پانامہ کا فیصلہ، 550شخصیات کیخلاف شکنجہ تیار
  21  اپریل‬‮  2017     |     اہم خبریں

اسلام آباد(ویب ڈیسک) سپریم کورٹ آف پاکستان کی جانب سے پاناما لیکس میں حکمران جماعت کے خاندان کے افراد کے بارے میں فیصلہ سامنے آنے کے بعد پاناما لیکس اور بہاماس لیکس کا پنڈورا بکس بند نہیں ہوگا بلکہ باقی 550 متمول پاکستانیوں کے خلاف کارروائی فوری طور پر شروع ہونے کا امکان ہے۔ اس ضمن میں جب ایف بی آر کے ایک اعلیٰ ذمہ دار سے رابطہ کیا گیا تو ان کا کہنا تھا کہ اگر سپریم کورٹ نے انہیں اپنے فیصلے میں پاناما لیکس اور بہاماس لیکس میں شامل باقی افراد کے خلاف کارروائی کے لیے ہدایت یا کوئی اختیار تفویض کیا تو نہ صرف ایف بی آر بلکہ دیگر ادارے بھی پاناما اور بہاماس لیکس کے کیسوں پر سپریم کورٹ کے فیصلے کی روشنی میں کارروائی کا آغاز کردیں گے۔ انہوں نے بتایا کہ سب سے پہلے سپریم کورٹ کے فیصلے کے قانونی و آئینی پہلوو¿ں کی تشریح کروائی جائے گی اور ان کو سمجھا جائے گا اس کی روشنی میں کارروائی ہوگی۔ ذرائع نے بتایا کہ سپریم کورٹ آف پاکستان کا پاناما لیکس کیس میں فیصلہ سامنے آنے کے بعد قومی اداروں کو ایسے کیسوں کی تحقیقات کے لیے موجودہ قوانین کو اپ گریڈ کرنے اور ان افراد، کمپنیوں جن کو ایف بی آر نے اب تک پاناما لیکس اور بہاماس لیکس کیس میں نوٹس جاری کررکھے ہیں کے خلاف سپریم کورٹ کے فیصلے اور ہدایات کی روشنی میں کارروائی ممکن ہوگی۔


اس خبر کے بارے میں اپنی رائے دیجئے
پسند آئی
100%
ٹھیک ہے
 
کوئی رائے نہیں
 
پسند ںہیں آئی
 


 سب سے زیادہ پڑھی جانے والی مقبول خبریں






آج کا مکمل اخبار پڑھیں

کار ٹونز

اہم خبریں

کالم /بلاگ


     
     
تمام اشاعت کے جملہ حقوق بحق ادارہ روزنامہ اوصاف محفوظ ہیں۔
Copyright © 2016 Daily Ausaf. All Rights Reserved