روس میں حالیہ برسوں میں پیدا ہونے والی نسل کی سیگریٹ کی فروخت پر تاحیات پابندی لگانے کے قانون پر غور
  11  جنوری‬‮  2017     |     سائنس/صحت
ماسکو (مانیٹرنگ ڈیسک )روسی وزارت صحت نے 2014یا اس کے بعد پیدا ہونے والے افراد کو سیگریٹ کی فروخت پر پابندی پرغور شروع کر دیا ہے۔ ایک نیوز سائٹ کی جانب سے جاری دستاویز میں سیگریٹ نوشی کے خلاف حکومتی اقدامات کی طویل فہرست کا تذکرہ کیا گیا ہے جس میں کہا گیا ہے کہ باضابطہ قانون بن جانے کے بعد اس نسل کے افراد پر بالغ ہونے پر بھی سیگریٹ کی فروخت کی پابندی کا اطلاق ہو گا۔ روس کے قانون کے مطابق دفاتر، بسوں ، ٹرینوں، ریلوے سٹیشنز اور ائیرپورٹ پر سیگریٹ پینے کی کی ممانعت ہے۔ سیگریٹ نوشی کے رجحان کے خلاف کام کرنے والوں کا یہ مطالبہ بھی سامنے آیا ہے کہ مہم کی کامیابی کےلئے اسے دنیا کے دیگر حصوں میں بھی عام کیاجائے لیکن ظاہر ہے ایسا حکومتی سرپرستی کے بغیر ممکن نہیں ہے۔ بحر حال یہ کہا جا رہا ہے کہ یہ قانون لاگو ہونے سے رواں صدی میں تمباکو نوشی کے رجحان کی حوصلہ شکنی کے حوصلہ افزا نتائج سامنےآسکیں گے۔

اس خبر کے بارے میں اپنی رائے دیجئے
پسند آئی
90%
ٹھیک ہے
10%
کوئی رائے نہیں
 
پسند ںہیں آئی
 




 انٹر نیٹ کی دنیا میں سب سے زیادہ پڑھے جانے والے مضا مینں
loading...

  اوصاف سپیشل

آج کا مکمل اخبار پڑھیں

آج کا مکمل اخبار پڑھیں

کار ٹونز

سائنس/صحت

کالم /بلاگ


     
     
تمام اشاعت کے جملہ حقوق بحق ادارہ روزنامہ اوصاف محفوظ ہیں۔
Copyright © 2016 Daily Ausaf. All Rights Reserved