نوازشریف کےنااہل ہوتے ہی پرویزمشرف میدان میں آگئے،حلقہ این اے 120سے ق لیگ کا امیدوار کون ہوگا؟ملکی سیاست کی سب سے بڑی خبر آگئی
  3  اگست‬‮  2017     |     اہم خبریں

اسلام آباد (روز نامہ اوصاف ) سابق صدر پرویز مشرف نے کہا کہ پاکستان میں جب بھی مارشل لاء لگائے گئے یہ اس وقت کے حالات کا تقاضا تھا پاکستان میں فوج ملک کو پٹری پر لاتی ہے اور سویلین آ کر پھر اسے پٹری سے اتار دیتے ہیں۔ ایشیا کے تمام ممالک کو دیکھا جائے تو وہاں بھی صرف ڈکٹیٹروں کی وجہ سے ترقی ہوئی ہے جب کہ پاکستان کو بھی ڈکٹیٹروں نے ٹھیک کیا لیکن جب وہ گئے تو سول حکومتوں نے بیڑہ غرق کر دیا اور فوج کی سر پرستی میں ملک نے ہمیشہ ترقی کی۔مشرف نے اپنے خلاف درج آرٹیکل 6 کے حوالے سے بات کرتے ہوئے کہا کہ اگرمیں غلط ہوں تومجھے لٹکا دو۔ مشرف کا کہنا تھا کہ کسی بھی ملک میں عوام کو جمہوریت ، ڈکٹیٹرشپ ، کمیونزم ، سوشلزم یا بادشاہت سے زیادہ فرق نہیں پڑتا انہیں صرف ترقی اور خوشحالی، روزگار اور سیکیورٹی چاہیے ہوتی ہے جب کہ الیکشن کرا کر عوام کو اگر خوشحالی نہ دی جائے تو اس الیکشن کا کیا فائدہ ہے۔انہوں نے بات کرتے ہوئے کہا کہ میں ملک میں جلد واپس آرہا ہوں اور موجودہ صورتحال میں مسلم لیگ ق نے بھی حلقہ این اے 120اے اپنا امیدوار لانے کا فیصلہ کر لیا ہے۔ذرائع کا کہنا ہے کہ یہ امیدوار ممکنہ طور پر سابق آرمی چیف جنرل (ر)پرویز مشرف ہو سکتے ہیں۔جنرل مشرف نے کہا کہ حکومت کو ہٹانے کا اختیار

عوام کو ہونا چاہیے لیکن پاکستان میں حالات مختلف ہیں۔ عوام تب ہوتی ہے جب آئین کے اندر چیکس اینڈ بیلنس ہو اور عوام خود مشکل وقت میں فوج کے پاس آتی ہے کہ ان ظالموں سے ہماری جان چھڑوائیں جب کہ لوگ میرے پاس آ کر کہتے تھے کہ ہماری جان چھڑوائیں اور میں نے عوام کے مطالبے پر ٹیک اوور کیا تھا۔ آئین کے حوالے سے مشرف نے کہا کہ آئین مقدس ہے لیکن آئین سے زیادہ قوم مقدس ہے آئین کو بچاتے ہوئے قوم کو ختم نہیں کیا جا سکتا۔مشرف نے مزید کہا کہ پاکستان توڑنے میں بھٹو کا قصور تھا ۔ مشرف نے سابق وزیراعظم نواز شریف پر الزام لگایا کہ ان کی بھارت پالیسی ٹوٹل سیل آؤٹ پالیسی تھی جبکہ بھارت بلوچستان میں ملوث ہے ۔


اس خبر کے بارے میں اپنی رائے دیجئے
پسند آئی
69%
ٹھیک ہے
7%
کوئی رائے نہیں
7%
پسند ںہیں آئی
18%


 سب سے زیادہ پڑھی جانے والی مقبول خبریں






آج کا مکمل اخبار پڑھیں

کار ٹونز

اہم خبریں

کالم /بلاگ


     
     
تمام اشاعت کے جملہ حقوق بحق ادارہ روزنامہ اوصاف محفوظ ہیں۔
Copyright © 2016 Daily Ausaf. All Rights Reserved