کیا آپ جانتے ہیں کہ یہ لڑکی کون ہے ؟  نواز شریف نے اس لڑکی کے ساتھ کیا شرمنا ک کیا ؟ لڑکی نے خود اپنے منہ سے دھما کہ خیز انکشاف کر ڈالا
  13  اگست‬‮  2017     |     اوصاف سپیشل

اسلام آباد (مانیٹرنگ ڈیسک) وزیر اعظم نوا ز شریف اور سابق صدر پرویز مشرف پر لائن مارنے کا الزام لگانے والی اسما راجپوت نامی لڑکی نے اپنے اوپر ہونے والی تنقید کا جواب دینے کیلئے ویڈیو جاری کر دی ہے۔ تفصیلات کے مطابق ایچ ٹی وی کے پروگرام اوور دی ایج کے آڈیشن کے دوران اسما نامی لڑکی نے دعوی کیا تھا کہ کراچی سے اسلام آباد کے سفر کے دوران وزیر اعظم نواز شریف نے اس پر لائن ماری تھی۔ بزنس کلاس میں سفر کے دوران وزیر اعظم نے مسکراتے ہوئے اس سے باتیں کیں اور نمبر لے کر شام کو کھانے کی دعوت دی۔ اسما نے یہ دعوی بھی کیا کہ سابق صدر پرویز مشرف نے بھی اس پر سفر کے دوران لائن ماری تھی تاہم ان کا لائن مارنے کا انداز نواز شریف سے زیادہ اچھا تھا۔ سابق صدر نے بھی اس سے وہی سوالات پوچھے اور لائن مارنے کیلئے وہی طریقہ اپنایا جو وزیر اعظم نواز شریف نے اپنایا تھا ۔ لڑکی نے کہا کہ دونوں شخصیات کی دعوت کے باوجود وہ ان کے پاس نہیں گئی تاہم مزیدپڑھیں: نواز شریف نے میرے ساتھ نازیبا حرکت کی ۔۔ معروف اینکر پرسن صنم بلوچ نے اپنے ٹوئٹر اکائونٹ دھماکہ خیز انکشاف کر ڈالا ۔۔ ‎

لائن مارنے کے ثبوت اس کے پاس موجود ہیں۔ اسما راجپوت کے آڈیشن کی ویڈیو منظر عام پر آنے کے فوری بعد سوشل میڈیا پر وائرل ہوگئی اور لوگوں نے اسے شدید تنقید کا نشانہ بنایا۔ تنقید سے خوش اسما راجپوت نے وضاحت کیلئے فیس بک پر ویڈیو جاری کی جس میں اس کا کہنا تھا کہ میں نے اوور دی ایج میں لائن والی جو بات کی وہ بالکل سچ ہے، مجھے جھوٹ بولنے کی ضرورت نہیں ہے کیونکہ جھوٹ وہ لوگ بولیں گے جنہیں شہرت کا شوق ہو مجھے شہرت حاصل کرنے میں کوئی دلچسپی نہیں ہے اور اگر مجھے اس قسم کا کوئی شوق ہوتا تو میں ماڈلنگ کی طرف جاتی۔اس کا مزید کہنا تھا کہ میں جانتی تھی کہ اوور دی ایج ایک ریئلٹی شو ہے اس لیے صرف سچ بولا اور اگر نواز شریف اور پرویز مشرف نے مجھ سے کھانے کا پوچھ لیا تو اس پر ایشو بنانے کی ضرورت نہیں ہے۔


اس خبر کے بارے میں اپنی رائے دیجئے
پسند آئی
63%
ٹھیک ہے
 
کوئی رائے نہیں
 
پسند ںہیں آئی
37%


 سب سے زیادہ پڑھی جانے والی مقبول خبریں





  اوصاف سپیشل

آج کا مکمل اخبار پڑھیں

آج کا مکمل اخبار پڑھیں

کار ٹونز

اہم خبریں

کالم /بلاگ


     
     
تمام اشاعت کے جملہ حقوق بحق ادارہ روزنامہ اوصاف محفوظ ہیں۔
Copyright © 2016 Daily Ausaf. All Rights Reserved