عمران ، سیتا وائٹ اور ٹیریان کی مکمل کہانی .قسط نمبر2
  8  اگست‬‮  2017     |     دلچسپ و عجیب

فیچر دینا کے معروف میگزین “وینٹی فیئر، نیویارکِ میں شائع ہوا ہےجس کی صداقت کے بارے میں اتنا ہی کہنا کافی ہے کہ آج تک عمران خان نے اس کے خلاف کوئی ایکشن نہیں لیا-دلچسپ امر یہ ہے کہ سنا ہے جمائما بھی آج کل اسی میگزین کے ساتھ وابستہ ہیں- سیتا وائٹ اور عمران خان کی یہ مکمل سٹوری اسی میگزین سے ترجمہ کی گئی ہے ، قارئین کے لیے پیش خدمت ہے- ہماری کوشش ہے کہ آپ کو روز اس کی ایک قسط پڑھنے کو مل سکے- شکریہ (ادارہ دنیا پاکستان) بشکریہ وینیٹی فیئر میگزین -نیویارک سیتا اور کیرولینا، دونوں نے کیلی فورنیا میں ایک ایک گھر چھوڑا ہے۔ ان دونوں گھروں کی مجموعی مالیت 2.25ملین ڈالر ہے لیکن تکنیکی طور پر یہ دونوں گھر پینامانیئن ٹرسٹ کی ملکیت رہے۔ دونوں بہنیں بیرون ملک واقع ایک ٹرسٹ سے تقریباً 13, 13 ہزار ڈالرماہانہ بھی وصو ل کرتی تھیں لیکن اس رقم کو وہ چھو تک نہ سکیں ، اور وہ عویٰ کرتی تھیں کہ انہیں کبھی اس کی تفصیلات بھی نہ ملیں۔ مزید یہ کہ، ان دونوں نے تقریباًپانچ، پانچ لاکھ ڈالر کی اضافی رقوم بھی وصل کی تھیں۔ انہوں نے یہ رقوم ان کاغذات پر دستخط کے بدلے حاصل کی تھیں جن میں یہ لکھا تھا کہ انہوں نے یہ حقیقت تسلیم کر لی ہے کہ ان کے باپ کی جائیدادکا برطانوی حصہ کوئی مالیت نہیں رکھتا۔ دونوں بہنوں نے دستخط کر دئیے مگر سیتا نے بعد ازاں ان دستخطوں کے متعلق کہاکہ انہوں نے یہ دستخط بہت زیادہ د باؤ کے تحت اور مکمل طور پر سمجھے بغیر کئے تھے کہ وہ کیا کر رہے تھے۔ لارڈ وائٹ کا انتقال1995ء میں یو سی ایل اے میڈیکل سینٹر میں ہوا جہاں وہ کومہ سے کبھی بھی بیدار نہ ہوئے۔ وہ سالہا سال سے پھیپھڑوں کی بیماری میں مبتلا تھے اور ان کی صحت مسلسل گر رہی تھی یہاں تک کہ وہ کومہ میں چلے گئے۔ وہاں، اسپتال میں وکٹوریہ کی ماں، ڈکسی ٹکر ان کی تیمارداری کر رہی تھی جو کہ ایک نرس تھی۔ لارڈ وائٹ کی موت کا سرٹفکیٹ لاس اینجلس کاؤنٹی کے ریکارڈ آفس سے غائب ہو چکا ہے۔ اپنے شوہر کی وفات کے فوراً بعد وکٹوریہ نے اپنے سابق بوائے فرینڈ ٹوم او گاراکو وائٹ کے بیل ایئر مینشن میں منتقل کر دیا۔ وکٹوریہ نے نئے سال، 1996ء کی پہلی رات اس سے شادی کر لی۔

سیتا نے ایک بااعتماد دوست کو بتایا کہ اپنے باپ کی جائیداد کا ایک بڑا حصہ لینے کی خاطر،ایک چال کے طور پر، وہ وکٹوریہ کی سہیلی بننے کا ارادہ رکھتی ہے۔ ہمارے ذرائع کے مطابق، سیتا کا باپ، لارڈ وائٹ کہتا تھا ’’اپنے دوستوں کو قریب رکھو، لیکن اپنے دشمنوں کو قریب تر رکھو۔‘‘2002ء میں اوگارا سے علیحدہ ہونے کے بعد، وکٹوریہ لڈاہوسے ایل اے واپس چلی گئی۔ لڈاہو میں وہ او گارا کے ساتھ، 4000 ایکڑ کے ایک عظیم الشان فارم ہاؤس میں رہتی تھی۔طلاق کے کاغذات کے مطابق، وہاں وہ خود کو تنہا اور سب سے کٹاہوا محسوس کرتی تھی۔ ان دنوں جب وہ اور اوگارا قریب قریب رہتے تھے، وکٹوریہ اور سیتا نے باقاعدگی سے فون پر بات چیت شروع کر دی۔ یہاں تک کہ سیتا نے، اپنے گھر میں، اپنے اہل خاندان کی تصاویر کے ساتھ، وکٹوریہ کی تصاویر بھی لگا دیں۔ لیکن سیتاوقت لے رہی تھی، معاشی ذرائع کاانتظار کر رہی تھی تاکہ وہ ان کی مدد سے اپنی سوتیلی ماں کو ہدف بنا سکے۔دوسری باتوں کے ساتھ، اس نے یہ منصوبہ بھی بنایا کہ وکٹوریہ کی جانب سے لارڈ وائٹ کی اسٹیٹ سے منعقدکردہ فرنیچر، تصاویر اور دستکاریوں کی نمائش کو رکوانے کی کوشش کرے۔ وقت کے ساتھ ساتھ،سیتا نے اپنی وراثت سے متعلق اپنے تحفظات کے سلسلے میں اپنے والد کے بوڑھے دوست، تھامس کوربلی پر اعتماد کرنا شروع کردیا۔ تھامس تباہ کن حد تک خوش شکل اور خوبصورت شخص تھا۔ایک زمانے میں وہ ایک انٹیلی جنس ایجنٹ اورایک شرابی، جواری اور زانی بھی رہا تھا۔ اس کے بارے میں خبر تھی کہ اس نے دوسریوں کے ساتھ ساتھ، وارثہ ڈورس ڈیوک اور باربارا ہوٹن اور فیشن ڈیزائنر میری مک فیڈن سے بھی محبت رچائی تھی اور برطانیہ میں امریکی سفیر کو 1963ء میں پروفیومو کے معاشقے کے متعلق بھی بتایا تھا۔ اپنی تما م عمر کے دوران، اس نے بہت بڑی نجی تفتیشی اور سکیورٹی کمپنی، کرول ایسوسی ایٹس سے قریبی مگر محتاط تعلقات برقرار رکھے۔ کوربلی لارڈ وائٹ کے ساتھ نہایت قریبی تعلقات رکھتا تھا۔ وائٹ، 1973ء میں امریکہ آیا تھا۔ اس وقت وہ صرف گورڈن وائٹ تھااور اس کے پاس صرف 3000ڈالر اور ایک ٹیلکس مشین تھی۔ وائٹ نے نٹ اور بولٹ بنانے والی ان کمپنیوں ، جنہیں بہتر قدرو قیمت حاصل کرنے کیلئے کسی نٹ بولٹ تراشنے والے کی ضرورت تھی، پر مطلوب مسلسل محنت میں معاونت حاصل کرنے کیلئے کوربلی کی پیشہ ورانہ خدمات حاصل کیں ۔ وائٹ نے ہینسن امپائر کو اپنے ذمے لے کر اور اس کو مرکزی دھارے میں لا کر ، اس کی تعمیر میں خاطر خواہ مدد کی۔ کوربلی کی طرح، وہ بھی اپنی ایک آنکھ ہمیشہ خواتین پر مرکوز رکھتا تھا۔اپنے زمانے میں وہ گریس کیلی، جون کو لِنز اور اوا گارڈنر جیسی معروف حسیناؤں کو اپنے پیچھے لگا چکا تھا۔ کوربلی کا انتقال، سیتا کے انتقال سے صرف ایک برس قبل،83برس کی عمر میں ہوا۔اس کی بیوہ، 60سالہ رینی، تصدیق کرتی ہے کہ اسے آخر تک یہ تشویش تھی کہ باوجود اس کے کہ سیتا غیرمعمولی حد تک بے چین تھی، مگر اس کے الزامات میں سے کچھ کی تصدیق ضروری تھی۔رینی کہتی ہے، ’’ٹام جانتا تھا کہ گورڈن وائٹ یہ ارادہ نہیں رکھتا تھا کہ اس کی بیٹیاں سیتا اور کیرولینااس کی جائیداد کا زیادہ بڑا حصہ لے لیں۔ اس کا خیال تھا کہ وہ دونوں پیسے کا کوئی اچھا مصرف نہیں ڈھونڈ سکتیں اور وہ ان کے متعلق بہت مایوس تھا۔لیکن ٹام کا خیال تھا کہ ان دونوں بہنوں کیلئے ان کے باپ نے اس سے زیادہ دولت چھوڑی ہو گی، جو انہیں ملی۔‘‘ آخری سال کے نومبر میں، سیتا اور کیرولینا لوکاس کے ساتھ ایک معاہدے پر متفق ہو گئی تھیں۔ لوکاس نے حالیہ برسوں میں کینسر کے خلاف ایک کامیاب جنگ لڑی تھی۔دونوں بہنوں نے خاندانی ٹرسٹ سے تقریباً تین تین ملین ڈالرکی حتمی رقوم وصول کیں۔بدلے میں، انہیں ان کی ماہوار آمدن مزید نہیں دی جانی تھی۔لیکن یہ رقم اس 150ملین ڈالر کے کہیں قریب بھی نہیں پہنچتی تھی ، جس کے متعلق سیتا نے لوگوں کو بتایا تھا کہ اسے پانے کی امید تھی۔ حقیقی رقم کا 150ملین ڈالر سے کوئی مقابلہ نہیں تھا۔کہانی میں ایک حیرت انگیز موڑ آنے کی جملہ وجوہات میں سے ایک یہ تھی کہ سیتا کو3ملین ڈالر والا معاہدہ کرنے کے قابل بنانے والے کاغذات وکٹوریہ اور اس کے وکیل نے فراہم کئے تھے۔ سیتا کی جانب سے تیار کردہ ایک حلفیہ قانونی معاہدے کے مطابق، چند ہفتوں بعد اسے اپنی ڈیل کی خبر مل گئی۔اسے دعوت دی گئی کہ وہ وکٹوریہ کے نئے 6.1ملین ڈالر کے بیورلے ہِلز والے گھر میں آئے۔ اس گھر سے اگلاگھر عہد ساز فلم پروڈیوسر رابرٹ ایونز کا تھا۔ اپنے گھر میں موجود لوگوں کے بیچ میں وکٹوریہ نے سیتا کو کیمرون سیکس بی سے متعارف کرایا جس کابچہ اسی نجی اسکول میں پرھتا تھا جس میں ٹام او گارا سے ہونے والے وکٹوریہ کے 3میں سے 1 بچہ بھی پڑھتا تھا۔ وکٹوریہ کے ان تین بچوں میں سے جیک کی عمر 6سال، ہیلن کی عمر 5سال جبکہ تھامس کی عمر 4سال تھی۔کیمرون میں مامتا کے جذبات بدرجہ اتم پائے جاتے تھے۔اس کے بھورے بال کندھوں تک جاتے تھے جب کہ آنکھیں تھکی ہوئی تھیں۔ سیتا کے مطابق، وہ کیمرون اور اپنے شوہر کو اس بات کی اجازت دینے پر راضی ہو گئی کہ وہ اس کی رقم سیکس بی کے پاس انویسٹ کر دے جو کہ ایک مضبوط کاروباری شخص دکھائی دیتا تھا۔ سیتا کو یقین تھا کہ یہی تعارف اس کی تباہی کا باعث بنا تھا۔


اس خبر کے بارے میں اپنی رائے دیجئے
پسند آئی
 
ٹھیک ہے
 
کوئی رائے نہیں
100%
پسند ںہیں آئی
 


 سب سے زیادہ پڑھی جانے والی مقبول خبریں





  اوصاف سپیشل

آج کا مکمل اخبار پڑھیں

آج کا مکمل اخبار پڑھیں

کار ٹونز

دلچسپ و عجیب

کالم /بلاگ


     
     
تمام اشاعت کے جملہ حقوق بحق ادارہ روزنامہ اوصاف محفوظ ہیں۔
Copyright © 2016 Daily Ausaf. All Rights Reserved