سندھ کے علاقے میٹھی میں ہندو لڑکی نےاسلام قبول کرکے مسلم لڑکے کیساتھ شادی کرلی
  18  جون‬‮  2017     |     پاکستان
مٹھی(ویب ڈیسک)تھرپارکر کے گاؤں ورنھاریو میں ہندو لڑکی نے مذہب تبدیل کر کے مسلم نوجوان سے شادی کرلی۔تھرپارکر کی تحصیل ورنھاریو کی رہائشی 16سالہ لڑکی رویتا کماری سترام نے مبینہ طور پر گھر سے فرار ہوکر نوجوان علی نواز شاہ سے مذہب تبدیل کرکے شادی کرلی اور لڑکی کا اسلامی نام گلناز رکھا گیا ہے۔واقعے بعد لڑکی کے والدین نے گاؤں چھوڑ کر مٹھی میں اپنے رشتے داروں میں پناہ لے لی، لڑکی کے والد سترام کی فریاد پر دانو داندل پولیس اسٹیشن پر لڑکی کے اغوا کا مقدمہ علی نواز شاہ اور 2 ساتھیوں کے خلاف درج کرلیا گیا ہے، لیکن تاحال کوئی گرفتاری عمل میں نہیں آئی۔
دوسری جانب نومسلمہ گلناز اور اس کے شوہر نے سندھ ہائی کورٹ میں تحفظ کی درخواست دائر کردی ہے جبکہ رویتا عرف گلناز کے والدین نے بھی لڑکی کی بازیابی کے لیے عدالت میں درخواست دائر کی ہے۔ عدالت نے رویتا عرف گلناز کی درخواست پر والدین کو 30 جون کو عدالت میں طلب کرلیا ہے۔ادھر لڑکی کے والد کا کہنا ہے کہ اس کی لڑکی کی عمر16سال ہے اور اس عمر میں اس کو زبردستی اغوا کرکے مذہب تبدیل کرایا گیا ہے۔ والدین نے لڑکی کو عدالتی تحویل میں لینے کا مطالبہ کیا ہے۔

اس خبر کے بارے میں اپنی رائے دیجئے
پسند آئی
 
ٹھیک ہے
 
کوئی رائے نہیں
50%
پسند ںہیں آئی
50%




  اوصاف سپیشل

آج کا مکمل اخبار پڑھیں

آج کا مکمل اخبار پڑھیں

کار ٹونز

پاکستان

کالم /بلاگ


     
     
تمام اشاعت کے جملہ حقوق بحق ادارہ روزنامہ اوصاف محفوظ ہیں۔
Copyright © 2016 Daily Ausaf. All Rights Reserved