برصغیر میں مسلمانوں کی تاریخ کو مسخ نہیں کیا جا سکتا‘ شاہ غلام قادر
  20  اپریل‬‮  2017     |      کشمیر
ٍراولپنڈی (آئی این پی)آزاد کشمیر قانون ساز اسمبلی کے سپیکر شاہ غلام قادر نے کہا ہے کہ برصغیر میں مسلمانوں کی تاریخ کو مسخ نہیں کیا جا سکتا۔ بابری مسجد کی شہادت قابل مذمت واقعہ ہے، بھارتی سپریم کورٹ نے بابری مسجد کی شہادت پر الہٓ آباد ہائی کورٹ کے فیصلے کو معطل کرتے ہوئے بدنام زمانہ ہندو لیڈرز لال کرشن ایڈوانی، مرلی منوہر جوشی اور سابق وزیر داخلہ ایل کے ایڈوانی پر مقدمات چلانے کا فیصلہ کیا ہے جو کہ کسی حد تک حوصلہ افزا ہے لیکن جب تک اکثریتی سوچ اور ہندو ذہنیت کو قانون وانصاف کی لگام نہیں دی جاتی، بابری مسجد کی شہادت کے گھناؤنے کرداروں کو کیفر کردار تک نہیں پہنچایا جاتا اور بابری مسجد کی از سر نو تعمیر کا حُکم بھارتی سپریم کورٹ کی جانب سے نہیں آجاتا تب تک نہ صرف بھارت کے مسلمانوں بلکہ دنیا بھر کے مسلمانوں میں چین نہیں آ سکتا۔ عدلیہ کا کام عدل اور انصاف ہے جو بہر صورت ہونا چاہےئے اسی سے معاشرے میں بہتری آ سکتی ہے۔ سپیکر نے کہا کہ بھارت میں نام نہاد جمہوری نظام قائم ہے، مقبوضہ کشمیر کے عوام آزادی کے لےئے جدوجہد کر رہے ہیں اُنہیں نصف صدی گُزرنے کے باوجود یہ حق نہیں دلایا گیا کیسی جمہوریت اور کیسا نظام ہے، ظلم پھر ظلم ہے بڑھتا ہے تو مٹ جاتا ہے۔

اس خبر کے بارے میں اپنی رائے دیجئے
پسند آئی
 
ٹھیک ہے
 
کوئی رائے نہیں
 
پسند ںہیں آئی
 




 انٹر نیٹ کی دنیا میں سب سے زیادہ پڑھے جانے والے مضا مینں
loading...


آج کا مکمل اخبار پڑھیں

کار ٹونز

کشمیر

کالم /بلاگ


     
     
تمام اشاعت کے جملہ حقوق بحق ادارہ روزنامہ اوصاف محفوظ ہیں۔
Copyright © 2016 Daily Ausaf. All Rights Reserved