پاکستان کے بڑے ادارے میں بھرتیوں کے ٹیسٹ بڑی بے قاعدگیوں کا انکشاف
  14  جون‬‮  2017     |     سائنس/صحت
اسلام آباد ( ندیم چوہدری ) پاکستان انسٹیٹیوٹ آف میڈیکل سائنسز ( پمز) کی ہونے والی بھرتیوں کے ٹیسٹ میں بے قاعدگیوں کا انکشاف ،کئی امیدواروں کے نمبر زیادہ ہونے کے باوجود لسٹ میں نام شامل نہ ہونے پر پمز انتظامیہ کو درخواستیں موصول ،پمز میں مختلف شعبہ جات میں بھرتی کئے جانے والی 900 سیٹوں کے لیے 2016 میں اخبار میں اشتہار دیا گیا ،جس کے تحت اوپن ٹیسٹنگ سروس ( او ٹی ایس ) کے ذریعے ہزاروں کی تعداد میں امیدواروں نے حصہ لیا،ٹیسٹنگ سروس کی جانب سے مبینہ طور پر امیداروں کی لسٹ کو ویب سائٹ پر آویزاں نہیں کیا گیا بلکہ ہر امیدوار کو انفرادی طور پر رزلٹ فراہم کیا گیا ۔
ذرائع پمز کے مطابق امیدواروں نے پمز میں انٹریوز کی تاریخ کا اعلان ہونے کے بعد جب ایک دوسرے کے نمبر چیک کئے تو کم نمبر والوں کو انٹرویو کے لیے بلایا گیا تھا جب کہ جن کے نمبر زیادہ تھا ان کو انٹرویو کے لیے بلایا ہی نہیں گیا ۔جس امیدواروں کے 67 نمبر تھے اسے انٹرویو کے لیے نہیں بلایا گیا جب کہ جس امیداور کے اسی سیٹ کے لیے دیئے گئے ٹیسٹ میں 52 نمبر تھے اسے انٹرویو کے لیے بلا لیا گیا ، جب کے اسی طرح جس امیداور کے 38 نمبر تھے اس سے انٹرویو کے لیے نہیں بلایا گیا اسی سیٹ پر جس امیدوار کے 31 اور 17 نمبر تھے ان کو انٹرویو کے لیے بلا لیا گیا ۔ذرائع کے مطابق او ٹی ایس انتظامیہ اور پمز انتظامیہ میںموجود کچھ افراد نے امیدواروں کی لسٹیں فائنل کرنے میں مبینہ طور لاکھوں روپے رشوت وصول کی ہے ۔پمز ہسپتال میں تمام شعبہ جات جن میں میڈیکل آفیسر ،نرسنگ سٹاف ،پیرا میڈیکل سٹاف ،سینٹری ورکرز سمیت کئی شعبہ جات کے ملازمین کی بھرتی شامل ہے ۔ جب کہ تین بار یہ انٹرویو ز بھی موخر کئے جا چکے ہیں ۔‎

اس خبر کے بارے میں اپنی رائے دیجئے
پسند آئی
33%
ٹھیک ہے
 
کوئی رائے نہیں
 
پسند ںہیں آئی
67%




  اوصاف سپیشل

آج کا مکمل اخبار پڑھیں

آج کا مکمل اخبار پڑھیں

کار ٹونز

سائنس/صحت

کالم /بلاگ


     
     
تمام اشاعت کے جملہ حقوق بحق ادارہ روزنامہ اوصاف محفوظ ہیں۔
Copyright © 2016 Daily Ausaf. All Rights Reserved