فیس بک کے بانی مارک زکر برگ یہودی خاندادن میں پیدا ہوئے ،اب مذہب بارے بڑا فیصلہ کر لیا
  3  جنوری‬‮  2017     |     سائنس/صحت
اسلام آباد (روز نامہ اوصاف )فیس بک کے شریک بانی اور سی ای او مارک زکربرگ نے نظریہ الحاد سے کنارہ کشی اختیار کرتے ہوئے زندگی میں مذہب کی اہمیت پر زور دیا ہے۔مارک زکربرگ کا مذہب کی جانب رجحان ہو گیا ہے۔ انہوں نے 25 دسمبر کو مسیحیوں کی عید کے موقع پر اپنے فالورز کو میری کرسمس اور ہیپی ہنوکا کا پیغام بھی دیا۔ غیر ملکی میڈیا کے مطابق فیس بک پر مارک زکربرگ کی کرسمس مبارکباد کے بعد ایک صارف نے ان سے پوچھا کہ آپ ملحد نہیں ہیں؟ جس کا جواب دیتے ہوئے ان کا کہنا تھا کہ ”نہیں“، وہ ایک دور تھا جو گزر چکا ہے۔ زکربرگ نے کہا کہ ”میں ایک یہودی خاندان میں پلا بڑھا، اس کے بعد جب بڑا ہوا تو میں نے چیزوں کے بارے میں سوالات اٹھانا شروع کر دیے، تاہم اب میں اس بات پر یقین رکھتا ہوں کہ مذہب کی انسانی زندگی میں اشد ضرورت ہےاس سے قبل مارک زکربرگ نے اپنی اہلیہ کے ہمراہ ویٹی کن کا دورہ کیا تھا جہاں انہوں نے مسیحیوں کے روحانی پیشوا پوپ فرانسس سے ملاقات کی۔ بعد ازاں ایک بیان میں زکربرگ نے تسلیم کیا کہ وہ پوپ کی ہمدردی سے بے پناہ متاثر ہوئے ہیں۔ یاد رہے کہ مارک زکربرگ نے اس سے قبل بودھ مذہب میں دلچسپی کا اظہار کیا تھا۔ انہوں نے وائلڈ گوس پاگوڈا کا دورہ کرکے وہاں نہ صرف عبادت کی بلکہ اپنے خاندان کی صھٹ وتندرستی اور دنیا میں امن واستحکام کیلئے دعائیں کی تھیں۔ اپنی ایک فیس بک پوسٹ میں انہوں نے لکھا تھا کہ وہ مذہب کے بارے میں مزید جاننا چاہتے ہیں۔

اس خبر کے بارے میں اپنی رائے دیجئے
پسند آئی
20%
ٹھیک ہے
 
کوئی رائے نہیں
 
پسند ںہیں آئی
80%





آج کا مکمل اخبار پڑھیں

کار ٹونز

سائنس/صحت

کالم /بلاگ


     
     
تمام اشاعت کے جملہ حقوق بحق ادارہ روزنامہ اوصاف محفوظ ہیں۔
Copyright © 2016 Daily Ausaf. All Rights Reserved