سرینگر، شمیریوں کے قتل عام اور حریت رہنماؤں کی گرفتاری پر احتجاج
  12  اگست‬‮  2017     |      کشمیر

سرینگر (آئی این پی)حریت رہنماؤں کی کال پر مقبوضہ کشمیر میں مکمل ہڑتال کی گئی۔ بھارت منصوبہ بندی کے تحت مسلم اکثریتی علاقوں کو اقلیت میں تبدیل کرنے کی کوشش کر رہا ہے ‘ ہڑتال میں کشمیریوں کے قتل عام ‘ گرفتاریوں اور حریت رہنماؤں کی گرفتاری پر احتجاج کیا گیا ‘ ہڑتال کے موقع پر تمام دکانیں ‘ تعلیمی ادارے اور کاروباری مراکز بند رہے ‘ آنتظامیہ نے ہڑتال کے پیش نظر وادی میں ٹرین سروس بھی معطل کر دی۔ ہفتہ کو مقبوضہ کشمیر میں مکمل ہڑتال کی گئی۔ ہڑتال کی وجہ بھارتی منصوبہ ہے جس کے تحت بھارتی آئین کے آرٹیکل35-A کو ختم کر کے مسلم اکثریتی علاقے کو اقلیت میں تبدیل کرنے کی کوشش کی جا رہی ہے۔ مکمل ہڑتال کی کال حریت رہنماؤں سید علی گیلانی‘ میر واعظ عمر فاروق اور یاسین ملک نے دی تھی جس کی مقبوضہ کشمیر کی تاجر برادری نے بھی حمایت کی۔ ہڑتال کا اس کے علاوہ مقصد

بھارتی فورسز کے ہاتھوں کشمیریوں کا مسلسل قتل عام ‘ گرفتاری اور انڈیا کی قومی تحقیقاتی ایجنسی کے ہاتھوں حریت لیڈروں کی گرفتاری کیخلاف احتجاج کرنا بھی تھا۔ ہڑتال کے موقع پر تمام دکانیں ‘ کاروباری مراکز اور تعلیمی اداروں کو بند کر دیا گیا جبکہ سڑکوں پر ٹریفک بھی نہ ہونے کے برابر تھی۔ کٹھ پتلی انتظامیہ نے کشمیر وادی میں بھارتی افواج کو تعینات کیا ہے تاکہ بھارت مخالف احتجاج کو روکا جا سکے۔ ساری حریت قیادت کو قید اور گھروں میں نظر بند کر دیا گیا اس کے علاوہ حکام نے وادی میں ٹرین سروس بھی معطل کر دی۔ دریں اثناء ہڑتال کے پیش نظر کشمیر یونیورسٹی ‘ بورڈ آف سکول ایجوکیشن نے ہفتہ کو ہونے والے تمام امتحانات کو معطل کر دیا۔


اس خبر کے بارے میں اپنی رائے دیجئے
پسند آئی
 
ٹھیک ہے
 
کوئی رائے نہیں
 
پسند ںہیں آئی
 


 سب سے زیادہ پڑھی جانے والی مقبول خبریں





  اوصاف سپیشل

آج کا مکمل اخبار پڑھیں

آج کا مکمل اخبار پڑھیں

کار ٹونز

کشمیر

کالم /بلاگ


     
     
تمام اشاعت کے جملہ حقوق بحق ادارہ روزنامہ اوصاف محفوظ ہیں۔
Copyright © 2016 Daily Ausaf. All Rights Reserved