بھارتی تجزیہ کاروں اور میڈیا کینے بابر تھری کروز میزائل کے تجربے پر قیاس آرائیاں شروع کر دیں
  11  جنوری‬‮  2017     |     اہم خبریں
نئی دہلی (مانیٹرنگ ڈیسک )بھارت کے دفاع کے ماہرین اور تجزیہ کاروں نے پاکستان کی جانب سے آبدوز سے چھوڑے جانے والے جوہری کروز میزائل بابر3میزائل کے کامیاب تجربے پر شکوک و شبہات ظاہر کرکے اسے پراپیگنڈاکی نذر کرنا شروع کر دیا ہے۔ کچھ عناصر اسے پاکستان کی جانب سے محض فوٹو سیشن قرار دے رہے ہیں۔ تاہم کچھ دفاع کے شعبے کی سوجھ بوجھ رکھنے والے ماہرین نے نہ صرف اسے سچ کہا ہے بلکہ دبے چھپے الفاظ میں اس تجربے پر اپنی تشویش ظاہر کر کے اسے نظر انداز کرنے کو اپنی سرکار کی حماقت قرار دے رہے ہیں۔ نیوی کے ریٹائر سینئر عہدیدار اڈے بھاسکر نے کہا ہے کہ پاکستان ایک ذمہ دار ملک ہے اور اس سے ایسے اقدام کو محض فوٹو شاپنگ کےلئے کرنے کی توقع نہیں کرنی چاہیے ۔مییجنر جنرل ریٹائرڈ کریم کا کہنا ہے کہ اس قسم کے دعوے پاکستان کی جانب سے پہلے بھی کیے جا چکے ہیں اس لیے انکی سچائی کا یقین کرنا مشکل ہے۔ بھارتی میڈیا میں بیٹھے چند حلقے یہ بھی دعوہ کر رہے ہیں کہ پاکستان کی جانب سے جاری کی گئی وڈیو نقلی ہے۔ میزائل لانچ کا منظر کمپیوٹر گرافک ہے۔نیوی نے بھی کہنا شروع کر دیا ہے کہ پاکستان کی جانب سے ایساکوئی ٹیسٹ نہیں ہوا۔اڈے بھاسکر جنکی رائے کو بہت سے ذمہ دار بھارتی خاص اہمیت دے رہے ہیں ،ان کا کہنا ہے کہ ایک مصیبت یہ بھی ہے کہ دونوں جانب ایسے لوگ موجود ہیں جو دوسرے ملک کا جھوٹا ثابت کرنے کی بے ربط کوشش کرتے ہیں۔ ہمیں یاد رکھنا چاہیے کہ چین جسے امریکی بحریہ کی جنوبی سمندروں میں سرگرمیوں پر تشویش لاحق ہے ایسے میں چین کو جنوبی سمندروں میں اپنا اثر و رسوخ بڑھانے کےلئے پاکستان کا سہارا لینا ہوگا۔چین نے پاکستان کو آٹھ آبدوزیں دینے کا بھی وعدہ کر رکھا ہے۔اس لئے صورتحال بھارت کےلئے کڑا چیلنج ہے۔

اس خبر کے بارے میں اپنی رائے دیجئے
پسند آئی
93%
ٹھیک ہے
2%
کوئی رائے نہیں
2%
پسند ںہیں آئی
2%




 انٹر نیٹ کی دنیا میں سب سے زیادہ پڑھے جانے والے مضا مینں
loading...


آج کا مکمل اخبار پڑھیں

کار ٹونز

اہم خبریں

کالم /بلاگ


     
     
تمام اشاعت کے جملہ حقوق بحق ادارہ روزنامہ اوصاف محفوظ ہیں۔
Copyright © 2016 Daily Ausaf. All Rights Reserved