Copyright © 2016 Daily Ausaf. All Rights Reserved