دفعہ 370کے خلاف سازشوں کا سلسلہ بند نہ کیا گیا تو کشمیری سڑکوں پر ا جائیں گے، میرواعظ
  12  اگست‬‮  2017     |      کشمیر

سرینگر ۔ 12 اگست (اے پی پی) مقبوضہ کشمیر میں حریت فورم کے چیئرمین میر واعظ عمر فاروق نے کہاہے کہ بھارتیہ جنتا پارٹی اور راشٹریہ سویم سنگھ کی طرف سے بھارتی آئین کے آرٹیکل 35ایکو سپریم کورٹ میں چیلنج کرنے کا واحد مقصد مقبوضہ علاقے میں مسلمانوں کی اکثریت کو اقلیت میں تبدیل کرنا ہے۔ کشمیرمیڈیاسروس کے مطابق میر واعظ نے سرینگر میں جاری ایک بیان میں کہا کہ یہ سب ایک سوچے سمجھے منصوبے کے تحت کیا جا رہا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ یہ ایک انتہائی حساس مسئلہ ہے اور مقبوضہ علاقے میں آبادی کے تناسب کو تبدیل کرنے کے مذموم اقدام کو کسی صورت برداشت نہیں کیا جائے گا۔ میر واعظ نے کہا کہ اگر مقبوضہ کشمیر کو حاصل خصوصی پوزیشن کو نقصان پہچانے کی سازشیوں کا سلسلہ بند نہ کیا گیا تو کشمیری عوام سڑکوں پر آنے پر مجبور ہوں گے۔ کل جماعتی حریت کانفرنس کے سینئر رہنما آغا سید حسن الموسوی الصفوی نے بڈگام میں ایک عوامی اجتماع سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ عدلیہ کے ذریعے آرٹیکل 35اے کو ختم کرنے کی کوشش نے بھارتی حکومت کے مذموم منصوبوں کو بے نقاب کر دیا ہے۔انہوں نے کہا کہ بھارت کشمیرمیں مسلمانوں کی اکثریت کو اقلیت میں بدلنے کی سازش رچا رہا ہے اسی لیے اس دفعہ کے خلاف سپریم کورٹ میں عرضداشت دائر کی گئی ہے۔آغا سید حسن الموسوی الصٖوی نے بھارت پر زور دیا کہ وہ اوچھے ہتھکنڈوں کا سلسلہ ترک کر کے تنازعہ کشمیر کو کشمیریوں کی خواہشات کے مطابق حل کرنے کے لیے آگے آئے۔ اتحاد المسلمین کے صدرمسرور عباس انصاری نے کشمیر کی موجودہ ابتر سیاسی صورتحال کے تناظر میں کہا کہ بھارتی حکومت کسی نہ کسی بہانے مسئلہ کشمیر کی حیثیت و ہیت کو بگاڑ نے پر تلی ہوئی ہے اور اس کیلئے وہ ہر غیر جمہوری اور غیر انسانی حربہ بروئے کار لارہی ہے۔ انہوں نے کہاکہ جی ایس ٹی کے نفاذ کے بعد اب دفعہ 35 اے کو ختم کرکے جموں کشمیر کی خصوصی پوزیشن کونقصان پہنچانے کی سازش کی جا رہی ہے جسے کشمیری عوا م ہرگز کامیاب نہیں ہونے دیں گے۔ جموں وکشمیر مسلم لیگ کے ترجمان سجاد ایوبی نے ایک بیان میں کہا کہ بھارت جموں کشمیر کو اکھنڈ بھارت کا حصہ بنانا چاہتا ہے جس کے لئے وہ نت نئے طریقے اور حربے آزما رہا ہے۔انہوں نے کہا کہ بھارت کو اس بات کا ادراک ہوچکا ہے کہ ایک نہ ایک دن اسے جموں کشمیر میں بہرصورت رائے شماری کرانا پڑے گی اسی لئے وہ دفعہ 370اور35اے کو ختم کرنا چاہتا ہے تاکہ کشمیری مسلمانوں کی اکثریت کو اقلیت میں بدلا جاسکے۔ تحریک مزاحمت کے چیئرمین بلال صدیقی نے سرینگر میں جاری ایک بیان میں کہا کہ کشمیر کی

مسلم اکثریتی شناخت کو ختم کرنے کی کسی بھی سازش کا کشمیری عوام ڈٹ کر مقابلہ کریں گے۔ انہوں نے کہا کہ مقوضہ علاقے کی مسلم اکثریتی شناخت کو ختم کئے جانے کے لئے ماحول تیار کیا جارہا ہے او ر اسی لیے سپریم کورٹ میں اس حوالے سے عرضداشت دائر کی گئی ہے۔انہوں نے کہا کہ بھارتی حکومت اور کٹھ پتلی انتظامیہ آگ سے کھیل رہی ہیں اور اگر اس مذموم عمل کو فی الفور روکا نہ گیا تو اس کے سنگین نتائج برآمد ہوں گے۔جماعت اسلامی مقبوضہ کشمیر کی طرف سے سرینگر میں جاری ایک بیان میں کہا گیا کہ کشمیر کی خصوصی پوزیشن کے ساتھ چھیڑ چھاڑ کرنے کا اصل مقصد یہاں کی مسلم اکثریتی آبادی کو اقلیت میں تبدیل کرکے جموں وکشمیر کی متنازعہ حیثیت پر کاری ضرب لگانا ہے۔ بیان میں کہا گیا کہ کشمیریوں کے ساتھ یہ وعدہ کیا گیا تھا کہ انہیں رائے شماری کے ذریعے اپنے سیاسی مستقبل کا فیصلہ کرنے کا موقعہ دیا جائے گا لیکن بھارت اپنے وعدے سے نہ صرف مکر چکا ہے بلکہ وہ مقبوضہ علاقے میں مسلمانوں کی اکثریت کی اقلیت میں بدلنے کی سازش کر رہا ہے ۔ جماعت اسلامی نے کشمیریوں سے اپیل کی کہ وہ بھارت کی مکروہ سازشوں سے خبردار رہیں اور انہیں ناکام بنانے کیلئے اپنی صفوں میں اتحاد و اتفاق کو مزید مضبوط بنائیں۔


اس خبر کے بارے میں اپنی رائے دیجئے
پسند آئی
 
ٹھیک ہے
 
کوئی رائے نہیں
 
پسند ںہیں آئی
 


 سب سے زیادہ پڑھی جانے والی مقبول خبریں





  اوصاف سپیشل

آج کا مکمل اخبار پڑھیں

آج کا مکمل اخبار پڑھیں

کار ٹونز

کشمیر

کالم /بلاگ


     
     
تمام اشاعت کے جملہ حقوق بحق ادارہ روزنامہ اوصاف محفوظ ہیں۔
Copyright © 2016 Daily Ausaf. All Rights Reserved