پرویز مشرف نے بے نظیر بھٹو قتل کیس کا سامنا کرنے کا اعلان کر دیا
  14  ستمبر‬‮  2017     |     اہم خبریں

اسلام آباد (کرائم رپورٹر)پاکستان کے سابق فوجی صدر پرویز مشرف نے کہا ہے کہ وہ وطن واپس آکر سابق وزیراعظم بے نظیر بھٹو کے قتل کیس کا سامنا کریں گے۔پرویز مشرف نے اتوار کو ایک بیان میں کہا ہے کہ ’’راول پنڈی کی انسداد دہشت گردی کا فیصلہ ان کے خلاف نہیں ہے۔میں جب طبی طور پر تن درست ہوگیا تو پاکستا ن واپس جاؤں گا اور اپنے خلاف مقدمے کا سامنا کروں گا‘‘۔سابق صدر گذشتہ تین سال سے دبئی میں مقیم ہیں اور خود ساختہ جلا وطنی کی زندگی گزار رہے ہیں۔انھوں نے کہا کہ ’’ مجھے سیاسی انتقام کا نشانہ بنا کر بے نظیر بھٹو کے قتل میں ملوث کیا گیا تھا جبکہ میرا ان کی بے وقت اور الم ناک موت سے کوئی تعلق تھا اور نہ سابق وزیراعظم کے قتل سے مجھے کوئی فائدہ پہنچا تھا۔میرے خلاف جھوٹا اور من گھڑت کیس بنایا گیا اور یہ ایک سیاسی انتقام کا نتیجہ تھا‘‘۔

انسداد دہشت گردی کی عدالت نے پرویز مشرف پر بے نظیر کے قتل کی سازش کے الزام میں فرد جرم عاید کی تھی۔اس واقعے کی اقوام متحدہ کی ایک ٹیم نے بھی تحقیقات کی تھی اور اس نے 2010 ء میں ایک رپورٹ میں پرویز مشرف کی حکومت پر الزام عاید کیا تھا کہ وہ بے نظیر بھٹو کو مناسب تحفظ مہیا کرنے میں ناکام رہی تھی حالانکہ ان کی موت کو روکا جاسکتا تھا۔راول پنڈی کی انسداد دہشت گردی کی عدالت نے گذشتہ جمعرات کو سابق وزیراعظم بے نظیر بھٹو کے قتل کیس کا فیصلہ سنا یا تھا اور سابق صدر پرویز مشرف کو اشتہاری قرار دیتے ہوئے ان کی جائیداد ضبط کرنے کا حکم دیا تھا۔عدالت نےاس واقعے میں ملوث ہونے کے الزام میں گرفتار کالعدم تحریک طالبان پاکستان ( ٹی ٹی پی) سے تعلق رکھنے والے پانچ ملزمان کو بری کردیا تھا اور دو پولیس افسروں کو سترہ ،سترہ سال قید کی سزا سنائی تھی۔


اس خبر کے بارے میں اپنی رائے دیجئے
پسند آئی
 
ٹھیک ہے
 
کوئی رائے نہیں
 
پسند ںہیں آئی
 


 سب سے زیادہ پڑھی جانے والی مقبول خبریں






  قائد اعظم محمد علی جناح  
  اسکندر مرزا  
  لیاقت علی خان  
  ایوب خان  
آج کا مکمل اخبار پڑھیں

کار ٹونز

اہم خبریں

کالم /بلاگ


     
     
تمام اشاعت کے جملہ حقوق بحق ادارہ روزنامہ اوصاف محفوظ ہیں۔
Copyright © 2016 Daily Ausaf. All Rights Reserved