جی بی میں تعمیرو ترقی پر نوازشریف کو خراج تحسین پیش کرتے ہیں، ن لیگ خواتین ونگ جی بی
  12  ستمبر‬‮  2017     |     گلگت بلتستان

گلگت (اوصاف نیوز) پاکستان مسلم لیگ '' ن" خواتین ونگ گلگت بلتستان کا ایک اہم اجلاس سینئر نائب صدر رانی صنم فریاد ؔ کی زیر صدار ت میں بسین آفس میں ہوا جس میں خواتین لیگی ورکرز و عہدیداروں کی کثیر تعداد نے شرکت کیں ۔ اجلاس میں متفقہ طور پر قائدجمہوریت و قائد عوام میاں محمد نواز شریف کی طرف سے گلگت بلتستان کی تعمیر و ترقی و امن عامہ کیلیے کی جانیوالی تاریخی اقدامات کو خراج تحسین پیش کرتے ہیں میاں محمد نواز شریف کی جانب سے گلگت بلتستان کے لیے اُٹھائے گئے تاریخی اقدامات بالخصوص *:جگلوٹ سکردو روڑ کی تعمیر ،لاگت 31 ارب روپے ،گلگت چترال روڑ کی تعمیر ،لاگت 22 ارب روپے 16 میگا واٹ پاور پراجیکٹ شغر تھنگ سکردو، لاگت 4 ارب 84 کروڑ 37 لاکھ روپے ،4میگا واٹ پراجیکٹ تھک چلاس دیامر لاگت 1 ارب 32 کروڑ 10 لاکھ روپے *:16 میگاواٹ نلتر پاور پراجیکٹ گلگت لاگت 2 ارب 90 کروڑ روپے 5 میگا واٹ پاور پراجیکٹ حسن آباد ہنزہ لاگت 1ارب 58 کروڑ روپے 20 میگا واٹ پاور پراجیکٹ ہنزل گلگت لاگت 6ارب 24 کروڑ 84 لاکھ روپے 34.5 میگا واٹ پاور پراجیکٹ ہرپو سکردو لاگت 9 ارب 52 کروڑ 28 لاکھ روپے *:50 بستروں پر مشتمل امراض قلب کا ہسپتال لاگت 1 ارب 51 کروڑ،عطا آباد جھیل کے ساتھ سیاحتی مرکز ، ہوٹل ، اوپن ائیر تھیٹر وغیرہ لاگت 42 کروڑ 30 لاکھ روپے :RCC پل کنوداس سے نلتر ائیر فوربیس تک ایکسپریس وے لاگت 2 ارب 71 کروڑ 60 لاکھ روپے گلگت میں میڈیکل کالج کا قیام لاگت 2 ارب 70 کروڑ روپے ،سکردو میں ٹیکنیکل کالج کا قیام لاگت 10 کروڑ روپے *:اور سب سے اہم ترین ، ہماری ترقی کا ضامن ریجنل گریڈ اسٹیشن ہے جس کی کل لاگت 25 ارب روپے ہے۔ صوبائی حکومت کو 40 کروڑ سے بڑھا کر 75 کروڑ کی سکیموں کی منظوری ،چار نئے

اضلا ع کا قیام ، ترقیاتی بجٹ 8.5 سے بڑھا کر 16 ارب کرنا ، PSDP میں منصوبوں کی لاگت 13 ارب سے بڑھا کر 102 ارب تک کے منصوبوں کی منظوری ،اسپیشل پولیس فور س کے قیام کے لیے 3 ارب کی منظوری کے ساتھ 700 جوانوں کی بھرتی بھی اصولی منظوری جیسے اقدامات قابل ستائش ہیں۔ اس کے ساتھ ساتھ بہت سارے عوام دوست منصوبوں کی منظوری شامل ہیں جس کو بھرپور انداز میں خراج تحسین پیش کرتے ہیں ساتھ ہی یہاں کے عوام سابق وزیر اعظم کی ان عوام دوست اقدامات کی بناء پر مشکور ہیں ۔اجلاس میں پی پی پی کے بعض مقامی رہنماؤں کی بیانات پر سخت رد عمل کا اظہار کرتے ہوئے کہا گیا کہ انہیں سانحہ ماڈل ٹاون پر واویلا کرنے سے پہلے گلگت بلتستان بھر میں ہونے والے فرقہ ورانہ فسادات کا حساب دینا چاہیے ۔پی پی پی کے مقامی قائدین کے ہاتھ فرقہ ورانہ فسادات میں شہید ہونے والے ہزاروں بے گناہ افراد کے خون سے رنگے ہوئے ہیں ۔ یہاں پر کیا کچھ نہیں کیا گیا سیاست کے لیے فرقہ ورانہ فسادات تک کروائے گئے ۔ الحمداللہ جب سے مرکز میں اور گلگت بلتستا ن میں مسلم لیگ " ن" کی حکومت قائم ہوگئی ہے فرقہ واریت دم توڑ گئی ہے اور عوام نے امن و سکون کے ساتھ سکھ کا سانس لے لیا ہے


اس خبر کے بارے میں اپنی رائے دیجئے
پسند آئی
 
ٹھیک ہے
 
کوئی رائے نہیں
 
پسند ںہیں آئی
 


 سب سے زیادہ پڑھی جانے والی مقبول خبریں






  قائد اعظم محمد علی جناح  
  اسکندر مرزا  
  لیاقت علی خان  
  ایوب خان  
آج کا مکمل اخبار پڑھیں

کار ٹونز

گلگت بلتستان

کالم /بلاگ


     
     
تمام اشاعت کے جملہ حقوق بحق ادارہ روزنامہ اوصاف محفوظ ہیں۔
Copyright © 2016 Daily Ausaf. All Rights Reserved