مقبوضہ کشمیر کی صورتحال انتہائی سنگین ہے،چوہدری محمدیٰسین
  20  اپریل‬‮  2017     |      کشمیر

اسلام آباد (آئی این پی ) آزادکشمیر قانون ساز اسمبلی میں قائد حزب اختلاف و پیپلزپارٹی سنٹرل ایگزیکٹو کمیٹی کے رکن چوہدری محمدیٰسین نے کہا ہے کہ مقبوضہ کشمیر کی صورتحال انتہائی سنگین ہوچکی ہے ۔ نام نہاد انتخابات کے دوران بھارت کے درندہ صفت فوجیوں نے نہتے کشمیریوں پر ظلم وستم کے پہاڑ توڑ دئیے ہیں ۔ اقوام عالم او آئی سی اقوام متحدہ کے ادارے مقبوضہ کشمیر کی صورتحال کا فوری نوٹس لیں ۔ وہ آج یہاں مختلف وفود سے بات چیت کررہے تھے ۔ انہوں نے مطالبہ کیا کہ مقبوضہ کشمیر کی نازک صورتحال پر قومی اسمبلی اور سینٹ کامشترکہ اجلاس بلا کر ایک قومی کشمیر پالیسی ترتیب دی جائے تا کہ مقبوضہ کشمیر میں ہونے والے مظالم کو بند کرنے کیلئے پوری قوم ایک آواز ہو کر اپنا کردار ادا کرے ۔ انہوں نے کہا کہ حکومت پاکستان اپنے وفود تمام ممالک میں بھیجے جو وہاں جا کر مقبوضہ کشمیر کے حالات سے دنیا کو آگاہ کرسکیں ۔ انہوں نے کہا کہ حکومت پاکستان سلامتی کونسل کا اجلاس بلانے کیلئے اقوام متحدہ میں قرارداد جمع کروائے ۔ مقبوضہ کشمیر میں انسانی حقوق کی خلاف ورزیاں عروج پر ہیں ۔ گزشتہ دو ماہ کے دوران دو سوزائدنہتے جوانوں کو شہید کیاگیا ۔ سینکڑوں نوجوانوں کو گرفتار کر کے ٹارچرکیمپوں میں منتقل کردیا گیا ہے اور بھاری املاک کو تباہ کردیاگیا ۔ کشمیری عوام نے گزشتہ67 سالوں سے مسئلہ کشمیر کے پرامن اور دیرپہ حل کیلئے پرامن راستہ اختیار کیا۔ بلٹ کا جواب اپنے سینوں سے دیا یہ دنیا کی واحد تحریک ہے جس میں اپنی آزادی کیلئے ہتھیار نہیں اٹھائے ، بلکہ اپنے سینے پیش کئے ۔ کشمیری عوام نے بھارت کے نام نہاد الیکشن کا بائیکاٹ کر کے اقوام عالم پر واضح کردیا کہ کشمیری کسی طور پربھارت کا غاضبانہ قبضہ قبول نہیں کریں گے ۔ الیکشن کے دوران بھارت کے درندہ صفت فوجیوں نے ظلم وتشدد کا بازار گرم کردیاتھا اور آج بھی مقبوضہ کشمیر بارود کی زد میں ہے ۔ کشمیری قائدین اور حریت کانفرنس کے رہنماؤں کو گرفتار کرلیاگیا ۔ کشمیری عوام پاکستان کے نام پر قربانیاں دے رہے ہیں۔ بھارت کی فوج کشمیریوں پر تشدد کر کے اور ان کو اپنی گاڑیوں کے سامنے باندھ کر پاکستان کیخلاف نعرے لگانے پر مجبور کرتی ہے لیکن کشمیری عوام دلیری سے بھارتی مظالم کا مقابلہ کررہے ہیں انہوں نے کہا کہ مقبوضہ کشمیر کی حریت قیادت نے جس استقامت کا مظاہرہ کیا ہے اس سے کشمیری نوجوانوں کے اندر بے پناہ اعتماد پیداہوا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ کشمیری عوام حق خودارادیت کیلئے اپنی جانیں قربان کررہے ہیں ۔ اوران کو جلد آزادی حاصل ہو گی ۔ انہوں نے کہا کہ آزادکشمیر کی حکومت جولوڈشیڈنگ ختم کر نے کا نعرہ لے کر برسراقتدار آئی تھی اس نے آزادکشمیر میں لوڈشیڈنگ دگنا کردی ہے ۔ ہمارے دور میں روزانہ 5سے 6گھنٹے لوڈشیڈنگ ہوتی تھی جس کا دورانیہ بڑھا کر اب 18سے 20گھنٹے کردیاگیا ہے ۔ اس سے یہ بات ثابت ہو گئی ہے کہ یہ لوگ حکومت کرنے کے قابل نہیں ہیں ۔ انہوں نے کہا کہ حکومت فوری طور پرجبری لوڈشیڈنگ کاخاتمہ کرے ۔ ایڈہاک ملازمین کو فارغ کرنے کی بجائے ان کا انٹرویولے کر ان کو مستقل کرے ۔ حکومتیں عوام کی آسانی کیلئے ہوتی ہیں نہ کہ عوام کو تنگ کرنے کیلئے ۔


اس خبر کے بارے میں اپنی رائے دیجئے
پسند آئی
 
ٹھیک ہے
 
کوئی رائے نہیں
 
پسند ںہیں آئی
 


 سب سے زیادہ پڑھی جانے والی مقبول خبریں





  اوصاف سپیشل

آج کا مکمل اخبار پڑھیں

  قائد اعظم محمد علی جناح  
  اسکندر مرزا  
  لیاقت علی خان  
  ایوب خان  
آج کا مکمل اخبار پڑھیں

کار ٹونز

کشمیر

کالم /بلاگ


     
     
تمام اشاعت کے جملہ حقوق بحق ادارہ روزنامہ اوصاف محفوظ ہیں۔
Copyright © 2016 Daily Ausaf. All Rights Reserved