کینسر پر ماسٹر ڈگری کی حامل سعودی خاتون شاورما بیچنے پر مجبور
  17  مارچ‬‮  2017     |     سائنس/صحت

اسلام آباد (روز نامہ اوصاف )کینسر کی تشخیص کے شعبے میں ماسٹر کی ڈگری حاصل کرنے والی سعودی خاتون نوکری نہ ملنے پر دمام کے ساحل پر شاورما بیچنے پر مجبور ہوگئی۔والدہ کی کینسر سے وفات کے بعد سعودی عرب کی خاتون نورہ الغامدی نے کینسر کی روک تھام اور فوری تشخیص کے لیے میدان میں آنے کی ٹھانی اور دیار غیر سے کینسر کی تشخیص سے متعلق خصوصی ٹیکنالوجی میں ماسٹر کی ڈگری حاصل کرلی۔اسے 8سال کی پڑھائی کے بعد یہ جان کر صدمہ ہوا کہ سعودی عرب میں اس شعبے کے صرف تین ادارے قائم ہیں جن میں سے ایک میں صرف مردوں کو نوکری دی جاتی ہے اور بقیہ میں کوئی خالی جگہ نہیں تھی۔اس صورت حال کے باوجود اس بہادر خاتون نے ہمت نہیں ہاری اور مشرقی شہر دمام کے ساحلی تفریح گاہ پر شاورما فروخت کرنا شروع کردیا۔نورہ الغامدی نے عرب ٹی وی کو انٹرویو میں کہا کہ اسے شاورما فروخت کرنے میں کوئی شرم محسوس نہیں ہے اور وہ اللہ پر پختہ یقین رکھتی ہے کہ وہ اس کی محنت کا صلہ ضرور دے گا۔


اس خبر کے بارے میں اپنی رائے دیجئے
پسند آئی
 
ٹھیک ہے
 
کوئی رائے نہیں
 
پسند ںہیں آئی
 


 سب سے زیادہ پڑھی جانے والی مقبول خبریں





  اوصاف سپیشل

آج کا مکمل اخبار پڑھیں

آج کا مکمل اخبار پڑھیں

کار ٹونز

سائنس/صحت

کالم /بلاگ


     
     
تمام اشاعت کے جملہ حقوق بحق ادارہ روزنامہ اوصاف محفوظ ہیں۔
Copyright © 2016 Daily Ausaf. All Rights Reserved