انیس سو65 کی جنگ میں پاک فوج نے ثابت کردیا کہ جذبوں کے سامنے بھارت کی تعددی برتری کوئی حیثیت نہیں رکھتی
  6  ستمبر‬‮  2017     |     دلچسپ و عجیب

1965 کی جنگ میں جوش اور ولولوں کی جو تاریخ رقم کی گئی آج اسے25 سال ہو گئے۔ پاکستان نے 1965 میں ستمبر کے مہینے میں بھارت کے حملے کا منہ توڑ جواب دیا تھا اور بھارت کے ناپاک عزائم کو صرف عزائم کی حد تک ہی محدود کر دیا تھا۔ یہ حقیقت ہے کہ بھارتی افواج کی تعداد پاکستان سے بہت زیادہ تھی لیکن اس کے باوجود پاکستانی افواج کی جراّت اور بہادری کے سامنے بھارتی افواج کو منہ کی کھانی پڑی۔ بھارتی فوج 21 انفینٹری اور ماؤنٹین ڈویژن، 1 آرمڈ ڈویژن ، 1 انڈیپنڈنٹ آرمڈ بریگیڈ گروپ یعنی کل 23 ڈویژنز پر مشتمل تھی جبکہ پاک فوج صرف 7 ڈویژنز پر مشتمل تھی۔ اسی طرح بھارتی فضائیہ بھی عددی لحاظ سے زیادہ تھی لیکن پاک فوج نے یہ ثابت کردیا کہ ان کی بہادری اورملک سے محبت کے جذبوں کے سامنے بھارتی فوج کی تعداد کی کوئی حیثیت نہیں۔ اس تاریخی معرکہ کا آغاز 6 ستمبر کو ہوا کہ جب بھارت نےلاہور پر حملہ کردیا جو بھارتی سرحد سے صرف 14 میل دور ہے، لیکن ستلج رینجرز کے جوانوں نے آخری سانس تک لڑ کر ان کا راستہ روکا۔ لاہور میں داخل ہونے اور باٹا پور کے پل پر قبضے کے لئے بھارتی فوج نے دوسرا حملہ کیا ۔ پاک فوج نے لاہور کو بچانے کے لئے جراّت وبہادری کے ساتھ گولوں کی بوچھاڑ کا سامنا کرتے ہوئے بارودی مواد سے باٹا پور کے پل کو تباہ کردیا۔

لاہور میں پاک فوج اور قوم کی اس جراّت مندی پر دشمن کے اوسان خطا ہو گئے۔ دشمن نے راوی کے پل پر قبضہ کر کے لاہور کو راولپنڈی سے کاٹ دینے کے ارادے سے وہاں انیس حملے کئے ۔ ہر بار اسے منہ توڑ جواب ملا۔ اس کے بعد برکی سیکٹر پر بھی دشمن نے حملہ کیا لیکن پنجاب رجمنٹ نے نو گھنٹے تک دشمن کو روکے رکھا اور پھر پاکستان کے ٹینکوں نے دشمن کو آڑے ہاتھوں لیا۔ جب نہر کی طرف دشمن نے گاؤں کو محاصرے میں لیا تو میجر عزیز بھٹی نہر کے مغربی کنارے پر 12 ستمبر کی صبح اپنے جوانوں کی قیادت کرتے ہوئے جام شہادت نوش کر گئے۔ جنگ کے ان 17 دنوں میں پاکستانی افواج کے افسر اور پاکستانی قوم وطن کی محبت سے سرشار نظر آئے۔ پاکستانی افواج کی فرض شناسی، حب الوطنی اور شجاعت کے نا قابل تحسین کارناموں کی کوئی مثال پیش نہیں کی جا سکتی۔ پاک فضائیہ نے بھی اپنا فرض بھرپور طریقے سے ادا کیا اور بھارتی فضائیہ کو ناکو چنے چبوا دیئے۔ پاک فضائیہ کے اسکوارڈن لیڈر ایم ایم عالم نے سرگودھا کی فضاؤں میں صرف چند سیکنڈ میں بھارتی فضائیہ کے پانچ ہنٹر طیارےتباہ کر دیئے۔ پاک بحریہ نے بھی جرات و بہادری سے بھارتی نیوی کو پاکستانی سرحدوں سے دور رکھا۔ بھارتی علاقے "دوارکا" میں دشمن کے ریڈار پاکستان کے ہوائی اور بحری جہازوں پر نظر رکھے ہوئے تھے اور بھارتی فوج کو معلومات فراہم کر رہے تھے جس پر پاک بحریہ نے دوارکا پر حملہ کر کے اسے نیست و نابود کر دیا۔ جب کبھی یہ تمام لمحات ذہن میں گردش کرتے ہیں وطن اور پاک افواج سے محبت کا جذبہ ہر پاکستانی کے دل میں بھڑک اٹھتا ہے۔ اس دوران نا صرف پاک افواج بلکہ پاکستانی قلمکار، گلوکار، فنکار، سب نے ہی اپنی خدمات انجام دیں ۔ گلوکاروں نے مل نغموں سے افواج اور قوم کے جذبوں کو بلند رکھا۔ آج 51سال گزر جانے کے بعد ہم اسلامی دنیا کی واحد ایٹمی طاقت ہیں ، ہمارے پاس جدید میزائیل سسٹم ہیں ہماری افواج ملک و قوم کی محبت کے جذبے سے سرشار ہیں ۔

پاک فضائیہ کے جنگی جہاز جنگ کے دوران
پاک فضائیہ کے جنگی جہاز جنگ کے دوران
پاکستانی ٹینک جنگ کے دوران آگے بڑھتے ہوئے۔
پاکستانی ٹینک جنگ کے دوران آگے بڑھتے ہوئے۔

اس خبر کے بارے میں اپنی رائے دیجئے
پسند آئی
 
ٹھیک ہے
 
کوئی رائے نہیں
 
پسند ںہیں آئی
 


 سب سے زیادہ پڑھی جانے والی مقبول خبریں






آج کا مکمل اخبار پڑھیں

کار ٹونز

دلچسپ و عجیب

کالم /بلاگ


     
     
تمام اشاعت کے جملہ حقوق بحق ادارہ روزنامہ اوصاف محفوظ ہیں۔
Copyright © 2016 Daily Ausaf. All Rights Reserved