میانمار کے محکوم مظلوم مسلمانوں کو تحفظ فراہم کرنا اسلام کی مذہبی اخلاقی ذمہ داری ہے ،محمد عظیم خان
  13  ستمبر‬‮  2017     |      کشمیر

میرپور(آئی این پی) کشمیر بلڈ بنک اینڈ ویلفیئر سنٹر کے صدر محمد عظیم خان نے کہا ہے کہ میانمار کے محکوم مظلوم مسلمانوں کو تحفظ فراہم کرنا اسلام کی مذہبی اخلاقی ذمہ داری ہے ، میانمار میں مسلمانوں پر میانمار حکومت نے جو ظلم اور بربریت کا باب کھلا ہے اس پر انسانیت شرما گئی ہے ظلم کی اپنی تاریخ رقم کی جارہی ہے جو قابل بیان نہیں اور ناقابل فراموش ہے ۔ عظیم خان نے کہا کہ دنیا دیکھ نہیں رہی کہ کس طرح معصوم بچوں کو آگ کی نذر کیا گیا ، نوجوانوں کو قطار اور در قطار کھڑا کر کے ان کی گردنیں اڑا دی گئیں عورتوں کی عصمت دری کر کے انہیں بے دردی سے قتل کیا گیا ۔ گھروں کو آگ لگا دی گئی ایسے ایسے ظلم کے پہاڑ ڈھائے گئے کہ قلم لکھنے سے قاصر ہے ۔ عظیم خان نے کہا کہ سکتی انسانیت پر دنیا کے منصفوں کی زبانوں کو تالے کیوں لگے معصوم بچوں عورتوں کی آہوں سسکیون پر ان کے

دل کیوں نہیں پگھلے آنسوں تو دور کی بات مذمت کے بیان بھی جاری نہ ہوئے ۔ انہوں نے کہا کہ جب سب کچھ جل گیا جب بچے یتیم ہو گئے مسلمانوں کا قتل عام ہو گیا اور جو بچ گئے وہ دربدر ہو گئے ایسے میں مذمتی بیان آبھی جائے تو زخم بھر نہیں جائیں گے ۔ عظیم خان نے کہا کہ مسلمانوں کے علاوہ کسی اور مذہب پر یہ قیامت ڈھائی جاتی تو ایک طوفان کھڑا ہو جاتا عالم اسلام کو اس ظلم پر خاموش نہیں رہنا چاہیے ۔ انہوں نے کہا کہ بدھ مذہب تو امن و مساوات کا درد دیتا تھا ان کے اندر کی درندگی سامنے آگئی ہے میانمار کی خونی وزیراعظم کے ظالمانہ اقدام کی جتنی بھی مذمت کی جائے کم ہے ۔ حکومت پاکستان میانمار کے مظلوم مسلمانوں کی مدد کیلئے آگے بڑھے قوم حکومت کو بھرپور ساتھ دے گی۔ انہوں نے کہا کہ میانمار کے مسلمانوں پر عالمی سطح کی خاموشی سنگین مجرمانہ غفلت اور جرم ہے ۔


اس خبر کے بارے میں اپنی رائے دیجئے
پسند آئی
 
ٹھیک ہے
 
کوئی رائے نہیں
 
پسند ںہیں آئی
 


 سب سے زیادہ پڑھی جانے والی مقبول خبریں





  اوصاف سپیشل

آج کا مکمل اخبار پڑھیں

  قائد اعظم محمد علی جناح  
  اسکندر مرزا  
  لیاقت علی خان  
  ایوب خان  
آج کا مکمل اخبار پڑھیں

کار ٹونز

کشمیر

کالم /بلاگ


     
     
تمام اشاعت کے جملہ حقوق بحق ادارہ روزنامہ اوصاف محفوظ ہیں۔
Copyright © 2016 Daily Ausaf. All Rights Reserved