پہلوٹھی کے بچوں کے حوالے سے نئی تحقیق
  15  اپریل‬‮  2017     |     سائنس/صحت
اسلام آباد ( ویب ڈیسک )اگر تو آپ والدین کی پہلی اولاد ہیں تو اچھی خبر یہ ہے کہ آپ اپنے بہن بھائیوں کے مقابلے میں زیادہ ذہین ہوسکتے ہیں۔یہ دعویٰ اسکاٹ لینڈ میں ہونے والی ایک طبی تحقیق میں سامنے آیا۔ایڈنبرگ یونیورسٹی کی تحقیق میں بتایا گیا کہ پہلوٹھی کی اولاد اپنے سے چھوٹے بہن بھائیوں کے مقابلے میں زیادہ ذہین ہوتی ہے۔ طبی جریدے جرنل آف ہیومین ریسورسز کیتحقیق کے مطابق بڑے بچے کو والدین کی زیادہ توجہ ملتی ہے جس سے پیدائش کے بعد ابتدائی برسوں میں ان کی دماغی سرگرمیاں زیادہ بڑھ جاتی ہیں جبکہ یہ بچے آئی کیو ٹیسٹ میں دیگر کے مقابلے میں بھی زیادہ اسکور حاصل کرتے ہیں۔اس تحقیق کے دوران پانچ ہزار کے لگ بھگ بچوں کا جائزہ لے کر ان کے ہر دو سال بعد مختلف ٹیسٹ لیے گئے۔نتائج سے معلوم ہوا کہ بڑے بچے اپنے سے چھوٹوں کے مقابلے میں ذہنی طور پر زیادہ تیز ہوتے ہیں اور ٹیسٹوں میں زیادہ نمبر لیتے رہے۔اگرچہ دیگر بچوں کو بھی والدین کی جانب سے بڑے بچے جیسی ہی جذباتی معاونت ملتی ہے مگر تحقیق میں یہ بات سامنے آئی کہ والدین ان کی ذہنی سرگرمیوں کو جلا بخشنے والی سرگرمیوں کے لیے کم وقت نکالتے ہیں۔اس سے قبل نیویارک یونیورسٹی کی ایک تحقیق میں بھی یہ بات سامنے آئی تھی کہ بڑے بچے مقصد پر توجہ مرکوز کرنے والے اور اپنے والدین کو مطمئن کرنے کے زیادہ خواہشمند ہوتے ہیں اور انہیں قائدانہ کردار ادا کرنے میں بھی دلچسپی ہوتی ہے۔اسی طرح وہ اصولوں پر عمل کرنے کے بھی عادی ہوتے ہیں جس کی وجہ والدین کی ان پر کڑی نظر بھی ہوتی ہے۔

اس خبر کے بارے میں اپنی رائے دیجئے
پسند آئی
100%
ٹھیک ہے
 
کوئی رائے نہیں
 
پسند ںہیں آئی
 



 سب سے زیادہ پڑھی جانے والی مقبول خبریں






آج کا مکمل اخبار پڑھیں

کار ٹونز

سائنس/صحت

کالم /بلاگ


     
     
تمام اشاعت کے جملہ حقوق بحق ادارہ روزنامہ اوصاف محفوظ ہیں۔
Copyright © 2016 Daily Ausaf. All Rights Reserved