آٹھ مقام، گورنمنٹ بوائز مڈل سکول فلاکاں کا عملہ غیر حاضروزیر اعظم نوٹس لیں‘ عوام علاقہ کا مطالبہ
  17  اپریل‬‮  2017     |      کشمیر
آٹھ مقام (آئی این پی) گورنمنٹ بوائز مڈل سکول فلاکاں کا عملہ غیر حاضروزیر اعظم راجہ فاروق حیدر نوٹس لیں۔ وادی نیلم کے زیریں علاقہ جس کی قیادت محمد سعید، مدثر منظور، و یگر کر رہے تھے ایوان صحافت چنار پریس کلب آٹھمقام میں بتایا کہ بوائز مڈل سکول فلاکاں میں طلباء کی تعداد دو سو سے زائد ہے۔ لیکن جب سے مسلم لیگ ن کی حکومت بر سر اقتدار آئی ہے۔حکمران جماعت مسلم لیگ ن سے تعلق رکھنے والے اساتذہ احسان دانش،کمال شاہ، خاتون ٹیچر مسماۃ(ن) غیر معینہ مدت سے غیر حاضر ہیں۔ طلبا ء روزانہ علم حاصل کئے بغیر مایوس گھروں کو واپس لوٹ جاتے ہیں ۔ اساتذہ سیاسی اثرو ردسوخ سے گھروں میں بیٹھے تنخوائیں وصول کرتے ہیں۔ احسان دانش نے سکول میں پڑھانے کے بجائے سپیکر چمبر مظفرآباد میں کیمپ لگا رکھا ہے، جبکہ سپیکر اسمبلی شاہ غلام قادر کی ایماء پر دوسرے غیر حاضر سٹاف کو کھلی چھٹی دے رکھی ہے ۔ طلباء کا ایک سال پہلے ضائع ہو چکا ہے۔ صدر معلم نے والدین کو بتایا ہے کہ صورتحال اس کے کنٹرول سے باہر ہے۔ اپنے بچوں کو پڑھانے کے لئے دوسرے تعلیمی اداروں میں داخل کریں ۔ عوام علاقہ نے ڈسٹرکٹ ایجوکیشن آفیسر نیلم کو بھی تحریری و زبانی طور پر آگاہ کیا لیکن شاہ غلام قادر کی طرف سے کام چور مافیا کی پشت پناہی کی وجہ سے تعلیمی ادارہ میں تدریس نام کی کوئی چیز نہیں رہی ہے ادارہ کو تباہی کے دھانے پر پہنچا دیا گیا ہے ۔ عوام علاقہ کے وفد نے شدید احتجاج کرتے ہوئے وزیر اعظم راجہ فاروق حیدر سے اپیل کی ہے کہ فوری طور پر مڈل سکول فلاکاں میں فرض شناس عملہ تعینات کر کے طلباء کا مستقبل محفوظ کیا جائے۔ ا نھوں نے کہا کہ عوام کے صبر کا پیمانہ لبریز ہوچکا ہے شاہ غلام قادر مافیاز کی پشت پناہی چھوڑ کر عوام کے نمائندہ ہونے کا ثبوت دیں اداروں کو تباہ کرنے سے باز رہیں ایک ہفتہ کے اندر سکول میں سٹاف حاضر نہ کیا گیا تو عوام شاہرائے نیلم بند کر کے احتجاج کریں گے۔

اس خبر کے بارے میں اپنی رائے دیجئے
پسند آئی
 
ٹھیک ہے
 
کوئی رائے نہیں
 
پسند ںہیں آئی
 

رپورٹر   :  


 سب سے زیادہ پڑھی جانے والی مقبول خبریں





 انٹر نیٹ کی دنیا میں سب سے زیادہ پڑھے جانے والے مضا مینں
loading...


آج کا مکمل اخبار پڑھیں

کار ٹونز

کشمیر

کالم /بلاگ


     
     
تمام اشاعت کے جملہ حقوق بحق ادارہ روزنامہ اوصاف محفوظ ہیں۔
Copyright © 2016 Daily Ausaf. All Rights Reserved