یونیورسٹی آف پونچھ چھوٹا گلہ کیمپس کا کام 8سال سے التواء کا شکار ، نعیم خان
  20  مارچ‬‮  2017     |      کشمیر

راولاکوٹ (روزنامہ اوصاف)یونیورسٹی آف پونچھ چھوٹا گلہ کیمپس جس کا کام گزشتہ آٹھ سال سے التواء کا شکار ہے ۔ چر سیوں اور پوڈریوں کی آماجگاہ بن چکا ہے ۔رات کو اس ویران جگہ پر چرسی اور پوڈری اکٹھے ہو کر دنیا و مافیا سے بے خبر بشے میں دھت ہوتے ہیں ۔راہ چلتے مسافروں کو بلا وجہ تنگ کیاجاتا ہے لوگو ں کی جان و مال کو خطرہ ہے ۔ انتظامیہ کاروائی کرے ۔ ان خیالات کااظہار راولاکوٹ کے قریبی گاؤں چھوٹا گلہ سے تعلق رکھنے والے سیا سی وسماجی رہنما ؤں سردار محمد نعیم خان، سردار تنویر خان، سردار حبیب خان نے اپنے ایک بیان میں کیا ہے انہو ں نے کہا کہ یونیورسٹی کیمپس چھوٹا گلہ کا کام التواء کا شکارہونے کی وجہ سے عوام علاقہ اور متاثرین اراضی پہلے ہی اضطرابی کیفیت کا شکار ہیں اوپر سے چرسیوں اور پوڈریو ں نے اس التواء کا شکار کیمپس کو اپنی سرگرمیو ں کیلئے استعمال کرنا شروع کر دیا ہے ۔ شام ہوتے ہی اس جگہ محفوظ تصور کرتے ہوئے چر سی پوڈری جمع ہوتے ہیں اور رات گئے تک شغل جاری رہتا ہے ۔ان سیاسی سماجی رہنماؤ ں نے حکومت اور انتظامیہ سے مطالبہ کیا کہ ان چرسیوں او رپوڈریوں کے خلاف کاروائی کی جائے اور یونیورسٹی کیمپس کے ایک عرصے سے تعطل کا شکار کام کو فور ی طور پر شروع کیاجائے اورکام کے تعطل کے ذمہ داران کے خلاف کاروائی کی جائے


اس خبر کے بارے میں اپنی رائے دیجئے
پسند آئی
 
ٹھیک ہے
 
کوئی رائے نہیں
 
پسند ںہیں آئی
 
رپورٹر   :  


 سب سے زیادہ پڑھی جانے والی مقبول خبریں






آج کا مکمل اخبار پڑھیں

کار ٹونز

کشمیر

کالم /بلاگ


     
     
تمام اشاعت کے جملہ حقوق بحق ادارہ روزنامہ اوصاف محفوظ ہیں۔
Copyright © 2016 Daily Ausaf. All Rights Reserved