دنیا 2020تک پولیو فری ہوجائے گی
  6  اگست‬‮  2017     |     سائنس/صحت

اسلام آباد (ویب ڈیسک)پاکستان میں ڈیپارٹمنٹ فار انٹرنیشنل ڈیولپمنٹ کے سربراہ جونا ریڈ کا کہنا ہے کہ سن 2020ء تک دنیا ’پولیو فری ‘ہوجائے گی ۔ ان کا مزید کہنا ہے کہ 2017میں پاکستان پولیو کو شکست دے سکتا تھا،ڈی ایف آئی ڈی پولیو کے خاتمے میں پاکستان کی مدد کرے گا لیکن اس کا سہرا پاکستانیوں کے سر جائے گاجنہوں نے کام کیا، خاتمے کا پیغام پہنچایا اور گھر گھر جاکر بچوں کو ویکسینیٹ کیا۔ان کا یہ بھی کہنا تھا کہ ان لوگوں نے بہت زبردست کام کیا اور مشکل ترین علاقے فاٹا سے ایک بھی کیس سامنے نہیں آیا، اب اس آخری مرحلے ک

و بھی مکمل کیا جائے اور پولیو کا مکمل خاتمہ کیا جائے۔ انہوں نے امید ظاہر کی کہ اس سال کے آخر تک پولیوکا خاتمہ ممکن ہو جائے اور 2020تک دنیا پولیو فری ہو جائے گی۔دوسری جانب برطانیہ نے پاکستان، افغانستان اور نائیجیریا سے پولیو کے خاتمے کیلئے 130ملین ڈالرز کی اضافی امداد دینے کا اعلان کیا ہے جس کے تحت 2020تک 4کروڑ 50لاکھ بچوں کو اس مرض سے بچاؤ کے حفاظتی ٹیکہ جات وقطرے پلائے جائیں گے۔انٹرنیشنل ڈیولپمنٹ سیکرٹری پریتی پٹیل نے ایک اعلامیے میں کہا کہ برطانیہ میں پولیو کا خاتمہ 80کی دہائی میں ہوالیکن وہاں آج بھی پولیو سے متاثر تقریباً ایک لاکھ افراد موجود ہیں۔ برطانیہ دنیا بھر سے پولیو کے خاتمے کے لئے قائدانہ کردار ادا کر رہا ہے، دنیا کے صرف تین ممالک میں پولیو کاوائرس تاحال موجود ہے جن میں پاکستان، افغانستان اور نائیجیریا شامل ہیں جہاں اس سال اب تک پولیووائرس کے 8نئے کیسز سامنے آچکے ہیں جن میں 3پاکستان سے رپورٹ ہوئے ہیں۔انہوں نےپولیو کے خاتمے کی آخری کوشش کے لئے برطانوی مدد کا اعلان کیاجس کے تحت 2020تک 4کروڑ 50لاکھ بچوں کو اس مرض سے بچاؤ کے حفاظتی ٹیکہ جات وقطرے پلائے جائیں گے جو ایک منٹ میں 80بچے بنتے ہیں۔ اس امداد کے تحت ہر سال 65ہزار بچوں کو معذور ہونے سے بچایا جاسکے گا، 15ہزار پولیو ورکرز کی گھرگھر پہنچنے میں مدد کی جاسکے گی اور 2035تک سالانہ 2ملین پاؤنڈ بچائے جاسکیں گے۔انہوں نے کہا کہ برطانیہ نے چکن پاکس کے خاتمے کے بعد پولیو کے خاتمے کے ساتھ اپنی کمٹمنٹ ظاہر کی ہے۔ 1988سے جاری برطانوی مدد کا نتیجہ ہے کہ ایک کروڑ 60لاکھ افراد اس وقت چل رہے ہیں جو شاید معذور ہوتے۔انہوں نے کہا کہ 21ویں صدی میں پولیو کی کوئی جگہ نہیں، برطانیہ ان امراض کے خاتمے کےلئے مسلسل لڑ رہا ہے۔ان کا کہنا تھا کہ دنیا پولیو کے خاتمے کے بالکل قریب پہنچ گئی ہے لیکن یہ اس وقت ممکن ہو گاجب ایک بھی بچہ پولیو کا شکار نہیں رہے گا اگر ایک بھی بچے کو پولیو ہو ا تو ہردنیا میں ہر جگہ بچے اس خطرے کا شکا ر رہیں گے، ان کا کہنا تھا کہ اب وقت ہے کہ باقی ممالک بھی برطانیہ کی طرح آگے بڑھیں اور پولیو کو ماضی بنا دیں۔


اس خبر کے بارے میں اپنی رائے دیجئے
پسند آئی
 
ٹھیک ہے
 
کوئی رائے نہیں
 
پسند ںہیں آئی
 


 سب سے زیادہ پڑھی جانے والی مقبول خبریں





  اوصاف سپیشل

آج کا مکمل اخبار پڑھیں

  قائد اعظم محمد علی جناح  
  اسکندر مرزا  
  لیاقت علی خان  
  ایوب خان  
آج کا مکمل اخبار پڑھیں

کار ٹونز

سائنس/صحت

کالم /بلاگ


     
     
تمام اشاعت کے جملہ حقوق بحق ادارہ روزنامہ اوصاف محفوظ ہیں۔
Copyright © 2016 Daily Ausaf. All Rights Reserved