معروف مسجد کے امام ساڑھے آٹھ سال قید کی سزا سنا دی گئی
  19  اپریل‬‮  2017     |     پاکستان
ساہیوال(این این آئی) سپیشل جج انسدد دہشت گردی کورٹ ساہیوال ملک شبیر حسین اعوان نے ڈسٹرکٹ ہیڈ کواٹر ٹیچنگ ہسپتال کی مسجد کے خطیب اور کالعدم سپاہ صحابہ کے عہدیدار حافظ محمد عثمان کو منافرت پھیلانے والا میٹریل رکھنے کے جرم میں ساڑھے آٹھ سال قید سخت اور تین لاکھ روپے جرمانہ کی سزا سنائی ، عدم ادائیگی جرمانہ مجرم کو مزید ڈیڑھ سال کی قید بھگتنا ہوگی ۔ اثتغاثہ کے مطابق 22جولائی 2016کو سی ٹی ڈی نے ایک کاروائی کے دوران ڈسٹرکٹ ہیڈ کواٹر ہسپتال ساہیوال کے خطیب حافظ محمد عثمان کو کالعدم تنظیم کا میٹریل رکھنے اور تقسیم کرنے کے الزامات میں گرفتار کر لیا تھا اور میڑیل برآمد کرکے سی ٹی ڈی نے مقدمہ 11ڈبلیو 11سی اور11جی انسداد دہشت گردی ایکٹ درج کرکے جوڈیشل ریمانڈ پر جیل بھیج دیا تھا جس کے بعد ملزم حافظ محمد عثمان کو ضمانت پر رہا کر دیا گیا تھا آج عدالت سے سزا کے بعد گرفتار کرکے ہائی سیکورٹی جیل بھیج دیا گیا ۔

اس خبر کے بارے میں اپنی رائے دیجئے
پسند آئی
67%
ٹھیک ہے
 
کوئی رائے نہیں
 
پسند ںہیں آئی
33%




 انٹر نیٹ کی دنیا میں سب سے زیادہ پڑھے جانے والے مضا مینں
loading...


آج کا مکمل اخبار پڑھیں

کار ٹونز

پاکستان

کالم /بلاگ


     
     
تمام اشاعت کے جملہ حقوق بحق ادارہ روزنامہ اوصاف محفوظ ہیں۔
Copyright © 2016 Daily Ausaf. All Rights Reserved