چاہتا ہوں کہ ریٹائر ہو جانے کے بعد نوجوان کھلاڑی مجھے رول ماڈل کے طور پر یاد رکھیں،یونس خان
  20  اپریل‬‮  2017     |      سپورٹس
جمیکا(مانیٹرنگ ڈیسک) مایہ ناز ٹیسٹ کر کٹر یونس خان نے کہا ہے کہ چاہتا ہوں کہ ریٹائر ہو جانے کے بعد نوجوان کھلاڑی مجھے رول ماڈل کے طور پر یاد رکھیں،خواہش ہے کہ مجھے ایک ایسے کھلاڑی اور بلے باز کے طور پر یاد رکھا جائے جو ہمیشہ ملک کیلئے کھیلا۔تفصیلات کے مطابق پاکستان کے مایہ ناز بلے باز مصباح الحق اور یونس خان (آج)جمعہ سے ویسٹ انڈیز کیخلاف شروع ہونے والی سیریز میں آخری بار ایکشن میں دکھائی دیں گئے۔ مایہ ناز ٹیسٹ کر کٹر یونس خان نے ریٹائرمنٹ کے بعد خواہش کا اظہار کیا ہے کہ وہ چاہتے ہیں کہ انہیں ایک ٹیم پلیئر کے طور پر یاد رکھا جائے۔انہوں نے کہا کہ میں چاہتا ہوں کہ جب میں ریٹائر ہو جاو¿ں اور ڈریسنگ روم کا حصہ نہ ہوں تو نوجوان کھلاڑی مجھے رول ماڈل کے طور پر یاد رکھیں۔ ’میں چاہتا ہوں کہ مجھے ایک ایسے کھلاڑی اور بلے باز کے طور پر یاد رکھا جائے جو ہمیشہ ملک کیلئے کھیلا‘۔خیبر پختونخوا کے علاقے مردان سے تعلق رکھنے والے یونس نے اپنے کیریئر کا آغاز کراچی سے کیا اور 2000 میں راولپنڈی میں کھیلے گئے اپنے پہلے ہی ٹیسٹ میچ میں سری لنکا کے خلاف سنچری بنا کر شاندار کیریئر کی نوید سنائی۔ا کے بعد انہوں نے مختلف اتار چڑھاو¿ کا سامنا کیا اور ایک ٹرپل سنچری اور تین ڈبل سنچریوں سمیت مزید 33 سنچریاں اسکور کیں۔حال ہی میں انہوں نے سری لنکا کے خلاف سڈنی ٹیسٹ میں سات گھنٹے سے زئاد بیٹنگ کرتے ہوئے ناقابل شکست 175 رنز کی باری کھیلی جس کی بدولت پاکستانی ٹیم 315 رنز کا مجموعہ بنانے میں کامیاب رہی تھی۔یونس خان 9ہزار 977 رنز بنا کر پاکستان کے سب سے کامیاب ٹیسٹ بلے باز ہیں اور انہیں دس ہزار تکمیل کیلئے محض 23 رنز درکار ہیں۔

اس خبر کے بارے میں اپنی رائے دیجئے
پسند آئی
93%
ٹھیک ہے
7%
کوئی رائے نہیں
 
پسند ںہیں آئی
 




  اوصاف سپیشل

آج کا مکمل اخبار پڑھیں

آج کا مکمل اخبار پڑھیں

کار ٹونز

سپورٹس

کالم /بلاگ


     
     
تمام اشاعت کے جملہ حقوق بحق ادارہ روزنامہ اوصاف محفوظ ہیں۔
Copyright © 2016 Daily Ausaf. All Rights Reserved