آزاد کشمیر اور گلگت بلتستان میں بجلی کی لوڈ شیڈنگ کشمیری عوام کیخلاف سامراجی سازش ہے‘ آفتاب خان
  19  اپریل‬‮  2017     |      کشمیر

راولاکوٹ (آئی این پی) جے کے ایل ایف کے سابق ذونل صدر آفتاب خان نے آزاد کشمیر اور شمالی کشمیر ( گلگت بلتستان ) میں بجلی کی لوڈ شیڈنگ کو کشمیری عوام کے خلاف سامراجی سازش قرار دیتے کہا کہ تین ہزار میگا واٹ بجلی پید ا کرنے والوں کو تین سو میگا واٹ بجلی نہیں دی جا رہی اور دعوی کشمیر دوستی کا ہو رہا ہے انھوں نے کہا کہ اگر ہم آزاد کشمیر اور شمالی کشمیر کو لوڈ شیڈنگ سے مستشنی نہیں کر وا سکتے تو ہمیں کشمیر کے نام پر سیاست اور ریاستی تشخص کا دعوی ذیب نہیں دیتا مقبوضہ کشمیر میں پلوامہ کالج اور ایس پی کالج سری نگر سمیت مختلف تعلیمی اداروں میں طلباء و طالبات پر تشدد ۔ آزادی کا نعرہ لگانے والے نوجوانوں کو سرعام سڑکوں پر تشدد کا نشانہ بنانے اور ایک غریب محنت کش کو گاڑی کے آگے باندھ کر بھارتی فوجیوں کی طرف سے گھسیٹنے کے عمل کو اسرائیلی طرز پر بھارت کی فسطائیت قرار دیا اور کہا کہ اس طرح کے عمل سے بھارت کشمیریوں کو حق آذادی لینے نہیں روک سکتا بڈگام گاندربل اور کپواڑہ کیرن سیکٹر میں نام نہاد بھارتی الیکشن کے موقع پر شہید ہونے والے کشمیریوں فیضان ڈار ،جان محمد ،نثار احمد ،شبیربٹ ، عدیل احمد ، عقیل وانی ، عمر فاروق ، عباس میر ، سجاد واذہ ، اور دیگر کو اور انکی عظیم شہادتوں پر زبردست خراج عقیدت پیش کرتے کہا کہ ان شہداء نے حقیقی معنوں میں بابائے قوم محمد مقبول بٹ ،شہیدِ صداقت شبیر صدیقی ،اور شہیدِ جرا ت جنرل بشارت رضا کے پیروکار ہونے کا ثبوت دیا ہے ماضی میں جب اسی طرح بھارت نے نام نہاد الیکشن ڈھونگ رچانا چاہا تھا تب بشارت رضا میدانِ عمل میں اترا اور اپنی قربانی پیش کی اس کے ساتھ شبیر صدیقی نے ساری قیادت سمیت قربانی دی ان قائدین نے مقبول بٹ کی تقلید کی آج نام نہاد الیکشن کے خلاف جس طرح بڈگام کے لوگوں نے ناصرف مزاحمت کی بلکہ ووٹنگ کے عمل سے لا تعلقی کی وہ اصل میں بڈگام کے سپوت شبیر صدیقی کے مقدس خون اور نظریات سے وفا تھی تو اسی طرح گاندربل کے لوگوں نے اپنے سپوت جنرل بشارت رضا سے وفا کی کیرن ،کپواڑہ میں ان شہدا ء سے مقبول بٹ ،غلام نبی بٹ منظور بٹ کے جیالوں نے وفا نبھائی کشمیر کی سرزمین کے چپے چپے میں ایسی وفا نبھانے والے موجود ہیں شہدائے بڈگام نے جے کے ایل ایف کے بانی چیف کمانڈراشفاق مجید وانی جے کے ایل ایف کے صدر شبیر صدیقی کمانڈر انچیف ثانی جنرل بشارت رضااور دیگر شہداء حضرت بل کی قربانی کی تقلید کر کہ جدوجہد کا سنہری باب رقم کیا جس جرات استقامت اور خلوص سے اشفاق مجید وانی شبیر صدیقی بشارت رضااور دیگر شہداء حضرت بل نے قربانی پیش کی وہ مقبول بٹ کے حقیقی پیروکاروں کا ہی خاصہ ہے آج جب کشمیر کو کیک کیطرح بندربانٹ کر کے تقسیم کی سازشیں کی جارہی ہیں ضرورت اس امر کی ہے کہ اشفاق مجید وانی شبیر صدیقی بشارت رضا کیطرح میدان میں چٹان بنکر مقابلہ کیا جائے اشفاق مجید وانی شبیر صدیقی بشارت رضا اور دیگر شہداء حضرت بل کی تقلید ہی حقیقی آزادی کا باعث بنے گی بڈگام اور کیرن ،کپواڑہ کے شہیدوں کویاد فرماتے ہوئے آفتاب خان نے کہا کہ ہم ان شہیدوں کی قربانیوں کو کبھی بھی فراموش نہیں کر سکتے کربلا کے بعد تاریخ کا سب سے بڑا معرکہ پونچھ کی سرزمین منگ میں ہوا تو حضرت بل سری نگر میں بشارت رضا نے اسی قربانی کا تسلسل بحال کیا جسکو شبیر صدیقی نے منطقی انجام کو پہنچایا جو لوگ یہ کہہ رہے ہیں کہ آزادکشمیر آج خاموش ہے وہ کیوں بھول گئے جب شبیر صدیقی اور انکے تین درجن ساتھیوں کو گن شپ ہیلی کاپٹر سے شلنگ کر کے بے دردی سے شہید کیا گیا تو اسوقت بھی خاموشی رکھی گئی تھی حالانکہ آج تک اس بے دردی سے کسی کو شہید نہیں کیا گیا چین کی طرف سے گلگت بلتستان کو پا کستان کا پانچواں صوبہ قرار دینا اس بات کی غمازی کرتا ہے کہ چین بھی تقسیم کشمیر کی سازشوں میں برابر کا شریک ہے گلگت بلتستان فاٹا نہیں ہے کہ اسے پاکستان کا صوبہ بنایا جائے چین سامراج کا کردار اداکررہا ہے وہ سی پیک کی آڑ میں خطے میں اپنی بالادستی قائم کرنا چاہتا ہے گلگت کو پاکستان کا صوبہ بنانے کے بعد وہ پاکستان کی طرف سے تحفے میں لئے گئے کشمیر کے علاقے اقصائے چن کو اپنا حصہ بنانا چاہتا ہے چین کی دوستی کے گیت گانے والے اب حالات کی نزاکت کو سمجھ کر اپنا کردار ادا کریں کشمیریوں کو وکیل سے فریق تک سب نے تنہا چھوڑدیا ہے لیکن ہم مایوس نہیں یہ سب سامراجی سازشیں ناکام ہونگی اور قدرت شہیدوں کی قربانیوں کے صدقے آزادی کی نعمت سے ہمیں ضرور ہمکنار کرے گی انھوں نے کہا کہ مسلح جدوجہد کرنا کشمیریوں کا حق ہے لیکن اس کے لیے معصوم نوجوانوں کو ورغلا کر بھیجنا قبول نہیں 47 میں بننے والی انقلابی حکومت کی حیثیت بحال کی جائے اس حکومت کے تحت کشمیر کی اپنی ریگولر فورسز بحال ہو جائیں گیں ان فورسز کو حق ہو گا کہ وہ جاکر کشمیر میں مسلح جدوجہد کریں ساتھ ہی بیرونی دنیا میں بھی یہی آزاد حکومت سفارتی محاذ پر مسئلہ کشمیر اجاگر کر سکتی ہے اوڑی میں کاروائی ہوئی اور وکیل وزیر اعظم اوڑی کی جگہ UNO میں سوپور کا حوالہ دیتا ہے بیرونی ملک جوپارلیمانی وفد بھیجا گی انھیں کشمیر کی جگہوں کا ہی نہیں پتہ آفتاب خان نے کہا کہ جو لوگ یہ کہہ رہے ہیں کہ آزادکشمیر آج خاموش ہے وہ کیوں بھول گئے جب شبیر صدیقی اور انکے تین درجن ساتھیوں کو گن شپ ہیلی کاپٹر سے شلنگ کر کے بے دردی سے شہید کیا گیا تو اسوقت بھی خاموشی رکھی گئی تھی حالانکہ آج تک اس بے دردی سے کسی کو شہید نہیں کیا گیا آفتاب خان نے کہا کہ صرف لبریشن فرنٹ تحریک کی وارث نہیں یہ تحریک صدیوں سے چلی آ رہی ہے لوگوں نے زندہ کھالیں کھینچوائیں اور اس خطے میں بھی پی سی کا وہ ظلم دیکھا اور اسکا مقابلہ کیا جیسا آج اس پار ہو رہا ہے انھوں نے کہا کہ آزادکشمیر میں نہ کوئی بھارتی ایجنٹ ہے اور نہ ہی کوئی انکا وفادار ہے اب محض کشمیر کے تین حصوں کو یکجا نہیں کرنا بلکہ یہاں کے لوگوں کو بھی یکجا کرنا ہے مقررین نے کہا کہ تقسیم کشمیر کی سازش عروج پر ہے لبریشن فرنٹ نے یہ جدوجہد شروع کی اس کو پایہ تکمیل تک ہماری جنگ رہے گی یاسین ملک کی گرفتاری اور تشدد ہمیں اپنی جدوجہد سے نہیں روک سکتا


اس خبر کے بارے میں اپنی رائے دیجئے
پسند آئی
 
ٹھیک ہے
 
کوئی رائے نہیں
 
پسند ںہیں آئی
 


 سب سے زیادہ پڑھی جانے والی مقبول خبریں






  قائد اعظم محمد علی جناح  
  اسکندر مرزا  
  لیاقت علی خان  
  ایوب خان  
آج کا مکمل اخبار پڑھیں

کار ٹونز

کشمیر

کالم /بلاگ


     
     
تمام اشاعت کے جملہ حقوق بحق ادارہ روزنامہ اوصاف محفوظ ہیں۔
Copyright © 2016 Daily Ausaf. All Rights Reserved