نادار ا کے دفاترم میں عوام کو کس طرح لوٹا جا رہا ہے ؟ افسوسناک انکشاف
  11  جنوری‬‮  2017     |     پاکستان

اسلام آباد (روزنامہ اوصاف)نادرا دفاتر میں عوام کو ایگزیکٹیو شناختی کارڈ کے نام پر بھاری فیس ادا کرنے پر مجبور کئے جانے کا انکشاف ہوا ہے یہ انکشاف ٹاؤن کمیٹی ٹنڈوباگو کے چیئرمین خان صاحب جمالی کے اچانک دورہ نادرا دفتر ٹنڈوباگو کے دوران ہوا۔ٹاؤن کمیٹی ٹنڈوباگو کے چیئرمین خان صاحب جمالی نے نادرا دفتر میں شناختی کارڈ کی بھاری فیس کی وصولی کی مسلسل شکاہات پر نادرا دفتر ٹنڈوباگو کا صحافیوں کے ہمراہ اچانک دورہ کیا تو وہاں شناختی کارڈ بنوانے کے لئے آنے والے افراد نے شکایات کیں کہ نادراعملہ ان سے آرڈنری کے بجائے ایگزیکیٹو کارڈ کی فیس وصول کر رہا ہے اور ہمیں آرڈنری کارڈ سے جواب دیا جا رہا ہے ہم آرڈنری کے بجائے ایگزیکٹیو کادڈ بنوانے پر مجبور ہو گئے ہیں کیونکہ اس کے بغیر ہمیں کارڈ نہیں مل سکتے اور یہ سب نادرا عملہ کر رہا ہے ان عوامی شکایات پر جب چیئرمین ٹاؤن کمیٹی ٹنڈوباگو نے انچارج نادرا دفتر ٹنڈوباگو سے استفسار کیا تو انچارج نے انکشاف کیا کہ نادرا حکام کی طرف سے ہمیں زبانی احکامات جاری کئے گئے ہیں کہ آرڈنری شناختی کارڈوں کے بجائے زیادہ سے زیادہ تعداد میں ایگزیکٹیو کارڈ جاری کئے جائیں تاکہ محکمے کو فائدہ ہوسکے اس موقع پر نادرا انچارج نے استفسار پر چیئرمین ٹاؤن کمیٹی کو بتایا کہ آج 26 امیدواروں کے فارم بھرے گئے ہیں جن میں سے صرف دو فارم آرڈنری ہیں باقی تمام ایگزیکٹیو فارم بھرے گئے ہیں۔ چیئرمین ٹاؤن کمیٹی ٹنڈوباگو نے نادرا انچارج سے کہا کہ وہ اپنے دفتر میں شناختی کارڈ کی آرڈنری اور دیگر فیسوں کی لسٹ دفتر میں آویزاں کریں تاکہ عوام اپنی مرضی کے نرخوں پرشناختی کارڈ بنوا سکیں۔ چیئرمین ٹاؤن کمیٹی ٹنڈوباگو خان صاحب جمالی نے میڈیا سے بات چیت کرتے ہوئے کہا کہ غریب اور بے کس افراد کو قومی شناختی کارڈ بنوانے کے لئے بھی بھاری فیس کی ادائیگی پر مجبور کیا جا رہا ہے۔ انہوں نے کہا کہ اکثر افراد آرڈنری شناختی کارڈ بنوانا چاہتے ہیں کیونکہ ان کے پاس ایگزیکیٹیو شناختی کارڈ بنوانے کی فیس نہیں ہے مگر نادرا عملہ اپنے حکام بالا کے دباؤ پر انہیں آرڈنری فیس کے بارے میں آگاہ ہی نہیں کرتا اور عوام کو بھاری فیس والے ایگزیکٹیو کارڈ بنوانے پر مجبور کیا جا رہا ہے۔ انہوں نے کہا کہ نادرا ٹنڈوباگو کے دفتر میں عوام سے یہ نا انصافی کسی طور بھی قابل قبول نہیں اور اگر عوام کے ساتھ ہونے والی یہ ناانصافی بند نہ کی گئی تو نادرا کے ہیڈ کواٹر کو اس بارے شکائت کی جائے گی اور ٹاؤن کمیٹی کے اجلاس میں اس حوالے سے قرارداد بھی منظور کی جائے گی


اس خبر کے بارے میں اپنی رائے دیجئے
پسند آئی
100%
ٹھیک ہے
 
کوئی رائے نہیں
 
پسند ںہیں آئی
 


 سب سے زیادہ پڑھی جانے والی مقبول خبریں






آج کا مکمل اخبار پڑھیں

کار ٹونز

پاکستان

کالم /بلاگ


     
     
تمام اشاعت کے جملہ حقوق بحق ادارہ روزنامہ اوصاف محفوظ ہیں۔
Copyright © 2016 Daily Ausaf. All Rights Reserved