پنجاب حکومت نے منصوبوں میں شفافیت کو یقینی بناکر 850ملین ڈالر کی بچت کی: شہباز شریف
  21  اپریل‬‮  2017     |     یورپ
لاہور(اوصاف نیوز) وزیراعلیٰ پنجاب محمد شہباز شریف سے آج یورپین پارلیمنٹ کی خارجہ امور کمیٹی کے سربراہ ڈیوڈ میک الیسٹر(Mr.David McAlister)کی قیادت میں وفد نے ملاقات کی۔ پاکستان میں یورپی یونین کے سفیر جین فرانکوس کوٹین (Mr.Jean Francois Cautain)کے علاوہ یورپی پارلیمنٹ کے اراکین بھی اس موقع پر موجود تھے۔ ملاقات میں باہمی دلچسپی کے امور، پاکستان اور یورپی یونین کے مابین تعلقات کے فروغ کے لئے اقدامات پر تبادلہ خیال کیا گیا۔ وزیراعلیٰ محمد شہباز شریف نے وفد سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ پاکستان اور یورپی یونین کے ممالک کے مابین انتہائی دوستانہ اور معاشی تعلقات موجود ہیں۔ یورپی یونین پاکستان کا ایک بڑا تجارتی پارٹنر ہے۔ پاکستان کو جی ایس پی پلس کا درجہ دلانے کیلئے یورپی ممالک کی سپورٹ کو قدر کی نگاہ سے دیکھتے ہیں اور یورپی یونین کے ساتھ تعلقات کو مزید مضبوط بنانا چاہتے ہیں اور ان تعلقات میں بہتری سے عوام کو فائدہ پہنچے گا۔ انہوں نے کہا کہ پنجاب حکومت نے منصوبوں میں شفافیت کو یقینی بناکر 850 ملین ڈالر کی بچت کی ہے اور شفافیت ہماری حکومت کا طرہ امتیاز ہے جس کی بناء پر آج پنجاب میں سرمایہ کاری میں اضافہ ہوا ہے۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان دہشت گردی کے چیلنج کا بہادری کیساتھ سامنا کر رہا ہے۔ دہشت گردی کے باعث پاکستانی معیشت کو ناقابل تلافی نقصان پہنچا ہے۔ انہوںنے کہا کہ سیاسی و عسکری قیادت کے اتفاق رائے سے کئے گئے فیصلوں کے باعث دہشت گردی کے خلاف جنگ میں شاندار کامیابیاں ملی ہیں اور آج پاکستان امن کی جانب گامزن ہے۔ دہشت گردوں اور ان کے سہولت کاروں کو شکست دینے کے لئے پوری قوم متحد ہے۔ انہوں نے کہا کہ معاشی ترقی کا براہ راست تعلق امن کے ساتھ جڑا ہوا ہے۔ دہشت گردی و انتہا پسندی کے خاتمے کے لئے بندوق کی گولی کے ساتھ سماجی و معاشی اقدامات کی گولیاں بھی ضروری ہیں اور اسی لئے حکومت سماجی و معاشی اقدامات کے ذریعے دہشت گردی و انتہا پسندی کے مائنڈ سیٹ کے خاتمہ کے لئے کاوشیں کر رہی ہے اور دہشت گردی اور انتہا پسندی کے مائنڈ سیٹ کو بھی شکست دیں گے۔ انہوںنے کہا کہ پنجاب حکومت نے اس ناسور کے خاتمے کیلئے خصوصی طورپر انسداد دہشت گردی فورس بنائی ہے جسے انتہائی پیشہ وارانہ انداز میں تربیت دی گئی ہے اور یہ فورس دہشت گردی کے خاتمے کے لئے ہر اول دستے کے طورپر کام کر رہی ہے۔ انہوں نے کہا کہ پنجاب حکومت نے اینٹوں کے بھٹوں سے چائلڈ لیبر کا خاتمہ کردیا ہے اور اینٹوں کے بھٹوں پر کام کرنے والے 85ہزار بچوں کو سکولوں میں داخل کرایا گیا ہے۔ ان بچوں کو مفت تعلیم کیساتھ ماہانہ وظیفہ بھی دیا جارہا ہے۔ انہوں نے کہا کہ جن بچوں کے ہاتھ گرد آلود تھے اب ان معصوم ہاتھوں میں قلم اور کتاب ہے۔ انہوں نے کہا کہ ورکشاپوں، ریسٹورنٹس اور پٹرول پمپوں سے بھی چائلڈ لیبر کا خاتمہ کرانے کا ہدف مقرر کیا گیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ توانائی بحران کے خاتمے کے لئے کئے جانے والے اقدامات بار آور ثابت ہوئے ہیں۔ آج ہزاروں میگاواٹ کے توانائی منصوبوں پر دن رات کام جاری ہے اور کئی منصوبے تکمیل کے آخری مراحل میں ہیں۔ 2017ء کے آخر میں توانائی منصوبوں کی تکمیل سے لوڈشیڈنگ کا خاتمہ ہوگا اور 2018ء کے اوائل میں پاکستان کے پاس سرپلس بجلی ہوگی۔ انہوںنے کہا کہ پاکستان اس سفر کی جانب گامزن ہے جس کا خواب قائداعظم اور اقبال نے دیکھا تھا۔ اس ملک میں انتہا پسندی اور دہشت گردی کی کوئی گنجائش نہیں۔ تحمل، برداشت، بھائی چارے اور رواداری پر مبنی پاکستان ہماری منزل ہے۔ پاکستان جلد اپنا کھویا ہوا مقام پائے گا۔ سربراہ خارجہ امور کمیٹی یورپین پارلیمنٹ ڈیوڈ میک الیسٹر نے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ پاکستان عظیم ملک اور اس کے عوام بھی عظیم ہیں۔ پاکستان کے ساتھ اپنے تعلقات کو مزید بڑھانا چاہتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ وزیراعلیٰ شہباز شریف کی قیادت میں پنجاب ترقی کر رہا ہے اور ہمیں پنجاب کو ترقی کرتا دیکھ کر خوشی ہوئی ہے۔ صوبائی وزیر ڈاکٹر عائشہ غوث پاشا، ایم این اے پرویز ملک، چیئرپرسن چائلڈ پروٹیکشن بیورو، ایم پی اے صبا صادق، ایڈیشنل چیف سیکرٹری، ایڈیشنل چیف سیکرٹری داخلہ، چیئرمین منصوبہ بندی و ترقیات، متعلقہ محکموں کے سیکرٹریز اور اعلیٰ حکام بھی اس موقع پر موجود تھے۔

اس خبر کے بارے میں اپنی رائے دیجئے
پسند آئی
 
ٹھیک ہے
 
کوئی رائے نہیں
 
پسند ںہیں آئی
 



 سب سے زیادہ پڑھی جانے والی مقبول خبریں






آج کا مکمل اخبار پڑھیں

کار ٹونز

اہم خبریں

کالم /بلاگ


     
     
تمام اشاعت کے جملہ حقوق بحق ادارہ روزنامہ اوصاف محفوظ ہیں۔
Copyright © 2016 Daily Ausaf. All Rights Reserved